Monday , May 22 2017
Home / شہر کی خبریں / ٹی آر ایس کے رکن اے ایس راؤ کی درخواست پر پولیس کی رپورٹ کا انتظار

ٹی آر ایس کے رکن اے ایس راؤ کی درخواست پر پولیس کی رپورٹ کا انتظار

رمضان کے دوران مکہ مسجد میں خطاب کی درخواست کا جائزہ ، پیغمبر اسلامؐ پر خطاب کا موقع فراہم کرنے پر زور
حیدرآباد۔ 15 مئی (سیاست نیوز) تاریخی مکہ مسجد میں رمضان المبارک کے دوران تیسرا جمعہ الاٹ کرنے کے لیے ٹی آر ایس کارکن اے ایس رائو کی جانب سے داخل کی گئی درخواست پر پولیس کی جانب سے محکمہ اقلیتی بہبود کو رپورٹ کا انتظار ہے۔ سکریٹری اقلیتی بہبود نے اے ایس رائو کی درخواست کو پولیس سے رجوع کرتے ہوئے رائے طلب کی ہے تاکہ قطعی فیصلہ کیا جاسکے۔ اے ایس رائو نے گزشتہ سال بھی اسی طرح کی درخواست دائر کی تھی جس پر پولیس نے اسے حکومت سے رجوع ہونے کی ہدایت دی تھی۔ جاریہ سال مذکورہ شخص نے سکریٹری اقلیتی بہبود کو درخواست پیش کی اور کہا کہ وہ ہندوستانی شہری کی حیثیت سے اظہار خیال کا حق رکھتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ وہ پیغمبر اسلام کے بارے میں تقریر کرنا چاہتے ہیں لہٰذا انہیں تیسرا جمعہ الاٹ کیا جائے۔ اس شخص نے شکایت کی کہ جمعہ کو تقریر کرنے والی سیاسی جماعتیں مذہبی امور سے زیادہ سیاسی گفتگو کررہی ہیں۔ اپنی نوعیت کی اس عجیب درخواست پر الجھن کا شکار سکریٹری اقلیتی بہبود سید عمر جلیل کو معاملہ کو پولیس کمشنر مہیندر ریڈی سے رجوع کردیا تاکہ امن و ضبط کی صورتحال کے اعتبار سے کوئی فیصلہ کیا جاسکے۔ اسی دوران سپرنٹنڈنٹ مکہ مسجد عبدالقدیر صدیقی نے حکومت کو رپورٹ پیش کی ہے کہ اس طرح کی کسی بھی درخواست کو قبول کرنے کی صورت میں امن و ضبط کا مسئلہ درپیش ہوسکتا ہے۔ مکہ مسجد میں کسی غیر مسلم شخص کی جانب سے تقریر کی اجازت سے متعلق یہ پہلی درخواست ہے۔ سکریٹری اقلیتی بہبود نے کہا کہ پولیس کی رپورٹ ملنے کے بعد قطعی فیصلہ کیا جائے گا جس کے بعد رمضان کے چار جمعہ الاٹ کیئے جائیں گے۔ توقع ہے کہ دو جمعہ مجلس اور ایک ایک مجلس بچائو تحریک اور سنی علماء بورڈ کو الاٹ کیا جائے گا۔ سکریٹری اقلیتی بہبود نے بتایا کہ مکہ مسجد کے امام کے تقرر کے سلسلہ میں فائل کو اندرون دو یوم چیف منسٹر کی منظوری حاصل ہوجائے گی۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT