Thursday , August 24 2017
Home / دنیا / ٹرمپ کی شریک حیات اور فرزند فوری طور پر وائیٹ ہاؤس منتقل نہیں ہوں گے

ٹرمپ کی شریک حیات اور فرزند فوری طور پر وائیٹ ہاؤس منتقل نہیں ہوں گے

نیویارک ۔ 21 نومبر (سیاست ڈاٹ کام) مستقبل کی امریکی خاتون اول میلانیا ٹرمپ اور ان کے بیٹے بیرن ٹرمپ کے ماہ جنوری میں حلف لینے کے فوری بعد وائیٹ ہاؤس منتقل نہیں ہوں گے کیونکہ ایسا کرنے سے بیرن کی تعلیم متاثر ہونے کا اندیشہ ہے کیونکہ اسے درمیان میں ہی اپنا اسکول ترک کرنا پڑ سکتا ہے۔ ٹرانزیشن ٹیم کے کمیونکیشن ڈائرکٹر جیسن ملر نے اخباری نمائندوں سے بات کرتے ہوئے کہا کہ تعلیمی سال کے درمیان سے طالب علم کو اسکول سے نکال لینا یقینا ایک حساس معاملہ ہے۔ بہرحال اس سلسلہ میں جلد ہی ایک رسمی بیان بھی جاری کیا جائے گا۔ یاد رہیکہ نیویارک پوسٹ میں یہ خبریں گشت کررہی تھیں جس میں معتبر ذرائع کا حوالہ دیتے ہوئے کہا گیا تھا کہ نومنتخبہ صدر کی 46 سالہ اہلیہ اور ان کے فرزند بیرن اپنے خاندانی چکاچوند کرنے والے ٹرمپ ٹاور پینٹ ہاؤس میں ہی رہیں گے تاکہ بیرن اپنی اپرویسٹ سائڈ پرائیویٹ اسکول میں تعلیم کا سلسلہ جاری رکھ سکے۔ دوسری طرف جب ٹرمپ سے پوچھا گیا کہ کیا وہ صدارتی رہائش گاہ میں منتقل ہونے کی تیاریاں کررہے ہیں تو رپورٹرس کو ٹرمپ نے مثبت جواب دیتے ہوئے کہا ’’جی ہاں! وائیٹ ہاؤس۔‘‘ یہ پوچھے جانے پر کہ کیا ان کی اہلیہ اور فرزند بھی جلد ہی ان کے ساتھ وائیٹ ہاؤس میں رہائش اختیار کریں گے؟ جس کا جواب دیتے ہوئے ٹرمپ نے کہا کہ ’’جی ہاں! بیرن اسکولی تعلیم ختم ہوتے ہی اپنی والدہ کے ساتھ وائیٹ ہاؤس منتقل ہوجائے گا۔ یاد رہے کہ ڈونالڈ ٹرمپ 20 جنوری 2017ء کو امریکہ کے 45 ویں صدر کی حیثیت سے حلف لیں گے۔

TOPPOPULARRECENT