Sunday , July 23 2017
Home / شہر کی خبریں / وقف بورڈ کی آمدنی میں اضافہ کیلئے موثر اقدامات کی ضرورت

وقف بورڈ کی آمدنی میں اضافہ کیلئے موثر اقدامات کی ضرورت

صیانت کے لیے ٹاسک فورس ٹیمیں متحرک ، وقف فنڈ کی وصولی کے لیے خصوصی مہم : محمد سلیم
حیدرآباد ۔ 23 ۔ مئی (سیاست نیوز) صدرنشین وقف بورڈ محمد سلیم نے کہا کہ وقف بورڈ کی آمدنی میں اضافہ کرتے ہوئے اوقافی جائیدادوں کی ترقی اور مسلمانوں کی بھلائی کی خدمات انجام دی جاسکتی ہے ۔ وقف بورڈ کے اجلاس کے بعد میڈیا کے نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے محمد سلیم نے بتایا کہ ایجنڈہ میں67 ایٹم شامل تھے اور بورڈ نے 13 متولی ، 17 مینجنگ کمیٹی اور 5 جائیدادیں کے لیز کو منظوری دیدی ہے۔ انہوں نے کہا کہ 6 گھنٹے طویل اجلاس میں کئی اوقافی جائیدادوں کے تحفظ کا مسئلہ زیر بحث آیا اور ارکان کی متفقہ رائے تھی کہ بورڈ کی آمدنی میں اضافہ کیا جانا چاہئے ۔ اس کے لئے جائیدادوں کو ترقی دینا اور وقف بورڈ و کرایہ جات کی موثر وصولی پر توجہ دی جائے گی ۔ انہوں نے کہا کہ اگر وقف بورڈ کی جائیدادوں کے مطابق آمدنی حاصل ہونے لگے تو تلنگانہ میں کوئی بھی مسلمان غریب نہیں رہے گا ۔ انہوں نے بتایا کہ نرمل میں اوقافی اراضی پر قابض 116 افراد کو کرایہ دار بنانے کی تجویز کو بورڈ نے منظوری دیدی ہے ۔ گزشتہ 30 سال سے وقف اراضی پر جھونپڑیاں ڈال کر قبضہ کیا گیا تھا ۔ بورڈ نے ایک کمرہ کی اراضی کیلئے 300 روپئے ماہانہ کرایہ مقرر کرتے ہوئے کرایہ دار بنانے کا فیصلہ کیا ہے تاکہ اس اراضی کا تحفظ ہوسکے ۔ انہوں نے کہا کہ اوقافی جائیدادوں کے تحفظ کے سلسلہ میں بورڈ سختی سے قدم اٹھائے گا اور ناجائز قابضین کو بخشا نہیں جائے گا ۔ انہوں نے کہا کہ بورڈ کی جانب سے قائم کی گئی ٹاسک فورس ٹیمیں متحرک کردی جائیں گی ۔ ضرورت پڑنے پر صدرنشین خود بھی اضلاع کا دورہ کرتے ہوئے اوقافی جائیدادوں کا معائنہ کریں گے ۔ ضلاع کلکٹرس کے ساتھ اجلاس منعقد کرتے ہوئے جائیدادوں کے تحفظ کی خواہش کی جائے گی ۔ انہوں نے کہا کہ رمضان المبارک کے موثر انتظامات کے سلسلہ میں بورڈ کی جانب سے تمام مساجد کو ضروری ہدایات جاری کی گئی ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ حج ہاؤز میں ہر سال کی طرح افطار اور تراویح کا انتظام کیا جائے گا ۔ انہوں نے کہا کہ جس طرح مطلقہ خواتین کو وقف بورڈ کی جانب سے امداد دی جاتی ہے ، اسی طرح بیواؤں کو وظائف کی اجرائی زیر غور ہے۔ انہوں نے کہا کہ آمدنی میں اضافہ کے اعتبار سے ماہانہ وظائف کا تعین کیا جائے گا۔ محمد سلیم نے کہا کہ غریب افراد جو دواخانوں میں علاج کیلئے بھاری رقم کی ادائیگی سے قاصر ہیں ، انہیں بھی بورڈ کی جانب سے طبی امداد فراہم کرنے کی تجویز زیر غور ہے۔ انہوں نے کہا کہ وقف فنڈ کی وصولی کیلئے خصوصی مہم چلائی جائے گی۔ ٹاسک فورس ٹیمیں اوقافی جائیدادوں کے کرایہ جات کی وصولی میں اہم رول ادا کریں گی ۔ انہوں نے کہا کہ وقف بورڈ میں محکمہ مال سے ڈیپیوٹیشن پر عہدیداروں کے تقرر کے بعد کارکردگی میں مزید بہتری کا امکان ہے ۔ انہوں نے بتایا کہ موجودہ عہدیداروں اور ملازمین کی قابلیت اور تقررات کی تفصیلات طلب کی گئی ہیں تاکہ انہیں قابلیت کے اعتبار سے ذمہ داری دی جاسکے ۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT