Sunday , September 24 2017
Home / دنیا / ونیزویلا میں فائرنگ اور جنگ کی تربیت

ونیزویلا میں فائرنگ اور جنگ کی تربیت

کاراکاس۔27اگست ( سیاست ڈاٹ کام ) ونیزویلا کے فوجیوں کو رائفل چلانا ‘ آتشی میزائل داغنا اور ہاتھاپائی کی تربیت دی جب کہ امریکہ نے اُن پر تحدیدات عائد کردیں ۔ ملک کے صدر نکولس مادورونے کہا کہ فوجی مشقوں کا آغاز کل سے ہوا اور یہ دو دن جاری رہے گی ۔ کاراکاس کی فوجی اکیڈیمی میں فوجیوں نے شہریوں کو اپنی کلائیاں ‘ رائفلیں ‘ ہزبوکا بندوقیں اور طیارہ شکن توپوں کا استعمال سکھایا ۔ ان مشقوں کی نگرانی کی جارہی تھی ۔ صدر امریکہ نے جاریہ ماہ کے اوئل میں انتباہ دیا تھا کہ وہ ونیزویلا کے خلاف کئی اقدامات کررہے ہیں جن میں فوجی کارروائی بھی شامل ہے۔ اعلیٰ سطحی امریکی عہدیداروں نے بعد ازاں دھمکی کی اہمیت کم کرتے ہوئے کہا تھا کہ عنقریب فوجی کارروائی کا کوئی امکان نہیں ہے ۔ لیکن ڈونالڈ ٹرمپ نے اپنے سخت لب و لہجہ کے پیغام میں صدر مادورو سے کئی بار کہا ہے کہ امریکہ انہیں اقتدار سے بیدخل کرنے کے منصوبہ بنارہا ہے اور چاہتا ہے کہ ونیزویلا کی سرزمین پر اپنا قبضہ قائم کرے ۔ امکان ہے کہ ونیزویلا میں دنیا کے سب سے وسیع تیل کے ذخائر موجود ہیں ۔ تربیت حاصل کرنے والے ایک شخص نے کہا کہ وہ اس کیمپ میں فوجی تربیت حاصل کرنے اپنے اور اپنے ملک کا دفاع سیکھنے کیلئے شامل ہوا ہے ۔ 2013ء میں صدر ونیزویلا منتخب ہونے والے مادورو نے اپنے جانشین کا 2013ء میں ہی انتخاب کرلیا تھا اور غذائی قلت اور سماجی بے چینی کے باوجود اقتدار کی اہمیت کم کردی تھی ۔ عام طور پر فوج ان کی تائید کرتی ہے اور ان کی حکومت کو وسیع تر اختیارات حاصل ہیں ۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT