Tuesday , May 30 2017
Home / Top Stories / ٹاملناڈو میں اقتدار کیلئے پنیراسلوم اور ششی کلاء کی رسہ کشی میں شدت

ٹاملناڈو میں اقتدار کیلئے پنیراسلوم اور ششی کلاء کی رسہ کشی میں شدت

مستعفی چیف منسٹر بھی سرگرم، گورنر کی آج واپسی کا امکان ،ودیا ساگر راؤ کی ممبئی سے چینائی کی ڈرامائی سیاسی صورتحال پر نظر
چینائی ؍ ممبئی ۔ 8 فبروری (سیاست ڈاٹ کام) گورنر ٹاملناڈو سی ودیا ساگر راؤ کل چینائی پہنچیں گے۔ دریں اثناء یہ قیاس آرائیاں جاری ہیں کہ وی کے ششی کلاء کی تقریب حلف برداری منعقد ہوگی یا نہیں۔ وہ اپنی تائید کیلئے ضروری تعداد میں انا ڈی ایم کے ارکان کی تائید حاصل کرسکیں گی یا نہیں۔ دریں اثناء انا ڈی ایم کے ارکان اسمبلی کی اکثریت نے ششی کلا کے خلاف پنیرسلوم کی بغاوت کی مخالفت کی ہے حالانکہ وہ ان ہی ارکان اسمبلی کی تائید پر انحصار کررہے تھے۔ قبل ازیں موصولہ اطلاعات کے بموجب ٹاملناڈو میں جاری سیاسی الجھن و غیریقینی کے درمیان آج دن بھر میں ڈرامائی صورتحال دیکھی گئی۔ گورنر سی ایچ ودیا ساگر راؤ جو مہاراشٹرا کے گورنر بھی ہیں، بدستور ممبئی میں مقیم ہیں اور ان کے چینائی سفر کا فی الحال کوئی اشارہ نہیں ملا ہے۔ مہاراشٹرا کے راج بھون میں ایک عہدیدار نے پی ٹی آئی سے کہا کہ ’’گورنر ممبئی میں آج شام مقررہ پروگرام میں شرکت کریں گے اور ان کے کل چینائی یا نئی دہلی سفر کے کسی منصوبہ کی ہنوز کوئی اطلاع نہیں ہے‘‘۔ اس دوران انا ڈی ایم کے کی جنرل سکریٹری وی کے ششی کلاء نے جو اپنی لیجسلیچر پارٹی کی لیڈر منتخب ہونے کے بعد چیف منسٹر کے عہدہ کا حلف لینے کی تیاریوں میں مصروف ہیں، اپنے پیشرو اور پنیراسلوم پر غداری کا الزام عائد کیا ہے اور اس عزم کا اظہار کیا کہ وہ پنیراسلوم کی سازشوں کے آگے گھٹنے نہیں ٹیکیں گے۔ دوسری طرف پنیراسلوم نے اپنی حریف ششی کلاء کے اس الزام کو مسترد کردیا کہ انا ڈی ایم کے کی قیادت کے خلاف ان (پنیراسلوم) کی بغاوت کی پیچھے ڈی ایم کے کارفرما ہے اور کہا کہ ششی کلاء کو انہیں اپنی پارٹی کے قانون کے عہدہ سے برطرف کرنے کا کوئی حق یا اختیار نہیں ہے۔ چیف منسٹر او پنیراسلوم نے کل رات کی اچانک بغاوت کے بعد آج ٹامل کی ٹی وی چینلوں سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ ’’ان (ششی کلاء) سے پوچھا جانا چاہئے کہ وہ اپنی الزام کی بنیاد بتائیں۔ میں کبھی بھی ڈی ایم کے کا دوست نہیں رہا۔ تاریخ پر نظر ڈالئیے یہ واضح ہوجائے گا‘‘۔ سیاسی ڈراموں میں شدت کے ساتھ ہی گرین ریز روڈ پر واقع پنیرسلوم کی رہائش گاہ پر سیکوریٹی میں زبردست اضافہ کردیا گیا ہے جہاں ان کے حامیوں کی کثیر تعداد جمع ہورہی ہے۔ اس دوران انا ڈی ایم کے سے وابستہ ارکان اسمبلی نے پنیراسلوم کے بیانات سے پیدا شدہ صورتحال کا جائزہ لینے کیلئے پارٹی ہیڈکوارٹرز میں اپنے اجلاس منعقد کیا۔

ڈی ایم کے کارگذار صدر ایم کے اسٹالن سے پنیراسلوم کی خیرسگالی کے تبادلہ پر ششی کلاء کے ریمارکس کا حوالہ دیتے ہوئے پنیراسلوم نے کہا کہ ’’ڈی ایم کے اور میرے درمیان کبھی کوئی تعلق نہیں رہا لیکن یہ انسانی فطرت کا تقاضہ ہیکہ اگر کوئی آپ کو دیکھ کر مسکرائے تو آپ بھی اس کی خیرسگالی کا مسکرا کر جواب دیں‘‘۔ پنیراسلوم اپنے اس الزام پر بدستور بضد رہے کہ چیف منسٹر کے عہدہ سے انہیں زبردستی ہٹایا گیاہے۔ پنیراسلوم نے کہا کہ اگر ضروری ہو تو اپنا استعفیٰ واپس لینے کیلئے تیار ہیں اور ایوان اسمبلی میں اپنی اکثریت ثابت کرسکتے ہیں۔ ششی کلاء نے انا ڈی ایم کے ارکان اسمبلی کے ایک اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ انہیں چند دن قبل ہی پنیراسلوم کی چالوں کا اندازہ ہوچکا تھا اس کے باوجود پارٹی بدستور متحد ہے اور ان کی دھمکیوں سے مرعوب نہیں ہوئی۔ ششی کلاء نے جارحانہ تیور اپناتے ہوئے کہا کہ انا ڈی ایم کے میں سازشوں کو کبھی کامیابی نہیں ملی۔ پارٹی میں کبھی بھی اندرونی مخالفت نہیں دیکھی گئی لیکن یہ اب ابھر رہی ہے یہ یقیناً ہمارے ان حریفوں کی کارستانی ہے کیونکہ وہ اس پارٹی میں یہ ہوتا دیکھے ہیں جو انہیں پسند نہیں تھا۔ ششی کلاء بالواسطہ طور پر اپنے انتخاب پر پنیراسلوم کی بغاوت کا حوالہ دے رہی تھیں۔ انا ڈی ا یم کے کے ترجمان سی آر سرسوتی نے کہا کہ ششی کلاء کی صدارت میں منعقدہ لیجسلیچر پارٹی کے اجلاس میں اس پارٹی کے 134 کے منجملہ 131 ارکان نے شرکت کی۔ نگرانکار چیف منسٹر پنیراسلوم کی بغاوت سے پیدا شدہ صورتحال کا جائزہ لیا۔ سرسوتی کے بموجب ارکان اسمبلی نے کہا کہ انا ڈی ایم کے کے حقیقی حامی اپنی پارٹی نہیں چھوڑیں گے کیونکہ وہ اماں کے وفادار ہیں اور دعویٰ کیا کہ ششی کلاء ہی چیف منسٹر کے عہدہ کا حلف لیں گی‘‘۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT