Friday , July 21 2017
Home / ہندوستان / ووٹنگ مشینوں میں چھیڑ چھاڑثابت کرنے کا چیلنج

ووٹنگ مشینوں میں چھیڑ چھاڑثابت کرنے کا چیلنج

الیکشن کمیشن آج شیڈول کا اعلان کرسکتا ہے ۔ پیپر ٹرائیل مشین کا مظاہرہ بھی ممکن
نئی دہلی 19 مئی ( سیاست ڈاٹ کام )الیکشن کمیشن کی جانب سے کل الیکٹرانک ووٹنگ مشینوں میں چھیڑ چھاڑ سے متعلق اپنے چیلنج کے شیڈول کا اعلان کیا جاسکتا ہے ۔ 12 مئی کو منعقد ہوئے ایک کل جماعتی اجلاس میں چیف الیکشن کمشنر نسیم زیدی نے کہا تھا کہ سیاسی جماعتوں کیلئے ایک چیلنج کرنے کی منصوبہ بندی کی جا رہی کہ وہ الیکٹرانک ووٹنگ مشینوں میں چھیڑ چھاڑ کو ثابت کریں۔ سیاسی جماعتوں کا الزام تھا کہ حالیہ اسمبلی انتخابات میں استعمال کردہ الیکٹرانک ووٹنگ مشینوں میں چھیڑ چھاڑ کی گئی ہے ۔ انہوں نے مزید کہا تھا کہ سیاسی جماعتیں کوشش کریں اور یہ ثابت کریں کہ الیکٹرانک ووٹنگ مشینوں میں چھیڑ چھاڑ ہوسکتی ہے جبکہ اس میں انتہائی محفوظ انتظامی اور فنی اقدامات کو یقینی بنایا گیا ہے ۔ 2009 میں کمیشن نے اسی طرح کا ایک چیلنج کیا تھا اور اس کا دعوی تھا کہ کسی بھی سیاسی جماعت نے الیکٹرانک مشینوں میں کسی طرح کی چھیڑ چھاڑ کو ثابت نہیں کیا ہے ۔ اس وقت ملک کے مختلف مقامات سے 100 الیکٹرانک ووٹنگ مشینوں کو اس چیلنج کے سلسلہ میں وگیان بھون لایا گیا تھا ۔ الیکشن کمیشن کی جانب سے کل دو پہر ایک پریس کانفرنس منعقد کی جانے والی ہے اور امید کی جا رہی ہے کہ اس سے قبل الیکٹرانک ووٹنگ مشینوںاور پیپر ٹرائیلس مشینوں کا ایک پریزینٹیشن بھی دیا جائے ۔ کل جماعتی اجلاس میں بیشتر سیاسی جماعتوں نے کہا تھا کہ مستقبل میں تمام انتخابات الیکٹرانک ووٹنگ مشینوں پر کروائے جاسکتے ہیں بشرطیکہ ان میں پیپر ٹرائیل مشینس نصب کئے جائیں۔ اس اجلاس میں کچھ جماعتوں کا کہنا تھا کہ ان مشینوں میں ان کا یقین ختم ہوچکا ہے اور الیکشن کمیشن کو چاہئے کہ وہ قدیم بیالٹ پیپر سسٹم کو بحال کرے۔ بی جے پی ‘ سی پی آئی ‘ سی پی ایم ‘ آل انڈیا انا ڈی ایم ‘ ڈی ایم کے ‘ این سی پی اور جے ڈی یو نے واضح طو رپر الیکٹرانک ووٹنگ مشینوں کے استعمال کی حمایت کی تھی اور کہا تھا کہ اس کیلئے پیپر ٹرائیل مشین نصب کئے جانے چاہئیں جبکہ بی ایس پی ‘ عام آدمی پارٹی ‘ ترنمول کانگریس نے کہا تھا کہ پیپر بیالٹ سسٹم ہی بہتر اور زیادہ شفاف تھا ۔ کانگریس کا خیال تھا کہ اگر الیکٹرانک ووٹنگ مشین استعمال کئے جاتے ہیں تو ہر سطح پر شفافیت ہونی چاہئے تاکہ سیاسی جماعتیں اور رائے دہندے ان مشینوں کے تعلق سے اطمینان میں رہیں۔ کانگریس کا کہنا تھا کہ سپریم کورٹ کا بھی اس بات پر زور ہے کہ اس معاملہ میں مزید شفافیت لائی جانی چاہئے جس کا مطلب یہ نہیں کہ الیکٹرانک ووٹنگ مشین ہی استعمال کئے جائیں ۔ پارٹی کا کہنا تھا کہ مستقبل کے انتخابات میں ای وی ایمز کے ساتھ پیپر ٹرائیل مشینوں کا استعمال بھی ایک اچھا امکان ہے ۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT