Thursday , August 24 2017
Home / شہر کی خبریں / ٹی آر ایس نے مسلمانوں کو 12 فیصد تحفظات نظر انداز کردیا

ٹی آر ایس نے مسلمانوں کو 12 فیصد تحفظات نظر انداز کردیا

مسلمانوں کو عید کے کپڑے خریدنے کا مشورہ ، حکومت کے خلاف کانگریس کی احتجاجی مہم
حیدرآباد ۔ 15 ۔ جون : ( سیاست نیوز ) : جنرل سکریٹری آل انڈیا کانگریس پارٹی و انچارج تلنگانہ کانگریس امور مسٹر ڈگ وجئے سنگھ نے کہا کہ مسلمان رمضان کی عید کے لیے کپڑے خرید سکتے ہیں ۔ وعدے کے مطابق چیف منسٹر تلنگانہ مسلمانوں کو 12 فیصد تحفظات فراہم کریں ۔ تلنگانہ میں کانگریس کو آپریشن کی ضرورت نہیں ہے ۔ سیاست کو تجارت میں تبدیل کرنے والے قائدین پارٹی چھوڑ رہے ہیں ۔ آئندہ 15 دن میں مریال گوڑہ اور راماگنڈم میں بڑے جلسے منعقد کئے جائیں گے ۔ کسانوں کو اراضیات سے محروم کرنے والی ٹی آر ایس حکومت کے خلاف احتجاجی مہم کا آغاز کیا جائے گا ۔ آج گاندھی بھون میں کانگریس رابطہ کمیٹی کے اجلاس میں شرکت کرنے کے بعد پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے یہ بات بتائی ۔ اس موقع پر صدر تلنگانہ پردیش کانگریس کمیٹی کیپٹن اتم کمار ریڈی ورکنگ پریسیڈنٹ مسٹر ملو بٹی وکرامارک قائد اپوزیشن اسمبلی مسٹر کے جانا ریڈی قائد اپوزیشن کونسل مسٹر محمد علی شبیر اے آئی سی سی ایس سی ڈپارٹمنٹ چیرمین کے راجو کے علاوہ دوسرے موجود تھے ۔ مسٹر ڈگ وجئے سنگھ نے کہا کہ نئی ریاست میں ترقیاتی و فلاحی کام انجام دیتے ہوئے سارے ملک میں تلنگانہ کو مثالی بنانے کے بجائے اپوزیشن جماعتوں کے ارکان اسمبلی ارکان پارلیمنٹ و دیگر قائدین کو ٹی آر ایس میں شامل کرتے ہوئے چیف منسٹر تلنگانہ کے سی آر جمہوریت کا خون کررہے ہیں ۔ آبپاشی پراجکٹس میں ری ڈیزائننگ کے نام پر پراجکٹس کی قیمتوں میں 5 گناہ اضافہ کرتے ہوئے بدعنوانیوں کے دروازے کھول رہے ہیں ۔ وعدے کے مطابق مسلمانوں کو 12 فیصد تحفظات فراہم کرنے میں ناکام ہونے والے چیف منسٹر تلنگانہ 2 لاکھ مسلمانوں کو رمضان کی عید کے لیے کپڑے تقسیم کرتے ہوئے مسلمانوں پر احسان جتانے کی کوشش کررہے ہیں ۔ مسلمان ماہ رمصان کے لیے کپڑے خرید سکتے ہیں اگر چیف منسٹر واقع مسلمانوں کی ترقی و بہبود کے لیے سنجیدہ ہے بیروزگار مسلمانوں کو روزگار فراہم کرنا چاہتے ہیں اور ان کی تعلیمی پسماندگی دور کرنا چاہتے ہیں تو وہ بغیر کسی تاخیر کے وعدے کے مطابق مسلمانوں کو 12 فیصد تحفظات فراہم کریں کانگریس پارٹی نے وعدے کے مطابق مسلمانوں کو 4 فیصد تحفظات فراہم کیا جس سے 10 لاکھ مسلمانوں کو فائدہ پہونچا ہے ۔

 

انہوں نے ایک کانگریس کے رکن پارلیمنٹ جی سکھیندر ریڈی رکن اسمبلی بھاسکر راؤ سابق ایم پی مسٹر جی ویویک اور سابق وزیر مسٹر جی ونود کی ٹی آر ایس میں شمولیت پر ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ سیاست کو تجارت میں تبدیل کرنے والے قائدین ہی کانگریس کو چھوڑ کر ٹی آر ایس میں شامل ہورہے ہیں ۔ عوامی خدمات انجام دینے کا عزم رکھنے والے اور کانگریس کے اصولوں پر یقین رکھنے والے کانگریس پارٹی سے وابستہ رہیں گے کانگریس قائدین کے انحراف پر اسپیکر اسمبلی لوک سبھا کے علاوہ مرکزی حکومت اور الیکشن کمیشن سے رجوع ہوتے ہوئے کانگریس پارٹی قانون انحراف میں ترمیم کرنے کی نمائندگی کرے گی ۔ کانگریس قائدین کے پارٹی چھوڑنے کے لیے ذمہ دار کون ہے اور کیا تلنگانہ میں کانگریس کا آپریشن کرنے کی ضرورت ہے کہ سوالات کا جواب دیتے ہوئے ڈگ وجئے سنگھ نے کہا کہ تلنگانہ میں کانگریس کا آپریشن کرنے کی ہرگز ضرورت نہیں ہے ۔ کانگریس کے اصولوں کا احترام کرنے والے قائدین کانگریس کے ساتھ ہے ۔ انحراف کے لیے چیف منسٹر مسٹر کے چندر شیکھر راؤ ذمہ دار ہے ۔ وہ عوامی منتخب نمائندوں کو کروڑہا روپئے کے کنٹراکٹ اور عہدوں کا لالچ دیتے ہوئے انہیں ٹی آر ایس میں شامل کررہے ہیں ۔ تلنگانہ میں کانگریس کے مستقبل کے بارے میں پوچھے گئے سوال کا جواب دیتے ہوئے کہا کہ کانگریس ہی واحد اور اہم اپوزیشن جماعت ہے ۔ تلگو دیشم اور وائی ایس آر پارٹی ختم ہوگئی ہے اور بی جے پی کا دور دور تک وجود نہیں ہے ۔ کانگریس پارٹی عوام اور کسانوں کے مسائل کے خلاف بالخصوص حکومت کی جانب سے زبردستی اراضیات حاصل کرنے کے خلاف بڑے پیمانے پر احتجاجی مہم شروع کرے گی ۔ مسٹر ڈگ وجئے سنگھ نے کہا کہ آئندہ 15 دن میں مریال گوڑہ اور راماگنڈم میں بہت بڑے جلسے عام کا اہتمام کرتے ہوئے کانگریس سے انحراف ہونے والے قائدین کی اصلیت سے عوام کو واقف کرایا جائے گا ۔ اس کے بعد کانگریس چھوڑ کر جانے والے قائدین کے اسمبلی حلقوں میں بھی احتجاجی جلسے منعقد کئے جائیں گے ۔۔

TOPPOPULARRECENT