Wednesday , August 23 2017
Home / Top Stories / وینکیا نائیڈو نے بیٹا بیٹی کو کروڑوں کا فائدہ پہنچایا:کانگریس

وینکیا نائیڈو نے بیٹا بیٹی کو کروڑوں کا فائدہ پہنچایا:کانگریس

نئی دہلی24جولائی (سیاست ڈاٹ کام) کانگریس نے قومی جمہوری اتحاد (این ڈی اے ) کے نائب صدر کے عہدہ کے امیدوار وینکیا نائیڈو پر اپنی بیٹی اور بیٹے کو ناجائز فائدہ پہنچانے کا الزام لگاتے ہوئے آج کہا کہ شفافیت اور جوابدہی کی وکالت کرنے والے وینکیا نائیڈو کو قوم کو ان الزامات کا جواب دینا چاہئے ۔ کانگریس کے سینئر ترجمان جے رام رمیش نے آج یہاں پارلیمنٹ کے احاطہ میں منعقدہ خصوصی نیو ز کانفرنس میں الزام لگایا کہ ہمیشہ جوابدہی شفافیت کی بات کرنے والے نائیڈو نے اپنے اثرورسوخ کا استعمال کرکے سرکار کو چونا لگایا اور بیٹی اور بیٹے کو پانچ سو کروڑ روپے کا فائدہ پہنچایا۔ ایمانداری ، شفافیت اور جوابدہی کو لے کر انہیں ان سوالوں پر ملک کے عوام کو جواب دینا چاہئے ۔رمیش نے الزام لگایا کہ نائیڈو کے زیر اثر تلنگانہ سرکارنے 20 جون کو ایک خصوصی حکم جاری کیا اور سورن بھارت ٹرسٹ کو سرکار سے دو کروڑ روپے سے زیادہ کے ترقیاتی ٹیکس کی ادائیگی سے چھوٹ دے دی۔اس ٹرسٹ میں نائیڈو کی بیٹی منتظم ٹرسٹی ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ اسی طرح سے نائیڈو کے بیٹے کو فائدہ پہنچانے کی خاطر تلنگا نہ سرکار نے بنا ٹینڈر نکالے دو کمپنیوں کو 270 کروڑ روپے کا آرڈر دیا ۔ ان کمپنیوں میں ایک کے مالک مسٹر نائیڈو کے بیٹے ہیں اور دوسری کمپنی کے مالک ریاست کے وزیر اعلی کے بیٹے ہیں۔کانگریس کے لیڈر نے کہا کہ بھوپال میں سپریم کورٹ کے حکم پر 6 اپریل 2011 کو کشابھاؤ ٹھاکرے میموریل ٹرسٹ کو دی گئی جبکہ20 ایکڑ زمین کا الاٹمنٹ رد کردیا گیا تھا ۔ یہ زمین بھوپال کے بہت اہم علاقہ میں تھی اور اسکی قیمت فریب چھ سو کروڑ رہے تھی۔ نائیڈو اس ٹرسٹ کے صدر تھے ۔ انہوں نے الزام لگایا کہ 1978 ہیں نائیڈو جب آندھرا پردیش اسمبلی کے رکن تھے تو انہوں نے نیلور میں بے زمین لوگوں کی تقریباً5 ایکڑ زمین اپنے نام کرلی تھی لیکن اگست 2002 میں انہیں یہ زمین انتظامیہ کو لوٹانے کے لئے مجبور ہونا پڑا تھا۔انہوں نے کہا کہ مسٹر نائیڈو کو ان سبھی سوالوں کے جواب دینے چاہئیں اور ملک کے عوام کیلئے اس بارے میں وضاحت کرنی چاہیے ۔

TOPPOPULARRECENT