Friday , September 22 2017
Home / شہر کی خبریں / وقف کی جائیدادیں اللہ کی امانت ،تحفظ پر زور

وقف کی جائیدادیں اللہ کی امانت ،تحفظ پر زور

سرفراز احمد سابقہ کمشنر گریٹر ورنگل سے جناب ایم اے کے تنویر کی نمائندگی

حیدرآباد ۔ 15 اکٹوبر (پریس نوٹ) گریٹر میونسپل کارپوریشن ورنگل کے حدود میں کروڑہا روپیوں کے وقف املاک کی خاطرخواہ نگہداشت اور تحفظ نہ ہونے کی وجہ سے اغیار کا ناجائز قبضہ ہورہا ہے۔ اس سلسلہ میں ضلع کے اعلیٰ عہدیداروں سے بارہا نمائندگیاں کی گئی۔ لینڈ گرابرس ابتداء میں وقف جائیدادوں پر ناجائز قبضہ کرکے غیرقانونی تعمیری کام کا آغاز کرتے ہوئے گریٹر ورنگل میونسپل کارپوریشن سے مکان نمبرات لیکر اس بنیاد پر رجسٹریشن کرکے لاکھوں روپئے کمارہے ہیں۔ یہ بات مشیراعلیٰ وقف پروٹیکشن اینڈ ڈیولپمنٹ کمیٹی ایم اے کے تنویر نے کمشنر کے علم میں لایا اور بتایا کہ حضرت زندہ بھکن، حضرت سید جان اللہ شہید حسینی علم عیدگاہ، مسجد میرپیٹ قبرستان اینگولہ گڈہ، ہنمکنڈہ چوراہا، درگاہ حضرت یعقوب شہید ریلوے اسٹیشن، قبرستان کورللہ مٹہ قلعہ ورنگل کے علاوہ دیگر اوقافی جائیدادوں کے متعلق بغور سماعت کی اور ان جائیدادوں کے تحفظ کا تیقن دیا۔ اس موقع پر مسٹر ایم اے کے تنویر نے حضرت جان اللہ شہید قبرستان کی حصاربندی کیلئے 1765000 کا تخمینہ کی نقل پیش کیا۔ اس تخمینہ کو منظور دیتے ہوئے میونسپل کارپوریشن متعلقہ عہدیداروں کو ہدایت دی کہ اس قبرستان کی حصاربندی کا کام بعجلت ممکنہ شروع کریں۔ اس موقع پر ایم اے لطیف، محمد رفیق، احمد صابری، سید محبوب، ایم اے جبار، محمد محبوب جانی، محمد معشوق علی، محمد غوث، محمد دستگیر، سید صابر، مولانا محمد یوسف شریف حسامی، محمد ظہیرالدین ذکریہ، محمد حسین، محمد معشوق، سید آصف کے علاوہ دیگر حضرات موجود تھے۔

TOPPOPULARRECENT