Saturday , August 19 2017
Home / Top Stories / ٹرمپ بالآخر ریپبلکن پارٹی کے صدارتی امیدوار نامزد

ٹرمپ بالآخر ریپبلکن پارٹی کے صدارتی امیدوار نامزد

 

 

وائیٹ ہاؤز کیلئے دوڑ میں ہلاری کے خلاف کامیابی کا یقین سخت محنت کا عہد

کلیولینڈ ۔ 20 جولائی (سیاست ڈاٹ کام) امریکہ کے آئندہ صدارتی انتخابات میں ڈیموکریٹک پارٹی کی امیدوار ہلاری کلنٹن کے خلاف مقابلہ کیلئے ڈونالڈ ٹرمپ نے بالآخر آج ری پبلکن پارٹی کی باضابطہ امیدواری حاصل کرلی جس کے ساتھ ہی ریپبلکن پارٹی کی امیدواری حاصل کرنے کیلئے گذشتہ کئی مہینوں سے جاری ٹرمپ کی متنازعہ مہم کا آغاز ہوگیا اور وہ حیرت انگیز طور پر صدارتی دوڑ میں شامل ہوگئے۔ 70 سالہ ٹرمپ جو صرف ایک سال قبل سیاسی میدان میں اترے تھے، ابتدائی مقابلوں میں ریپبلکن پارٹی کے 17 امیدواروں کو شکست دی جن میں جان کیسیچ اور جیب بش جیسے سرمایہ دار امیدوار بھی شامل تھے۔ ریپبلکن نیشنل کنونشن میں ٹرمپ کو 1,237 مندوبین کے لازماً درکار ووٹ حاصل ہوگئے جو اس پارٹی کے امیدوار کی حیثیت سے نامزدگی کیلئے ضروری تھے۔

ایوان نمائندگان کے اسپیکر اور ریپبلکن نیشنل کنونشن کے سربراہ پال ریان نے اعلان کیا کہ ’’ڈونالڈ ٹرمپ اکثریتی ووٹ حاصل کرچکے ہیں انہیں امریکی صدارت کیلئے ریپبلکن پارٹی کا امیدوار منتخب کرلیا گیا ہے‘‘۔ ٹرمپ نے ریپبلکن نامزدگی کا خیرمقدم کرتے ہوئے اس کو ’ایک عظیم اعزاز‘ قرار دیا اور سخت محنت کے ساتھ کام کرنے کا عہد کیا۔ ٹرمپ نے بعدازاں ٹوئیٹر پر لکھا کہ ’’امریکی صدارت کیلئے ریپبلکن پارٹی کی نامزدگی ایک عظیم اعزاز ہے اور میں سخت محنت کے ساتھ کام کروں گا۔ آپ کو کبھی مایوس ہونے نہیں دیا جائے گا ! امریکہ سب سے پہلے !‘‘۔ ٹرمپ نے صدارتی انتخاب میں اپنی فتح کا یقین ظاہر کرتے ہوئے کہا کہ وہ کلیدی ریاست اوہائیو میں بھی کامیاب ہوجائیں گے جو اس چار روزہ کنونشن کی میزبانی کررہی ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ ’’ہم صدارتی انتخاب جیت جائیں گے اور حقیقی تبدیلی لائیں گے۔ نیز واشنگٹن پر ایک نئی قیادت آئے گی‘‘۔ انہوں نے کہا کہ ’’یہ ایک ایسی قیادت ہوگی جو امریکی عوام کو مقدم رکھے گی۔ ہم ہمارے روزگار واپس لائیں گے۔ ہم اپنی شکستہ حال فوج کی دوبارہ تعمیر کریں گے اور ہمارے عظیم و تجربہ کار سپاہیوں کی صحیح دیکھ بھال کریں گے۔ ہماری سرحدی مربوط ہوں گی۔ ‘‘8 نومبر کو ہونے والے صدارتی انتخاب میں ان کا مقدمہ ہلاری کلنٹن سے ہوگا۔

ٹرمپ کو امریکی صدارتی دفتر میں قدم رکھنے نہ دیا جائے
مجھے پہلی خاتون صدر منتخب کرتے ہوئے امریکی عوام نئی تاریخ بنائیں: ہلاری
واشنگٹن۔ 20 جولائی (سیاست ڈاٹ کام)ہلاری کلنٹن نے آج امریکی رائے دہندوں پر زور دیا کہ وہ اس بات کو یقینی بنائیں کہ ان کے حریف ری پبلیکن امیدوار ڈونالڈ ٹرمپ کبھی وائٹ ہاؤز کے صدارتی دفتر ’اوول آفس‘ میں قدم بھی نہ رکھ پائیں۔ ٹرمپ کی امیدواری کی باضابطہ توثیق کے چند گھنٹوں بعد ہلاری کلنٹن نے کہا کہ ’’ڈونالڈ ٹرمپ صرف ری پبلیکن پارٹی کے امیدوار نامزد ہوئے ہیں، اب ضرورت ہے کہ اس بات کو یقینی بنایا جائے کہ وہ اوول آفس میں کبھی قدم بھی نہ رکھ پائیں‘‘۔ اوول آفس دراصل امریکی صدر کا سرکاری دفتر ہے جو وائٹ ہاؤز کامپلیکس کے ویسٹ ونگ میں واقع ہے۔ ہلاری نے اپنے ملک کے عوام پر زو ردیا کہ وہ انہیں اس ملک کی پہلی خاتون صدر بناتے ہوئے ایک نئی تاریخ رقم کریں۔ ڈیموکریٹک پارٹی کی صدارتی امیدوار کی حیثیت سے ہلاری کلنٹن کی نامزدگی 25 تا 28 جولائی فلاڈلفیا میں منعقد شدنی کنونشن میں توثیق ہوسکتی ہے۔

 

ٹرمپ وکٹری فنڈ میں ہندوستانی نژاد امریکی شہری کا خطیر رقمی عطیہ
کلیولینڈ۔ 20 جولائی (سیاست ڈاٹ کام) شکاگو سے تعلق رکھنے والے ایک ہندوستانی نژاد امریکی ڈونر نے ڈونالڈ ٹرمپ کے صدارتی کیمپین کے لئے 898,000 امریکی ڈالرس کی خطیر رقم کا عطیہ دے کر سب کو حیرت میں ڈال دیا کیونکہ وہ اب تک کے تمام عطیہ کنندگان میں سب سے بڑی رقم کے ساتھ سرفہرست ہیں۔ شکاگو میں رہائش پذیر شلبھ شلی کمار نے ٹرمپ کے وکٹری فنڈ کے لئے 449,400 ڈالرس کا عطیہ دیا جو ٹرمپ کیمپین کے لئے دیئے جانے والے عطیہ میں زیادہ سے زیادہ دی جانے والی رقم کی حد ہے جبکہ ٹرمپ کی اہلیہ بھی وکٹری فنڈ کے لئے خطیر رقم روانہ کرنے والی ہیں اور اس طرح یہ رقم دوگنی ہوکر 898,800 ڈالرس ہوجائے گی۔ جاریہ سال کے اوائل میں کمار نے ری پبلیکن ہندو کولیشن بھی تشکیل دی تھی جبکہ کل انہوں نے امریکی ایوان نمائندگان کے سابق اسپیکر اور ٹرمپ کے قریبی ساتھی نیوٹ گنگریچ کو صبح کے ناشتہ پر بھی مدعو کیا تھا جبکہ ہفتہ کے روز کمار نے ٹرمپ سے ملاقات کی تھی۔ اس موقع پر کمار نے کہا کہ یہ تو صرف شروعات ہے۔ آگے چل کر مزید رقومات بھی عطیہ کی جائیں گی اور ٹرمپ کی پاکستان سے متعلق پالیسیوں اور مسلمانوں سے متعلق ان کے (ٹرمپ) نظریات کی ستائش کی۔ کمار نے کہا کہ ڈونالڈ دفاعی معاملات میں سابق صدر رونالڈ (رونالڈ ولسن ریگن) سے زیادہ مستحکم ثابت ہوں گے۔

 

ٹرمپ ریپبلکن صدارتی امیدوار
کلیولینڈ ۔ 20 جولائی (سیاست ڈاٹ کام) امریکی صدارتی انتخابات میں ڈونالڈ ٹرمپ ریپبلکن پارٹی کے امیدوار ہوں گے۔ ریپبلکن نیشنل کنونشن میں ٹرمپ کو درکار 1237 مندوبین کے لازماً درکار ووٹ حاصل ہوگئے۔ اس کے ساتھ ہی امریکہ میں انتخابی مہم کا باقاعدہ آغاز ہوگیا ہے اور اب صدارتی مقابلہ ڈیموکریٹک امیدوار ہلاری کلنٹن اور ریپبلکن امیدوار ڈونالڈ ٹرمپ کے مابین ہوگا۔(تفصیلی خبر صفحہ 4 پر)اس دوران ریپبلکن کنونشن کے باہر آج بھی احتجاجی مظاہرہ جاری رہا اور مظاہرین نے بیانرس کے ساتھ انسانی دیوار بناتے ہوئے ٹرمپ کے اس دعوے کا مذاق اڑایا کہ وہ صدر منتخب ہوجائیں تو میکسیکو کی سرحد بندکردیں گے۔ دوسری طرف ٹرمپ کی تقریر لکھنے والے اسٹاف نے ملینیا ٹرمپ کے خطاب میں میشل اوباما کی تقریر کا متن شامل کرنے پر معذرت خواہی کی ہے۔

TOPPOPULARRECENT