Wednesday , August 23 2017
Home / اضلاع کی خبریں / ٹی آر ایس امیدوار کی کامیابی کا ادعا

ٹی آر ایس امیدوار کی کامیابی کا ادعا

عادل آباد میں ریاستی وزیر جوگورامنا کی پریس کانفرنس

عادل آباد۔ /9ڈسمبر، ( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز) ریاستی سطح پر منعقد ہونے والے قانون ساز کونسل انتخابات کے پیش نظر پرچہ نامزدگیوں کے ادخال کے آج آخری دن ٹی آر ایس امیدوار مسٹر پی ستیش نے جہاں ایک طرف اپنا پرچہ نامزدگی داخل کرتے ہوئے ضلع عادل آباد سے اپنی کامیابی کو یقینی قرار دیا وہیں دوسری طرف کانگریس امیدوار مسٹر مہیشور ریڈی نے اپنی ناکامی تصور کرتے ہوئے انتخابات میں حصہ لینے سے قاصر رہے۔ لمحہ آخر تک بھی کانگریس کی جانب سے کوئی امیدوار پرچہ نامزدگی داخل نہ کرسکا جبکہ ایک دن قبل تلگودیشم سے مسٹر نارائن ریڈی اور ایم پی ٹی سی یونین صدر کے طور پر بحیثیت آزاد امیدوار مسٹر رضی الدین نے اپنا پرچہ نامزدگی داخل کیا۔ بعد ازاں میڈیا پوائنٹ سے مخاطب کرتے ہوئے ریاستی وزیر جنگلات ماحولیات و بی سی ویلفیر مسٹر جوگو رامنا نے ضلع عادل آباد کو مزید تیز رفتار ترقی کی سمت گامزن کرنے کی غرض سے چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ نے ضلع کے مشرقی حصہ میں پارٹی صدر کی ذمہ داری انجام دینے والے مسٹر پی ستیش  کو امیدوار بنایا۔ موصوف کی صد فیصد ووٹوں سے کامیابی کا اظہار کرتے ہوئے ریاستی وزیر مسٹر جوگو رامنا نے کہا کہ تلنگانہ حکومت کے 16ماہ کی کارکردگی سے عوام کافی مطمئن ہیں اور تلنگانہ کے دیگر اضلاع کے بالمقابل ضلع عادل آباد کی پسماندگی کا لحاظ رکھتے ہوئے چیف منسٹر ضلع عادل آباد پر خصوصی توجہ مرکوز کئے ہوئے ہیں جس کی بناء پر کروڑوں روپیوں کے صرفہ سے جہاں ایک طرف ترقیاتی و تعمیراتی کام انجام دیئے جارہے ہیں وہیں دوسری طرف بے شمار عوامی فلاح و بہبود کے کاموں کو انجام دیتے ہوئے ہر طبقہ کے افراد کو مختلف اسکیموں سے استفادہ پہنچایا جارہا ہے۔ پرہجوم میڈیا سے مخاطب کرتے ہوئے قانون ساز کونسل امیدوار مسٹر پی ستیش، رکن اسمبلی مسٹر راتھوڑ بابو راؤ، شریمتی ریکھا نائیک، صدر نشین بلدیہ عادل آباد شریمتی آر منیشا، صدرنشین ضلع پرجا پریشد شریمتی شوبھا رانی، پداپلی رکن لوک سبھا مسٹر سمن، لوکا بھوما ریڈی کے علاوہ ریاستی وزیر مسٹر اے اندرا کرن ریڈی بھی موجود تھے جنہوں نے میڈیا سے خطاب کرتے ہوئے چیف منسٹر سے اظہار تشکر کیا اور ٹی آر ایس پارٹی امیدوار  مسٹر پی ستیش کو مبارکباد دی۔ میڈیا نمائندوں کے سوال پر موصوف نے ضلع عادل آباد میں پارٹی کو مکمل طور پر مستحکم قرار دیا۔

TOPPOPULARRECENT