Tuesday , September 19 2017
Home / شہر کی خبریں / ٹی آر ایس حکومت ‘ مسلم تحفظات کے مسئلہ پر سنجیدہ نہیں

ٹی آر ایس حکومت ‘ مسلم تحفظات کے مسئلہ پر سنجیدہ نہیں

چیف منسٹر کی وزیر اعظم سے ملاقات کی تفصیلات منظر عام پر لائی جائیں ‘ محمد علی شبیر کا بیان
حیدرآباد ۔ 25 ۔ اپریل : ( سیاست نیوز ) : قائد اپوزیشن تلنگانہ قانون ساز کونسل محمد علی شبیر نے کہا کہ دستور اور پارلیمنٹ مسلم مفادات کی محافظ ہے ۔ چیف منسٹر تلنگانہ کے سی آر بی جے پی سے میچ فکسنگ کرکے عوام بالخصوص مسلمانوں کو دھوکہ دینے کی کوشش کررہے ہیں ۔ چیف منسٹر اور وزیراعظم کی ملاقات تحفظات کوٹہ میں توسیع سے متعلق اطلاعات کے انکشافات سے اندازہ ہوگیا کہ ٹی آر ایس حکومت مسلم تحفظات پر سنجیدہ نہیں ہے ۔ صرف اقتدار پر برقرار رہنے بی جے پی سے سازباز کررہی ہے ۔ آج ایک پریس نوٹ میں انہوں نے کہا کہ چیف منسٹر و وزیراعظم کی دہلی میں 80 منٹ کی ملاقات کے بعد جو انکشافات ہوئے ہیں اس سے عوام میں شکوک پیدا ہوئے ہیں ۔ کے سی آر اور نریندر مودی ایک دوسرے سے دوستی کرنے تماشہ بازی کررہے ہیں ہائی کورٹ کی تقسیم ، کالیشورم کو قومی پراجکٹ کا درجہ دینے اسمبلی نشستوں کی تعداد میں اضافہ اور نئے سکریٹریٹ کی تعمیر کیلئے پریڈ گراونڈ ریاستی حکومت کے حوالے کرنے کا جو بھی مطالبات کئے گئے ہیں اس میں سنجیدگی کا فقدان ہے ۔ اقلیتوں کے مسائل پر ریاستی اور مرکزی دونوں حکومتیں سنجیدہ نہیں ہے ۔ دستور اور پارلیمنٹ ہی اقلیتوں کے مفادات کی محافظ ہے ۔ چیف منسٹر کے سی آر نے وزیراعظم مودی سے دیڑھ گھنٹے تک ہوئی ملاقات پر کوئی سرکاری ردعمل جاری نہیں کیا ہے ۔ صرف ’ نیوز لیک ‘ کی گئی ہے ۔ محمد علی شبیر نے کہا کہ چیف منسٹر کے سی آر بعد میں میڈیا کو بدنام کرنے کے معاملے میں ماہر ہے ۔ اہم مسائل پر چیف منسٹر کی خاموشی معنی خیز ہے ۔ پریس کانفرنس کا اہتمام کرتے ہوئے وزیراعظم سے ہوئی ملاقات پر عوام کو واقف کرانے کے بجائے صرف چیف منسٹر آفس سے پریس ریلیز جاری کرنے پر اکتفا کیا گیا ہے ۔ ریاست کے جو بھی مسائل ہے اس پر مرکز کا کیا موقف ہے عوام کو واقف کرانا چیف منسٹر کی ذمہ داری ہے ۔ وزیراعظم نے ریاست کے مسائل کو حل کرنے کا کوئی تیقن دیا ہے یا چیف منسٹر خالی ہاتھ واپس ہوئے اس سے عوام کا واقف ہونا ضروری ہے ۔ ماضی میں ایس سی طبقہ کی زمرہ بندی کے معاملے میں وزیراعظم نے تلنگانہ کے کل جماعتی وفد کو ملاقات کا وقت دیا ‘ لمحہ آخر میں یو پی انتخابات کا حوالہ دے کر وقت کو منسوخ کردیا تھا ۔ مسلم تحفظات کے علاوہ ریاست کے دوسرے مسائل پر ٹی آر ایس اور بی جے پی ڈرامہ بازی کرکے عوام کو گمراہ کرنے کی کوشش کررہے ہیں ۔ وزیراعظم کے ساتھ بات چیت کو خفیہ رکھنے کا چیف منسٹر پر الزام عائد کیا ۔ قائد اپوزیشن کونسل نے تحفظات میں توسیع کے اختیارات ریاستوں کے حوالے کرنے چیف منسٹر تلنگانہ کے مطالبہ کی مخالفت کی اور کہا کہ یہ اختیارات ریاستوں کے حوالے کرنا خطرات کا خیر مقدم کرنے کے مترادف ہوگا ۔ اگر اتفاق سے بی جے پی اقتدار میں آتی ہے تو جو مسلمانوں کو تحفظات حاصل ہورہے ہیں اس سے مسلمانوں کو محروم کرسکتی ہے ۔ دستور اور پارلیمنٹ ہی اقلیتوں کے مفادات کے محافظ ہیں مرکز بھی تلنگانہ کے مسائل کو حل کرنے میں سنجیدہ نہیں ہے ۔ چیف منسٹر سکریٹریٹ کی تعمیر کیلئے پریڈ گراونڈ کی اراضی حاصل کرنے میں جو دلچسپی دکھا رہے ہیں اتنی دلچسپی قیمتوں میں اضافہ کو کنٹرول کرنے ، کسانوں کی خود کشی ، گرم لو سے مرنے والوں پر نہیں دکھا رہے ہیں ۔

TOPPOPULARRECENT