Saturday , August 19 2017
Home / کھیل کی خبریں / ٹوئنٹی 20 : نیوزی لینڈ نے سری لنکا کو 9 وکٹس سے ہرایا

ٹوئنٹی 20 : نیوزی لینڈ نے سری لنکا کو 9 وکٹس سے ہرایا

during the Twenty20 International match between New Zealand and Sri Lanka at Eden Park on January 10, 2016 in Auckland, New Zealand.

مارٹن گپٹل اور کولن منرو کی تیز رفتار اننگز ، سیریز 2-0 سے کلین سوئپ، سری لنکا کا ٹاپ آرڈر ناکام

آکلینڈ۔ 10 جنوری (سیاست ڈاٹ کام) نیوزی لینڈ نے آج مارٹن گپٹل اور کولین منرو کے شاندار مظاہرے کی بدولت آکلینڈ نے سری لنکا کے خلاف دوسرے ٹوئنٹی۔20 میچ میں بھی 9 وکٹس سے شاندار کامیابی حاصل کی۔ منرو نے کامیابی کیلئے درکار رنز کا نشانہ تیزی سے پورا کیا اور آخری میں چھکا لگاتے ہوئے ٹیم کو فتح دلائی۔ انہوں نے 14 گیندوں میں تیز رفتار 50 ناٹ آؤٹ رنز بنائے اور یہ ٹوئنٹی 20 کی دوسری تیز ترین نصف سنچری ہے۔ اس سے پہلے ہندوستان کے یوراج سنگھ نے انگلینڈ کے خلاف 2007ء میں 12 گیندوں میں نصف سنچری بنائی تھی۔ کسی نیوزی لینڈ کے بیٹسمین کی یہ پہلی تیز ترین نصف سنچری ہے۔ ان کے علاوہ گپٹل نے 19 گیندوں میں 3 اہم وکٹس لیتے ہوئے سری لنکا کے ٹاپ آرڈر کو تہس نہس کردیا۔ نیوزی لینڈ کو 143 رنز کا اوسط اسکور پورا کرنے کیلئے صرف 10 اوورس کافی ہوگئے تھے،

جبکہ کین ولیمسن نے بھی 32 ناٹ آؤٹ رنز بنائے۔ اس کامیابی کے ساتھ نیوزی لینڈ نے سری لنکا کے خلاف ٹوئنٹی 20 میں 2-0 کے ساتھ کلین سوئپ کرلیا ہے۔ اسی طرح ٹسٹ میں بھی 2-0 سے بھی کامیابی حاصل کی اور ونڈے میں اس نے 3-1 سے سیریز جیتی ہے۔ سری لنکا کی ٹوئنٹی 20 میچس میں اس شکست نے اسے رینکنگ میں پہلے مقام سے تیسرے مقام پر پہنچا دیا ہے اور وہ ویسٹ انڈیز اور آسٹریلیا کے بعد تیسرے نمبر پر ہے۔ نیوزی لینڈ کے خلاف سارے ٹور میں سری لنکا کا ٹاپ آرڈر بری طرح ناکام رہا۔ آج بھی پہلے بیٹنگ کرتے ہوئے 142 پر ٹیم آل آؤٹ ہوگئی اور انجیلو میتھیوز واحد بیٹسمین تھے جنہوں نے 81 رنز ناٹ آؤٹ کے ساتھ مزاحمت کی۔ ٹوئنٹی 20 میں میتھیوز کا یہ اب تک کا اعظم ترین اسکور ہے۔ پانچ سال پہلے انہوں نے انگلینڈ کے خلاف سب سے بہترین مظاہرہ کرتے ہوئے 58 رنز بنائے تھے۔ تلک رتنے دلشان (28) واحد بیٹسمین ہیں جو دو ہندسی عدد تک پہنچ سکے جبکہ سری لنکا کے وکٹس یکے بعد دیگرے گرتے جارہے تھے۔ سری لنکا کی ناکامی کی ایک اہم وجہ غلط بیٹنگ اور بار بار غلطیوں کو دہرانا ہے۔ اس کے ساتھ ساتھ نیوزی لینڈ کی بہترین بولنگ اور فیلڈنگ نے بھی اہم رول ادا کیا ہے۔نیوزی لینڈ کے لئے سب سے بہتر مظاہرہ کرنے والے گرینڈ ایلیوٹ رہے جنہوں نے ایڈن پارک میں پہلی گیم سے واپسی کے بعد 22 رنز کے عوض 4 وکٹس لئے۔ گزشتہ سال انہوں نے جنوبی افریقہ کے خلاف آخری گیند سے قبل چھکا لگاتے ہوئے نیوزی لینڈ کو ورلڈ کپ کے فائنل میں رسائی دلائی تھی۔ ایڈم ملن اور مشیل سینٹنر جنہیں مٹ ہنری اور ایش سودھی کی جگہ نیوزی لینڈ کی ٹیم میں شامل کیا گیا تھا، آج 2 وکٹس حاصل کئے۔ کامیابی کیلئے 143 رنز کا تعاقب کرتے ہوئے گپٹل اور ولیمسن نے شاندار شروعات کی اور انتہائی تیز رفتاری کے ساتھ رنز بناتے ہوئے ٹیم کو بہ آسانی کامیابی دلائی۔

TOPPOPULARRECENT