Friday , September 22 2017
Home / سیاسیات / ٹیپو سلطان تقاریب پر شیوسینا کو بھی اعتراض

ٹیپو سلطان تقاریب پر شیوسینا کو بھی اعتراض

ممبئی 12 نومبر ( سیاست ڈاٹ کام ) ٹیپو سلطان یوم پیدائش تقاریب پر جاری تنازعہ کا حصہ بنتے ہوئے شیوسینا نے میسور کے سابق حکمران کو تنقید کا نشانہ بنایا اور کہا کہ کرناٹک میں کانگریس حکومت تقسیم پسندانہ پالیسی پر عمل کر رہی ہے ۔ شیوسینا کے رکن پارلیمنٹ اروند ساونت نے ٹیپو سلطان کے مراٹھا حکمران شیواجی سے تقابل پر بھی اعتراض کیا ہے ۔ ساونت نے بتایا کہ ٹیپو سلطان ایسے حکمران تھے جنہوں نے ہندووں کا قتل عام کیا اور وہ اسلام کے علاوہ کسی اور مذہب کے وجود کے قائل نہیں تھے ۔ انہوں نے مندروں اور چرچس کو مسمار کیا اور اب کانگریس کہتی ہے کہ وہ ایک بہترین حکمران تھے ؟ ۔ ساونت نے اس بات پر حیرت کا اظہار کیا کہ اچانک ہی ٹیپو سلطان حکومت کو یاد آنے لگے ہیں جبکہ آزادی کو کئی برس گذر چکے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ یہ کرناٹک میں کانگریس حکومت کی تقسیم پسندانہ پالیسی ہے ۔ انہوں نے ٹیپو سلطان کے مراٹھا حکمران شیواجی سے تقابل پر بھی اعتراض کیا ۔ واضح رہے کہ معروف کنڑ فنکار گریش کرناڈ نے کہا تھا کہ اگر ٹیپو سلطان مسلمان ہوتے تو ان کی شیواجی کی طرح عزت و تکریم ہوتی ۔کرناٹک میں کانگریس حکومت نے جاریہ سال ٹیپو سلطان کی یوم پیدائش تقاریب سرکاری طور پر منعقد کی تھیں۔

TOPPOPULARRECENT