Sunday , October 22 2017
Home / اضلاع کی خبریں / ٹی آر ایس حکومت سے مزدوروں کو مایوسی

ٹی آر ایس حکومت سے مزدوروں کو مایوسی

بودھن ۔26ڈسمبر ( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز) ریتو کولی سنگم کے ریاستی سکریٹری کامریڈ وی پربھاکر نے یہاں نظام دکن شوگرس فیاکٹری شکر نگر آفس کے سامنے جمع فیاکٹری حقوق ملازمین سے مخاطب کرتے ہوئے کہاکہتلنگانہ کے صنعتی و زرعی مزدوروں کو اپنا حق حاصل کرنے پھر ایک مرتبہ ریاست گیر سطح پر احتجاج منظم کرنا ہوگا ۔ مسٹر پربھاکر نے کہا کہ علحدہ ریاست تلنگانہ کے حصول کیلئے جن مزدوروں و عوام الناس نے طویل جدوجہد کی تھی انہیں ٹی آر ایس سرکار نے مایوس کردیا ۔ انہوں نے کہا کہ چیف منسٹر مسٹر کے سی آر نے علحدہ ریاست تلنگانہ تحریک کا آغآز کرنے سے قبل تلنگانہ کی عوام سے وعدہ کیا تھا کہ نوتشکیل ریاست تلنگانہ کے چیف منسٹر کا تعلق کسی دلت طبقہ سے ہوگا اور وہ صرف Watch Dogبنے رہیں گے ۔ کامریڈ پربھاکر نے کہا کہ تحریک تلنگانہ کا سہرا خود اپنے سر باندھ کر کے سی آر چیف منسٹر بن بیٹھے اور آندھرا کے دولت مندوں کے قبضے میں موجود نظام دکن شوگر فیاکٹری کو حکومت کے تحویل میں لینے سے قاصر رہے جبکہ مسٹر کے سی آر نے اپنے انتخابی وعدے میں NDSL کے تمام تین یونٹس شکر نگر ‘ مٹ پلی اور میدک کو ٹی آر ایس پارٹی برسراقتدار آتے ہی اندرون 100دن حکومت کی تحویل میں لینے کا تلنگانہ عوام سے وعدہ کیاتھا ۔ کے سی آر اقتدار سنبھالتے ہی آندھرا والوں کی ناجائز جائیدادوں کی نگرانی کرنے Watch Dogکا کام انجام دے رہے ہیں ۔ پربھاکر نے تلنگانہ سرکار پر الزام عائدک یا کہ حکومت کی باگ ڈور صرف کے سی آر کے افراد خاندان کے ہاتھوں تک ہی محدود ہوکر رہ گئی ہے ۔ پھر ایک مرتبہ انہوں نے کہا اس ضمن میں تحریک تلنگانہ کے روح رواں پروفیسر کودنڈارام سے رجوع ہونے کا فیصلہ کیا گیا ۔ اسموقع پر ضلع سکریٹری CITU مسٹر رمیش بابو ‘ گنگادھراپا ‘ ملیش اور کے گنگا دھر NDSLبچاؤ کمیٹی کے صدر راگھولو اور کمار سوامی نے بھی مخاطب کیا ۔ واضح ہوکہ این ڈی ایس ایل انتظامیہ نے 23ڈسمبر کو صبح تین بجے اچانک فیاکٹری Lay Offکردینے کے تعلق سے نوٹس جاری کردی جس میں فیاکٹری کتنے دنوں تک بند رہے گی وضاحت نہیںکی گئی ۔ ملازمین کی گذشتہ تین ماہ سے تنخواہیں این ڈی ایس ایل انتظامیہ واجب الادا ہے ۔ فیاکٹری کے سامنے پولیس کا پہرا لگا دیا گیا ۔

TOPPOPULARRECENT