Thursday , August 17 2017
Home / Top Stories / ٹرمپ نفرت اور خوف کے سوداگر، ہلاری کا ریمارک

ٹرمپ نفرت اور خوف کے سوداگر، ہلاری کا ریمارک

واشنگٹن ، 14 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) ہلاری کلنٹن نے رئیل اسٹیٹ کے متنازعہ بزنسمین ڈونالڈ ٹرمپ پر نفرت اور خوف کی سوداگری کا الزام عائد کیا اور دعویٰ کیا کہ بیرونی قائدین ان سے رابطہ قائم کرتے ہوئے اپنی تائید و حمایت کا اظہار کررہے ہیں تاکہ ریپبلکن کے بڑے دعوے دار کو وائیٹ ہاؤس میں داخلے سے روکا جاسکے۔ ہلاری نے کل کی پرائمریز سے قبل کہا: ’’میرے خیال میں تمام امریکیوں کو فکرمند ہونا چاہئے۔ یہ تو واضح ہے کہ ڈونالڈ ٹرمپ نہایت نفرت انگیز مہم چلاتے ہوئے امریکیوں کے گروپوں کو ایک دوسرے کے خلاف صف آراء کررہے ہیں۔ ‘‘ سابق وزیر خارجہ نے ایک سوال کے جواب میں کہا کہ وہ نفرت اور خوف کی سوداگری کررہے ہیں۔ وہ ہماری
فطرت کے بہتر اوصاف کو اُبھارنے کی بجائے ہمارے بدترین
جذبات سے کھلواڑ کررہے ہیں۔ 68 سالہ ہلاری نے کہا کہ 69 سالہ ٹرمپ اپنے سننے والوں میں تشدد بھڑکا رہے ہیں۔ انھوں نے کہا کہ وہ درحقیقت تشدد کیلئے کچھ اس طرح بھڑکا رہے ہیں کہ وہ اپنے سامعین پر زور دیتے ہیں کہ لوگوں کو مکے رسید کریں، قانونی اخراجات کی پابجائی کی پیشکش کررہے ہیں، اور پھر مخصوص معاملوں کو دیکھیں تو وہ کئی گروپوں کے خلاف حد درجہ ہٹ دھرمی کا مظاہرہ کرتے آئے ہیں، وہ گیارہ، بارہ ملین تارکین وطن کو ملک بدر کردینے کی باتیں کررہے ہیںجبکہ ہماری قوم تارکین وطن کو ساتھ لے کر آگے بڑھی ہے، وہ مسلمانوں کو ہمارے ملک میں داخلے سے روکنے کی بات کررہے ہیں جبکہ ہم
مذہبی آزادی پر یقین رکھتے ہیں۔ ایک اور سوال کے جواب میں ہلاری نے دعویٰ کیا کہ بیرونی قائدین اُن کی تائید و حمایت کیلئے تیار ہیں تاکہ ٹرمپ کو روکا جاسکے۔ انھوں نے کوئی بیرونی قائدین کے نام نہیں لئے لیکن اتنا کہا کہ اطالوی وزیراعظم ماتیو رنزی نے اُن کی برسرعام تائید و حمایت کی ہے۔
’’امریکی فوجداری نظام انصاف میں نسل پرستی‘‘
دریں اثناء ڈیموکریٹ امیدوارہ ہلاری کلنٹن نے پانچ بڑی ریاستوں بشمول فلوریڈا ، اوہائیو میں منگل کی کلیدی پرائمریز سے قبل دعویٰ کیا کہ امریکہ کے فوجداری نظام انصاف میں باضابطہ نسل پرستی پائی جاتی ہے۔ ’’ہمیں اپنے تعلق سے دیانت دار ہونا پڑے گا۔ ہمارے سسٹم میں نسل پرستی کا عنصر ہے۔

TOPPOPULARRECENT