Thursday , October 19 2017
Home / شہر کی خبریں / ٹی آر ایس میں وزراء اورارکان اسمبلی کی کارکردگی کا سروے

ٹی آر ایس میں وزراء اورارکان اسمبلی کی کارکردگی کا سروے

چند قائدین کیخلاف بدعنوانیوں کے الزامات پر چیف منسٹر برہم ‘ حد سے آگے بڑھنے والوں کو وارننگ
حیدرآباد ۔ 15 اگست ( سیاست نیوز) ٹی آر ایس حکومت کی دو سالہ تکمیل پر چیف منسٹر تلنگانہ کے سی آر نے انٹلیجنس کے علاوہ خانگی ایجنسیوں سے وزراء اور ارکان اسمبلی کی کارکردگی پر سروے کروائی ہے ۔ پارٹی میں گروپ بندیوں کو فروغ دینے والے قائدین پر کڑی نظر رکھی گئی ہے ۔ بدعنوانیوں اور بے قاعدگیوں میں ملوث ہونے والے ارکان اسمبلی ‘ ارکان پارلیمنٹ کو ملاقات کا وقت دینے سے انکار کرتے ہوئے ان کے حلقوں میں دوسرے درجہ کے قائدین کو ابھارنے پر توجہ دے رہے ہیں ۔ باوثوق ذرائع سے پتہ چلاہیکہ 14سال تک جدوجہد کرتے ہوئے علحدہ تلنگانہ ریاست حاصل کرنے والے چیف منسٹر تلنگانہ کے سی آر کم از کم آئندہ دس سال تک ریاست میں ٹی آر ایس حکومت کا دبدبہ برقرار رکھنے کا منصوبہ تیار کرتے ہوئے کام کررہے ہیں ۔ مختلف سیاسی جماعتوں کے 26ارکان اسمبلی کو حکمران جماعت ٹی آر ایس میں شامل کرتے ہوئے اپوزیشن جماعتوں کو بے جان کرنے میں کامیاب ہونے والے سربراہ ٹی آر ایس حکومت کے دو سال کی تکمیل کے بعد حکومت اور پارٹی پر خصوصی توجہ دے رہے ہیں ۔ وزراء ‘ ارکان اسمبلی ‘ ارکان پارلیمنٹ اور دوسرے عوامی نمائندوں کی نقل و حرکت پر خصوصی نظر رکھ رہے ہیں ۔ وزراء کی کارکردگی کیلئے جو رہنمایانہ اصول تیار کئے گئے ہیں اس پر وزراء کی کارکردگی کا باریکی سے جائزہ لے رہے ہیں ‘ حدود پار کرنے والوں کو وارننگ بھی دے رہے ہیں ۔ باوثوق ذرائع سے پتہ چلاہیکہ رپورٹ کئی ارکان اسمبلی اور ارکان پارلیمنٹ کے خلاف ہے جس سے چیف منسٹر سخت ناراض ہیں ۔ ضلع ورنگل کے چند ارکان اسمبلی پر سرکاری اراضیات پر نظر رکھنے روڈی شیٹرس کی خدمات سے استفادہ کرنے حکومت کے نام کا بیجا استعمال کرنے کی بھی شکایت ہے ۔ کنٹراکٹرس سے معمول طلب کرنے والے قائدین کو ریاستی وزیر آبپاشی ہریش راؤ سے انتباہ دلاتے ہوئے انہیں اپنے رویہ میں تبدیلی کرنے کی بھی ہدایت دلائی گئی ہے ۔

TOPPOPULARRECENT