Sunday , August 20 2017
Home / Top Stories / وزیر اعظم مودی کا کل سے دورۂ ایران، بندرگاہ سمجھوتہ پر دستخط

وزیر اعظم مودی کا کل سے دورۂ ایران، بندرگاہ سمجھوتہ پر دستخط

علی خامنہ ای اور حسن روحانی سے ملاقات، معاشی، تجارتی و سکیورٹی تعلقات پر تبادلہ خیال متوقع

نئی دہلی۔ 20 مئی (سیاست ڈاٹ کام) وزیراعظم نریندر مودی کے 22 اور 23 مئی کو دورہ ایران کے موقع پر خلیج فارس کے اس ملک کے ساتھ ہندوستان بندرگاہ چابہار کے پہلے مرحلہ کے فروغ کے ایک سمجھوتہ پر دستخط کریگا۔ ہندوستانی ادارہ پورٹس گاوبل پرائیویٹ لمیٹڈ اور ایران کی آریہ بندر کمپنی چابہار کے پہلے مرحلہ کے تحت دو ٹرمینلس اور پانچ ملٹی کارگو برتھس کے فروغ کے لئے ایک سمجھوتہ پر دستخط کریں گے۔ وزارت امور خارجہ میں جوائنٹ سکریٹری (برائے پاکستان۔ افغانستان و ہند امور) گوپال باگلنے ان تفصیلات کا انکشاف کیا۔ چابہار سمجھوتہ پر دستخط وزیراعظم مودی کے دوروزہ ایران کی خصوصیت ہوگی وہ اور موقع پر ایران کے رہبر اعلی علی خامنہ ای اور محمود حسن رحانی نے بھی ملاقات کریں گے۔ بندرگاہ چابہار کے فروغ کے لئے ایگزم بینک سے 150 ملین امریکی ڈالر کے قرض کی فراہمی کے سمجھوتہ پر بھی دستخط کی جائے گی۔ گوپال باگلنے نے مزید کہا کہ پراجیکٹ کے پہلے مرحلہ ہندوستان کی سرمایہ کاری 200 ملین امریکی ڈالر سے زائد ہوگی۔ انہوں نے کہا کہ وزیراعظم کے دورہ میں ایران کے ساتھ رابطہ اور انفراسٹرکچر کے فروغ کے علاوہ توانائی کے شعبہ میں رفاقت، باہمی تجارت کے فروغ، بالخصوص ہمارے علاقہ میں امن و استحکام کے لئے باضابطہ و باقاعدہ کی سطح میں رابطوں کی حوصلہ افزائی پر توجہ مرکوز رہے گی۔‘‘ جنوب مشرقی ایران میں واقع بندرگاہ چاربہار نہ صرف پاکستان بلکہ بری راستوں سے محروم افغانستان کے لئے ایک نیا راستہ کھولنے میں مدد دے گی۔ اس علاقہ سے ہندوستان کے معاشی مفادات اور قریبی سکیوریٹی تعلقات وابستہ ہیں۔ ہندوستان اور ایران نے پاکستان کے قریب ایران سرحد کے قریب شاہراہ ہرمز کے باہر خلیج غمان پر بندرگاہ چابہار کے فروغ سے 2003ء میں اتفاق کیا تھا۔ تاہم ایران کے خلاف مغربی ممالک کی تحدیدات کے سبب یہ پراجیکٹ سست روی کا شکار ہوگیا تھا۔ رواں سال جنوری میں تحدیدات کی برخاستگی کے بعد ہندوستان نے سمجھوتہ کی تکمیل کے عمل کو تیز رفتار بنادیا۔ ہندوستانی کمپنی چابہار بندرگاہ میں 10 سال کے دوران دو ٹرمینلس کی تعمیر کرے گی جہاں تیل کے سوا دیگر تمام اشیاء کو لادنے اور ارتانے کے کام منتقل کردیئے جائیں گے۔

TOPPOPULARRECENT