Wednesday , October 18 2017
Home / شہر کی خبریں / ٹی آر ایس قائدین نئے شامل لیڈرس سے خوفزدہ

ٹی آر ایس قائدین نئے شامل لیڈرس سے خوفزدہ

پارٹی کے بیشتر ارکان اسمبلی کو دوبارہ ٹکٹ نہیں ملے گا
حیدرآباد ۔ 22 ۔ جون : ( سیاست نیوز ) : مختلف اپوزیشن پارٹیوں سے بڑی تعداد میں قائدین کی برسر اقتدار ٹی آر ایس پارٹی میں شمولیت کے باعث ٹی آر ایس کے وفادار قائدین اور کارکنوں کو اندیشہ ہے کہ ان حالات میں آئندہ انتخابات میں پارٹی میں نئے شامل ہوئے افراد کی وجہ سے ان کے مستقبل تاریک ہوں گے ۔ ٹی آر ایس کے کئی قائدین کا احساس ہے کہ نامزد عہدوں پر پارٹی میں نئے آئے افراد کے تقرر سے پہلے ہی انہیں دھکا لگ چکا ہے ۔ چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ نے پارٹی میں شامل ہوئے دوسری پارٹیوں کے ایم ایل ایز کا یہ کہتے ہوئے خیر مقدم کیا ہے کہ کوئی معمولی بات نہیں ہے ۔ یہ تلنگانہ اسٹیٹ میں سیاسی اتحاد ہے ۔ لیکن ٹی آر ایس قائدین کا احساس ہے کہ بات اس سے آگے بھی ہے ۔ چیف منسٹر نے ٹی آر ایس کے موجودہ ارکان اسمبلی کے مستقبل میں کامیابی کے امکانات کا سروے کرایا ہے اور رپورٹ یہ ہے کہ 63 ارکان اسمبلی میں صرف 23 کی دوبارہ کامیابی کے امکانات ہیں ۔ ایسی صورت میں قیادت مضبوط امیدواروں کو میدان میں اتار کر جیت کو یقینی بنانا چاہے گی ۔ ٹی آر ایس قائدین اندیشہ مند ہیں کہ آئندہ انتخابات میں ایم ایل اے سیٹ کے لیے نئے شامل ہوئے قائدین پارٹی کے موجودہ ایم ایل ایز سے مسابقت کریں گے ۔ جس طرح سے کانگریس چھوڑ کر ٹی آر ایس میں شامل ہوئے ڈی سرینواس کو راجیہ سبھا ممبر بن گیا ہے ۔ اس سے مستقبل میں پارٹی کے اندر ہونے والی تبدیلیوں کا اشارہ ملتا ہے ۔۔

TOPPOPULARRECENT