Saturday , August 19 2017
Home / Top Stories / پارلیمانی تعطل کیلئے وزیراعظم کی ہٹ دھرمی ذمہ دار:کانگریس

پارلیمانی تعطل کیلئے وزیراعظم کی ہٹ دھرمی ذمہ دار:کانگریس

نئی دہلی 11 اگسٹ ( سیاست ڈاٹ کام ) کانگریس پارٹی نے آج جوابی تنقید کرتے ہوئے وزیر اعظم نریندر مودی کی عدم سنجیدگی اور ضد و ہٹ دھرمی کو پارلیمنٹ میں جاری تعطل کیلئے ذمہ دار قرار دیا ہے اور مطالبہ کیا کہ بی جے پی اس بات کیلئے معذرت خواہی کرے کہ اس نے یو پی اے کے دور حکومت میں ترقیاتی قوانین کی مخالفت کرتے ہوئے ملک کی ترقی کے سفر پر اثر انداز ہونے کی کوشش کی ہے ۔ واضح رہے کہ وزیر اعظم مودی نے کل الزام عائد کیا تھا کہ پارلیمنٹ کا کانگریس کی جانب سے بیجا استعمال کیا جا رہا ہے کیونکہ کئی بلوں کو کانگریس کی جانب سے دونوں ایوانوں کی کارروائی میں پیدا کی جانے والی رکاوٹ کی وجہ سے منظوری نہیں مل پا رہی ہے ۔ کانگریس نے اس بیان پر شدید رد عمل کا اظہار کیا ہے ۔

پارٹی ترجمان آنند شرما نے کہا کہ در اصل پارلیمنٹ میں تعطل کیلئے بی جے پی اور وزیر اعظم ذمہ دار ہیں۔ انہوں نے الزام عائد کیا کہ اپوزیشن کے ساتھ تعطل کو ختم کرنے کیلئے کوئی بامعنی پہل نہیں کی گئی اور نہ بات چیت کی گئی ہے ۔ آنند شرما نے کہا کہ پارلیمنٹ میں جو تعطل ہے اس کیلئے وزیر اعظم کی ضد اور ہٹ دھرمی ذمہد ار ہے ۔ ہم چاہتے ہیں کہ پارلیمنٹ میں کام کاج ہو ۔ ہم نے حکومت سے اپیل کی ہے کی ہے کہ آپ اپنی سہولت کیلئے قوانین کو تبدیل نہیں کرسکتے ۔ وزیر فینانس ارون جیٹلی پر تنقید کرتے ہوئے آنند شرما نے کہا کہ ارون جیٹلی اپوزیشن کو ذمہ دار قرار دے رہے ہیں۔ یہ غیر واجبی ہے ۔ اپوزیشن نے خرد برد کے کچھ معاملات کو موضوع بحث بنانا چاہا ہے ۔ جی ایس ٹی بل کے مسئلہ پر آنند شرما نے حکومت پر الزام عائد کیا کہ وہ قوانین کا احترام نہیں کر رہی ہے ۔ اس کیلئے دستور میں ترمیم کی ضرورت ہے ۔ کچھ قوانین اور طریقہ ہیں اور ایوان میں یہ فیصلہ ہونا چاہئے کہ کس موضوع پر ایوان میں بحث ہو ۔ اس کا فیصلہ کاروباری مشاورتی کمیٹی کرتی ہے ۔

کانگریس ارکان نے کاغذات پھاڑ دیئے
لوک سبھا کی کاروائی ملتوی
نئی دہلی 11 اگسٹ ( سیاست ڈاٹ کام ) لوک سبھا میں آج بھی ہنگامہ آرائی دیکھی گئی جب احتجاجی کانگریس ارکان نے کچھ کاغذات پھاڑ دئے اور انہیں ڈپٹی اسپیکر ایم تھمبی دورائی کی سمت پھینکا ۔ کانگریس کے ارکان اپنے احتجاج کو شدت سے جاری رکھے ہوئے تھے جبکہ حکومت نے ایوان میں کچھ کام کرنے کی کوشش کی تھی ۔ کانگریس کے احتجاج کی وجہ سے ایوان کی کارروائی کو مسلسل ملتوی کرنا پڑ رہا ہے ۔ ایوان میں مختلف امور کی انجام دہی کیلئے حکومت کی کوششوں کو ناکام بناتے ہوئے کانگریس نے مسلسل احتجاج کیا اور ہنگامہ آرائی کی جس کے نتیجہ میں ایوان کو ملتوی کردینا پڑا ۔
کانگریس ارکان نے للت مودی اور ویاپم اسکام جیسے مسائل پر اپنے احتجاج میں شدت پیدا کی ۔
جب پریسائیڈنگ آفیسر کی جانب سے احتجاج کو نظر انداز کرتے ہوئے کام کاج کو آگے بڑھانے کی کوشش کی گئی تو کانگریسی ارکان نے کاغذات پھاڑ دئے اور انہیں ڈپٹی اسپیکر کی جانب پھینک دیا جنہوں نے ہنگامہ آرائی کے دوران ایوان کی کارروائی ملتوی کردی ۔ ایک موقع پر وزیر آبی وسائل اوما بھارتی کے علاوہ جگدمبیکا پال ‘ کرن کھیرا ور دوسرے بی جے پی ارکان نے بھی کانگریس ارکان کے رویہ کے خلاف ایوان کے وسط میں احتجاج کیا ۔

TOPPOPULARRECENT