Friday , August 18 2017
Home / دنیا / ویومنگ اور واشنگٹن ڈی سی میں ٹرمپ کی شرمناک شکست

ویومنگ اور واشنگٹن ڈی سی میں ٹرمپ کی شرمناک شکست

حریفوں کے مقابلہ میں ٹرمپ کے پیر اکھڑ گئے ‘ ہندوستانی نژاد امریکی حامیوں کی ٹرمپ کو تائید
واشنگٹن۔13مارچ ( سیاست ڈاٹ کام ) ڈوناڈلڈ ٹرمپ کو آج دوہری ضرب لگی جب کہ ری پبلکن پارٹی کے متنازعہ صف اول کے صدارتی امیدوار کو ان کے فریقوں ٹیڈ کروز اور مارکو روبیو نے واشنگٹن ڈی سی اور ویومنگ میں شرمناک شکست دی ۔ اس سے اشارہ ملتا ہے کہ پارٹی کی نامزدگی حاصل کرنے کیلئے صدارتی انتخابات میں مزید شدت پیدا ہوگئی ہے ۔ ٹرمپ کی وائیٹ ہاؤز کیلئے دوڑ میں آج اُس وقت رکاوٹ پیدا ہوئی جب کہ ری پبلکن پارٹی کے صدارتی امیدواروں ارکان سینٹ ٹیڈ کروز اور مارکو روبیو نے علی الترتیب ویومنگ اور واشنگٹن ڈی سی میں ڈونالڈ ٹرمپ کو شرمناک شکست دی ۔ یہاں تک کہ انہیں جڑ سے اکھاڑ پھینکا ۔ کروز کے حامی مندوبین میں 9 کا اور روبیو کی تائید میں مزید 10 مندوبین کا اضافہ ہوچکاہے اور وہ پارٹی کے اہم صدارتی امیدوار کیلئے کلیدی ریاستوں فلوریڈا ‘ اوہایو‘ ایلینوئے ‘ مسوری اور شمالی کیرولینا میں خطرہ بن چکے ہیں ۔ ان تمام ریاستوں میں 15مارچ کو صدارتی انتخابات مقرر ہے ۔ 69سالہ ڈونالڈ ٹرمپ جائیداد کی خرید و فروخت کے شعبہ کی ایک اہم شخصیت ہیں ۔

انہوں نے کہاکہ فی الحال انہیں 450 مندوبین کی تائید حاصل ہے ‘ جبکہ کروز کو 367 اور روبیو کو 153 مندوبین کی تائید حاصل ہے ۔ اوہائیو کے گورنر جان کیسچ کی تائید میں 63 مندوب ہیں ۔پارٹی کے صدارتی امیدوار نامزد ہونے کیلئے امیدواروں کو کم از کم 1237 مندوبین کی تائید حاصل ہونا ضروری ہے ۔ مندوبین کی جملہ تعداد 2472 ہیں ۔ امریکہ کے دارالحکومت میں روبیو کو 37.3فیصد ووٹ حاصل ہوئے ۔ ڈونالڈ ٹرمپ تیسرے مقام پر رہے ۔ڈیموکریٹک پارٹی کے صدارتی امیدوار برنی سینڈرس نے آج ڈونالڈ ٹرمپ کو ایک ’’عادی جھوٹا ‘‘ قرار دیا ۔ جب کہ ری پبلکن صدارتی امیدوار نے اُن پر جوابی وار کرتے ہوئے انہیںکمیونسٹ قرار دیا اور الزام عائد کیا کہ اُن کی انتخابی مہم شکاگو میں ان کے خلاف پُرتشدد احتجاج کی منتظم تھی ۔ دریں اثناء ڈونالڈ ٹرمپ کے ہندوستانی حامیوں کے ایک گروپ نے کہاکہ شکاگو میں ان کے جلسہ عام کے موقع پر پُرتشدد احتجاجی مظاہروں کے باوجود ری پبلکن پارٹی کے صدارتی امیدوار ڈونالڈ ٹرمپ نے کافی تائید حاصل کرلی ہے اور وہ 15مارچ کی چار کلیدی امریکی ریاستوں میں بھی کامیابی حاصل کریں گے ۔ ہندوستانی نژاد امریکیوں نے جو ٹرمپ کے حامی ہیں کل اس سلسلہ میں ایک بیان جاری کیاہے ۔

TOPPOPULARRECENT