Thursday , September 21 2017
Home / اضلاع کی خبریں / ٹیلرنگ سرٹیفکیٹ کورس کے طلبہ شدید مشکلات سے دوچار

ٹیلرنگ سرٹیفکیٹ کورس کے طلبہ شدید مشکلات سے دوچار

سرپور ٹاون /22 مارچ ( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز ) تلنگانہ ریاست حکومت کی جانب سے لڑکے اور لڑکیوں کو ٹیلرنگ اور متعلقہ ٹریڈس میں تربیتی کورس کا اہتمام کرتے ہوئے تلنگانہ حکومت بے روزگار کو روزگار فراہم کر رہی ہے تاکہ آنے والے دنوں میں امتحانات میں کامیابی حاصل کرنے والوں کو روزگار سے منسلک کیا جائے اور خصوصاً غریبوں اور مستحق افراد کو اس امتحانات کا انعقاد عمل میں لاتے ہوئے ریاستی حکومت قابل ستائش اقدامات کر رہی ہے تاکہ غریبوں اور مستحق افراد کو اس امتحانات کا انعقاد عمل میں لاتے ہوئے ریاستی حکومت قابل ستائش اقدامات کر رہی ہے تاکہ غریبوں کو روزگار حاصل کرنیکی خصوصی سہولت ہو ۔ اس ضمن میں ڈسٹرکٹ ایجوکیشن آفیسر عادل آباد ستیہ نارائن ریڈی کی جانب سے مختلف کورسیس میں امتحانات میں شرکت کرنے والے طلبہ اور لڑکے اور لڑکیوں کو خود اپنا مشن اور سامان ساتھ لانے کی ہدایت کی گئی تھی اور مارچ کے روز ضلع عادل آباد مستقر کے مختلف سنٹروں میں اس ٹریڈ ٹیلرنگ امتحان کا انعقاد عمل میں لایا گیا ۔ اس ٹیلرنگ امتحان میں شرکت کرنے والے لگ بھگ 230 کیلومیٹر کی دوری پر سے سنٹر طئے کرتے ہوئے ٹیلرنگ امتحانی سنٹرمیں شرکت کرنے کیلئے کافی مشکلات کا سامنا کرنا پڑا ۔ اس غریبی کی وجہ سے بے روزگار نوجوان دوسرے امتحانات نہیں لکھ سکتے ہیں لیکن غریبی اور مجبوری کی وجہ سے اس ٹیلرنگ امتحان میں شرکت کر رہے تھے ۔ لیکن جب اعلی عہدیداروں کی جانب سے اس امتحان میں ٹیلرنگ مشن کے ساتھ شرکت کرنے کے اعلان سے تمام طلبہ اور بے روزگاروں میں ہلچل پیدا ہوگئی ۔ سرپور ٹاون مستقر کے غریب گھرانوں سے تعلق رکھنے والے شاہدہ فاطمہ صدیقہ زوجہ کبیر احمد ساکن سرپور ٹاون نے بھی ٹیلرنگ امتحان میں شرکت کرنے کیلئے درخواست داخل کی تھی ۔ لیکن 17 مارچ کے روز ٹیلرنگ مشین کے ساتھ حاضر ہونے کی اطلاع ملنے پر کافی پریشان ہوگئے ۔ اس سلسہ میں محترمہ ساہدہ فاطمہ سیاست نیوز سے کہا کہ ریاستی حکومت کو چاہئے کہ ایسے ٹریڈ امتحانات کو انعقاد کرنے پر ٹیلرنگ مشینوں کا بھی انتظام ہے ۔ ٹیلرنگ ٹیکنیکل سرٹیفکیٹ کور میں امتحان میں شرکت کرنے والی محترمہ شاہدہ فاطمہ صدیقہ ان کا ہال ٹکٹ نمبر 16190681005 ہے ۔ انہوں نے اپنی مجبوری اور اپنی داستان بتائی کہ کتنی مشکلوں سے انہوں نے امتحان میں شرکت کرتے ہوئے امتحان میں شریک ہوئے ۔ ہم نے عادل آباد مستقر پر صبح سے 9 بجے تک ٹیلرنگ مشین کی تلاش شروع کردی ۔ لگ بھگ تمام علاقوں میں گشت لگانے کے بعد ایک جگہ 800 سو روپئے کرایہ پر ٹیلرنگ مشین حاصل کرتے ہوئے امتحان میں شرکت کرنی پڑی ۔ دوسرے کئی لڑکے اور لڑکیاں مشین نہ لانے کی وجہ سے امتحان سنٹر سے باہر کردیا گیا ۔ اس لئے ریاستی حکومت کو چاہئے کہ ایسے مزید ٹیلرنگ امتحانات کا انعقاد کرنے پر حکومت کی جانب سے ٹیلرنگ مشینوں کا بھی امتحانی سنٹروں میں انتظام کرنے کا مطالبہ کیا گیا ۔

TOPPOPULARRECENT