Tuesday , September 26 2017
Home / شہر کی خبریں / ٹی آر ایس کی کامیابی سے متعلق چیف منسٹر کا سروے بوگس

ٹی آر ایس کی کامیابی سے متعلق چیف منسٹر کا سروے بوگس

برسراقتدار جماعت کو 11 نشستیں بھی حاصل نہیں ہونگی ۔ صدر پردیش کانگریس اتم کمار ریڈی
حیدرآباد ۔ 28 ۔ مئی : ( سیاست نیوز ) : صدر تلنگانہ پردیش کانگریس کمیٹی اتم کمار ریڈی نے چیف منسٹر کے سی آر کے سروے کو بوگس قرار دیتے ہوئے کہا کہ 111 اسمبلی نشستوں پر کامیابی کا خواب دیکھنے والی ٹی آر ایس کو 11 نشستوں پر بھی کامیابی حاصل نہیں ہوگی ۔ ٹی آر ایس لیجسلیچر پارٹی کے اجلاس میں چیف منسٹر کے سی آر کی جانب سے پیش کردہ سروے رپورٹ پر ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے اتم کمار ریڈی نے کہا کہ حکومت نے ایسا کونسا کارنامہ انجام دیا ہے جس سے متاثر ہو کر عوام ٹی آر ایس کو ووٹ دیں گے ۔ کسانوں کی خود کشی واقعات میں ریاست تلنگانہ سارے ملک میں سرفہرست ہے ۔ تین سال کے دوران 3000 کسانوں نے خود کشی کی ہے ۔ اپنی فیصلوں پر اقل ترین قیمت کا مطالبہ کرنے والے کسانوں کو جیل بھیج دیا گیا ۔ ہتھکڑیاں لگا کر توہین کی گئی ۔ ہر گھر کو ایک ملازمت دینے کا وعدہ کر کے ہرگاؤں کو ایک بھی ملازمت نہیں دی گئی ۔ غیر قانونی طور پر کسانوں سے زبردستی اراضیات چھین لی گئی ۔ جائز حقوق کے لیے احتجاج کرنے والے کسانوں اور غریب عوام پر ظلم و ستم کیا گیا ۔ دھرنا چوک کو منتقل نہ کرنے کا مطالبہ کرتے ہوئے احتجاج کرنے والے اپوزیشن جماعتوں کے قائدین پر لاٹھی چارج کیا گیا ۔ عثمانیہ یونیورسٹی کے صد سالہ تقریب میں تقریر کئے بغیر چیف منسٹر نے راہ فرار اختیار کی ۔ ٹی آر ایس کے چھوٹے قائدین سے چیف منسٹر تک بدعنوانیوں میں ملوث ہو کر کروڑہا روپئے کی لوٹ ماٹ کررہے ہیں ۔ فیس ری ایمبرسمنٹ بقایا جات کو ادا نہ کرتے ہوئے طلبہ کو تعلیم سے دور کیا جارہا ہے ۔ دلتوں ، قبائلوں اور بی سی طبقات پر مسلسل حملے کیے جارہے ہیں ۔ مسلمانوں اور دلتوں کو 12 فیصد تحفظات فراہم کرنے کا وعدہ کرتے ہوئے ٹال مٹول کیا جارہا ہے ۔ دلتوں میں 3 ایکڑ اراضی دینے سے انکار کیا جارہا ہے ۔ ڈبل بیڈ روم مکانات کی تعمیرات کے وعدے کو پورا نہیں کیا گیا ۔ کے جی تا پی جی تک مفت تعلیم کا وعدہ کر کے پورا نہیں کیا گیا ۔ تقسیم آندھرا پردیش کے بل میں موجود قاضی پیٹ ریلوے کوچ فیکٹری ، بیارم میں لوہے کی کمپنی ، قبائلی یونیورسٹی ، ایمس ، قومی پراجکٹ کی حصولی ، ہائی کورٹ کی تقسیم میں ناکامی ہر معاملے میں تلنگانہ حکومت ناکام ہے اور کارکردگی مایوس کن ہے ۔ پھر عوام ٹی آر ایس کو ووٹ کیوں دیں گے ۔ اگر کے سی آر کو اپنے سروے پر بھروسہ ہے تو وہ وفاداریاں تبدیل کرنے والے ارکان اسمبلی کو استعفی دلاتے ہوئے ضمنی انتخابات کرائے ۔ نتائج سے واضح ہوجائے گا کہ ریاست میں ٹی آر ایس کی کیا پوزیشن ہے ۔ جھوٹے سروے پیش کرتے ہوئے چیف منسٹر تلنگانہ عوام کو گمراہ کررہے ہیں ۔

TOPPOPULARRECENT