Wednesday , September 20 2017
Home / Top Stories / ٹرمپ ، جمہوریت کیلئے سنگین خطرہ : ہیلاری کلنٹن

ٹرمپ ، جمہوریت کیلئے سنگین خطرہ : ہیلاری کلنٹن

انتخابی نتائج قبول نہ کرنے کی دھمکی پر تنقید ، ریپبلکن حریف

واشنگٹن ۔ /22 اکٹوبر (سیاست ڈاٹ کام) امریکی صدارتی انتخابات میں ڈیموکریٹک پارٹی کی امیدوار ہیلاری کلنٹن نے اپنے ریپبلکن حریف ڈونالڈ ٹرمپ کو ’’امریکی جمہوریت کیلئے خطرہ ‘‘ قرار دیا ہے ۔ جنہوں نے عام انتخابات کے نتائج کا احترام کرنے سے انکار کردیا ہے ۔ ہیلاری کلنٹن نے اوہائیو میں ایک ریلی سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ’’چہارشنبہ کی شب ڈونالڈ ٹرمپ نے کچھ ایسا کام کیا کہ کسی دوسرے صدارتی امیدوار نے کبھی ایسا نہیں کیا ۔ انہوں نے یہ کہنے سے انکار کردیا کہ وہ انتخابی نتائج کا احترام کریں گے ۔ ایسا کرتے ہوئے انہوں نے جمہوریت کو دھمکی دی ہے ‘‘ ۔ مباحث کے ابتدائی دو راؤنڈ میں ٹرمپ کے خلاف جلسہ کے شرکاء کی جانب سے نعرہ بازی اور پھر تیسرے راؤنڈ میں ٹرمپ کی طرف سے یہ کہے جانے کے بعد کہ اس مرحلہ پر وہ یہ نہیں کہہ سکتے کہ آیا وہ صدارتی انتخابات کے نتائج قبول کریں گے ۔ ہیلاری نے یہ ریمارکس کی ہیں ۔ ہیلاری نے کہا کہ ’’وہ بنیادی طور پر کچھ اور کہہ رہے ہیں اور 240 سال سے ہم اس روایت پر عمل پیرا ہیں ۔اس بات پر کوئی بحث نہیں کہ کون جیتا ہے اور کون ہارا ہے ۔ اقدار کی ہمیشہ پرامن منتقلی ہوتی رہی ہے ۔ اگر انتخابات میں شکست ہوجائے تو یقیناً ناگوار گزرے گا لیکن ہم اپنے ملک میں قیادت اور مطلق العنانی کے درمیان فرق جانتے ہیں ‘‘ ۔ ہیلاری کلنٹن نے مزید کہا کہ ’’اقتدار کی پرامن منتقلی بھی ایک اہم عمل جو ہمیں دوسروں سے  منفرد رکھا ہے ۔ اس طرح ہم اپنے ملک کو متحد رکھتے ہیں ۔ کوئی عنان اقتدار سنبھالتا ہے اس کو نہیں دیکھا جاتا ۔ آپ کی وزیر خارجہ کی حیثیت سے میں 112 ممالک کے دورے کرچکی ہوں ۔ میں وہ فرق دیکھی ہوں جو ہم اور دوسروں کے عمل کے درمیان ہے ۔ میں ان ملکوں کو بھی گئی ہوں جہاں لوگ اپنے سیاسی مخالفین کو جیل بھیج دیتے ہیں ۔ تختہ دار پر چڑھادیتے ہیں یا جلا وطن کردیتے ہیں یا پھر ان انتخابات کو کالعدم کردیتے ہیں جن میں انہیں کامیابی نہیں ملتی ‘‘ ۔ ہیلاری کلنٹن نے اپنے حامیوں سے ووٹ مانگتے ہوئے کہا کہ ’’امریکہ میں ایسا کرنے کی ہرگز اجازت نہیں دی جاسکتی ۔ میرے ایقان یہ درست ہے کہ انتخابات میں کوئی آپ کی یا میری تائید کرتا ہے اس میں کوئی مذائقہ نہیں ۔ ہمیں بہرصورت اور جمہوریت اور اپنے اس ملک کی تائید کرنا چاہتے جس سے ہم سب کو ہمہ اقسام کے مواقع فراہم کیا ہے ‘‘۔

TOPPOPULARRECENT