Thursday , September 21 2017
Home / شہر کی خبریں / ووٹنگ مشینوں میں چھیڑ چھاڑ سے کامیابی

ووٹنگ مشینوں میں چھیڑ چھاڑ سے کامیابی

ٹی آر ایس و مجلس پر الزام ۔ کانگریس لیڈر ششی دھر ریڈی
حیدرآباد ۔ 13 فبروری (سیاست نیوز) کانگریس کے سینئر قائد سابق رکن اسمبلی مسٹر ایم ششی دھر ریڈی نے جی ایچ ایم سی کے انتخابات میں الیکٹرانک ووٹنگ مشینوں کے ساتھ بڑے پیمانے پر چھیڑچھاڑ کرنے کا ٹی آر ایس اور مجلس پر سرکاری مشنری کا بیجا استعمال کرتے ہوئے کامیابی حاصل کرنے کا الزام عائد کیا۔ آج گاندھی بھون میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے مسٹر ایم ششی دھر ریڈی نے کہا کہ جی ایچ ایم سی کے آزادانہ اور منصفانہ انتخابات نہیں ہوئے ہیں۔ حکمراں ٹی آر ایس اور مجلس نے ایک دوسرے سے سازباز کرتے ہوئے فہرست رائے دہندگان سے ناموں کے اخراج، حلقوں کی ازسرنو حد بندی سے رائے دہی تک بڑے پیمانے پر دھاندلیاں کرتے ہوئے کامیابی حاصل کی ہے۔ ایک پولنگ بوتھ پر 500 ووٹس ہیں تو وہاں ٹی آر ایس کے حق میں 900 ووٹ پڑے ہیں، یہ کیسے ممکن ہے۔ اس سے اندازہ لگایا جاسکتا ہیکہ الیکٹرانک ووٹنگ مشینوں سے چھیڑچھاڑ کی گئی ہے۔ کئی ایسے آزاد امیدوار ہیں جن کے ووٹ خود انہیں نہیں ملے ہیں۔ کئی امیدواروں نے اس طرح کی شکایتیں کی ہیں۔ کانگریس پارٹی ابتداء سے اواخر تک بار بار الیکشن کمیشن سے رجوع ہوتے ہوئے حکمراں ٹی آر ایس کی جانب سے کی جانے والی بے قاعدگیوں کی شکایت کی ہے۔ تاہم الیکشن کمیشن نے کوئی کارروائی نہیںکی ہے جس پر کانگریس ہائیکورٹ سے رجوع ہوتے ہوئے کئی معاملات میں حکومت کو جھکانے میں کامیابی ہوئی ہے۔ الیکٹرانک ووٹنگ مشینوں سے چھیڑچھاڑ کرنے کی الیکشن کمیشن سے تحریری طور پر شکایت کرتے ہوئے ثبوت بھی پیش کیا گیا ہے لیکن الیکشن کمیشن نے کوئی کارروائی نہیں کی ہے۔ کانگریس پارٹی اس مسئلہ پر ماہرین سے مشاورت کررہی ہے اور انصاف کیلئے بہت جلد عدلیہ کا دروازہ کھٹکھٹائے گی۔ اپوزیشن جماعتوں کے ووٹنگ تناسب میں اضافہ ہونے کے باوجود انہیں بلدی ڈیویژنس میں کامیابی نہیں ملی ہے۔

TOPPOPULARRECENT