Wednesday , September 20 2017
Home / سیاسیات / پارلیمنٹ میں وی کے سنگھ کا بائیکاٹ کرنے کانگریس کا فیصلہ

پارلیمنٹ میں وی کے سنگھ کا بائیکاٹ کرنے کانگریس کا فیصلہ

نئی دہلی 3 ڈسمبر ( سیاست ڈاٹ کام ) وی کے سنگھ کے کتے سے متعلق ریمارک پر تصادم کی راہ کو آگے بڑھاتے ہوئے کانگریس نے آج فیصلہ کیا ہے کہ وہ پارلیمنٹ کے دونوں ایوانوں میں مرکزی وزیر کا بائیکاٹ کریگی ۔ وی کے سنگھ نے ہریانہ میں دو دلت بچوں کو جلائے جانے کے واقعہ پر کہا تھا کہ کسی کتے کے مرجانے کیلئے حکومت کو ذمہ دار قرار نہیں دیا جاسکتا ۔ ذرائع نے کہا کہ کانگریس نے آج سینئر قائدین اور پارٹی کے ارکان پارلیمنٹ کے ایک اجلاس میں یہ فیصلہ کیا کہ وی کے سنگھ کا بائیکاٹ کیا جائیگا ۔ یہ اجلاس پارٹی نائب صدر راہول گاندھی نے طلب کیا تھا ۔ کانگریس صدر سونیا گاندھی کے غیاب میں راہول گاندھی کا طلب کردہ یہ پہلا اجلاس تھا ۔ سونیا گاندھی علاج کے سلسلہ میں امریکہ گئی ہوئی ہیں۔ پارٹی کے سینئر ترجمان آنند شرما نے کہا کہ وزیر اعظم نریندر مودی نے یہ تیقن دیا تھا کہ وہ ایسے رفقا کے خلاف کارروائی کرینگے جن کا طرز عمل مروجہ دستوری اصولوں اور روایات کے مغائر ہے ۔ شرما نے کہا کہ نریندر مودی کو چاہئے وہ صدر جمہوریہ سے وی کے سنگھ کی علیحدگی کی سفارش کریں اور ان کے ریمارکس کا نوٹ لیں۔ کانگریس نے کل بھی لوک سبھا میں ہنگامہ کرتے ہوئے وی کے سنگھ کے خلاف کارروائی کا مطالبہ کیا تھا ۔ اس نے ایوان سے واک آوٹ کیا تھا جبکہ ترنمول کانگریس اور بائیں بازو کی جماعتوں نے بھی وزیر موصوف پر تنقید کی تھی ۔ اس وقت لوک سبھا میں کانگریس کے لیڈر ملکارجن کھرگے نے شکایت کی تھی کہ حکومت نے ایوان میں عدم رواداری پر مباحث کے دوران دلتوں کے خلاف وی کے سنگھ کے ریمارکس کا کوئی تذکرہ نہیں کیا تھا ۔ انہوں نے اس وقت ایوان میں موجود نریندر مودی سے سوال کیا تھا کہ وہ وی کے سنگھ کے خلاف کیا کارروائی کرنا چاہتے ہیں۔ راجیہ سبھا میں بھی آج حکومت اور اپوزیشن کے مابین اس مسئلہ پر ٹکراؤ کی کیفیت پیدا ہوگئی جب بی ایس پی اور کانگریس نے وی کے سنگھ کی ایوان میں موجودگی کی مخالفت کی اور ان کی کابینہ سے علیحدگی کا مطالبہ کیا ۔ اب کانگریس نے وی کے سنگھ کے پارلیمنٹ میں مکمل بائیکاٹ کا فیصلہ کیا ہے ۔

TOPPOPULARRECENT