Thursday , August 17 2017
Home / Top Stories / ٹرمپ کی ذہنی حالت پر ماہرین نفسیات کو تشویش

ٹرمپ کی ذہنی حالت پر ماہرین نفسیات کو تشویش

مکمل جسمانی و نفسیاتی معائنہ کا حکم دینے اوباما سے تین ڈاکٹروں کی درخواست
واشنگٹن ۔ 19 ڈسمبر (سیاست ڈاٹ کام) امریکہ کی باوقار یونیورسٹیوں سے وابستہ تین سرکردہ ماہرین نفسیات نے صدر بارک اوباما کو مکتوب لکھتے ہوئے ان کے جانشین و منتخب صدر ڈونالڈ ٹرمپ کی نفسیاتی و دماغی حالت پر گہری تشویش کا اظہار کیا ہے۔ ان ڈاکٹروں نے جن میں ایک کا ہارورڈ میڈیکل اسکول اور دیگر دو کا دوسری سرکردہ یونیورسٹیوں سے تعلق ہے، اوباما سے درخواست کی ہیکہ وہ ٹرمپ کے 20 جنوری کو صدارتی عہدہ پر فائز ہونے سے ان کے مکمل طبی و نفسیاتی معائنہ کا حکم دیں۔ ہننگٹن پوسٹ میں شائع شدہ مکتوب کے مطابق ان ڈاکٹروں نے کہا کہ ’’ہم اپنے منتخب صدرکی ذہنی حالت پر گہری تشویش کا اظہار کرتے ہیں‘‘۔ اس مکتوب کو اس لئے بھی نمایاں اہمیت حاصل ہوگئی ہیکہ یہ تین سرکردہ ماہرین جیوڈیتھ ہرمن پروفیسر سائکیاٹری، ہارورڈ میڈیکل اسکول کے علاوہ نانوٹ گارٹل (یونیورسٹی آف کیلیفورنیا) اور ڈی موسباثد (اسسٹنٹ کلینکل پروفیسر) نے لکھا ہے۔ یہ پہلا موقع نہیں ہیکہ ڈونالڈ ٹرمپ کی ذہنی حالت پر شکوک و شبہات کا اظہار کیا گیا ہے۔ اگست میں اوباما نے 70 سالہ ارب پتی تاجر کے فیصلہ کی صلاحیت اور ان کے مزاج پر سوالات اٹھاتے ہوئے کہا تھا کہ وہ بحیثیت صدر خدمت انجام دینے کے قابل نہیں ہیں۔ اگست میں ہی آکسفورڈ یونیورسٹی کے ایک جائزہ نے دعویٰ کیا تھا کہ ٹرمپ کی نفسیات حالت اور مزاج اڈولف ہٹلر سے بھی زیادہ خطرناک ہے۔

TOPPOPULARRECENT