Monday , October 23 2017
Home / Top Stories / پارلیمنٹ کی کارروائی معطل کرنے کی وزیراعظم نے مذمت کی

پارلیمنٹ کی کارروائی معطل کرنے کی وزیراعظم نے مذمت کی

اپوزیشن پر سخت الزامات ‘ بہرائچ  کی پریورتن ریالی سے موبائیل فون کے ذریعہ خطاب ‘صدربی ایس پی کی جوابی تنقید
بہرائچ۔11ڈسمبر ( سیاست ڈاٹ کام) پارلیمنٹ آج بھی نوٹوں کی تنسیخ کے مسئلہ پر تعطل کا شکار رہی ۔ وزیراعظم نریندر مودی نے آج اپوزیشن پارٹیوں پر الزام عائد کیا کہ وہ عوام کی تحقیر کررہی ہیں اور سچائی کو دبانے کی کوشش کررہی ہے ۔ اس پر بی ایس پی کی سربراہ مایاوتی برہم ہوگئیں ۔ وزیراعظم نے کہا کہ پارلیمنٹ کی کارروائی چلانے کی گذشتہ 20دن سے اجازت نہیں دی جارہی ہے ۔ ہم نوٹوں کی تنسیخ کے موضوع پر مباحث کیلئے تیار ہیں لیکن ہمیں اپنا نقطہ نظرپیش کرنے کی اجازت نہیں دی جارہی ہے ۔ وہی سیاسی پارٹیاں ہم پر الزام عائد کررہی ہیں جنہیں رائے دہندوں نے مسترد کردیا ہے ۔ نریندر مودی نے کہا کہ پارلیمنٹ کے سرمائی اجلاس کے صرف مزید تین کام کرنے کے دن باقی ہے ۔ وزیراعظم نریندر مودی کی جانب سے اپوزیشن پر تنقید کرنے کے چند ہی گھنٹوں میں جوابی تنقید کرتے ہوئے بی ایس پی کی سربراہ مایاوتی نے کہاکہ یہ بھی ایک کلاسیکی معاملہ ہے ‘ جس میں چائے بنانے کا برتن ‘ کیتلی کو کالا کہہ رہاہے ۔ اپوزیشن پارٹیوں نے الزام عائد کرتے ہوئے وزیراعظم نریندر مودی کے بارے میں کہاتھا کہ وہ حکومت کی ذمہ داری اور جواب دہی سے راہ فرار اختیار کررہے ہیں ۔ اُن کا تبصرہ مکمل طور پر غلط ہیں ۔ مایاوتی نے کہا کہ یہ اُلٹا چور کوتول کو ڈانٹے جیسا ہے ۔

انہوں نے لکھنو سے ایک صحافتی بیان جاری کرتے ہوئے کہ مودی وہی لب و لہجہ اختیار کررہے ہیں جیسا کہ بی جے پی کی پریورتن یاترا میں بہرائچ کے مقام پر جلسہ عام میں تقریر کرتے ہوئے اختیار کیا تھا ۔ وزیراعظم نے موسم ناخوشگوار ہونے کی وجہ سے لکھنو سے اپنے موبائیل فون پر جلسہ سے خطاب کیا تھا ۔ مایاوتی نے کہا کہ ان کے لب و لہجہ میں کوئی فرق نہیں آیا ہے ۔مودی نے قبل ازیںکہا تھا کہ یہ اپوزیشن پارٹیاں کبھی نہیں چاہتی کہ دیانتداری کے راستہ پرچلیں لیکن ہم یقیناً کرپشن کے خلاف جنگ جیت جائیں گے ۔ وہ بی جے پی کی پریورتن یاترا سے موبائیل فون کے ذریعہ لکھنو سے خطاب کررہے تھے جب کہ انہیں منتقل کرنے والا ہندوستانی فضائیہ کا ہیلی کاپٹر بہرائچ میں ناقص حدبصارت کی وجہ سے اترنے میں ناکام رہا تھا ۔ کیونکہ یہ علاقہ نیپال کے ترائی علاقہ سے قریب ہے ۔ مودی نے کہا کہ بی جے پی یو پی کے عوام کی امنگوں کے مطابق کام کررہی ہے ۔ انہوں نے رائے دہندوں سے اپیل کی کہ عود ھ کے علاقہ سے اُن کی پارٹی کو آئندہ اسمبلی انتخابات میں ووٹ دیں ۔ مودی نے کہا کہ  اگر آپ یو پی کی ترقی چاہتے ہیں ‘غربت اور غنڈہ راج کا خاتمہ کرنا چاہتے ہیں تو بی جے پی کی تائید میں ووٹ دیجئے ۔انہوں نے عوام سے کہا کہ وہ موبائیل بینکنگ سیکھیں ‘ انہوں نے کہا کہ میں موبائیل فون کے ذریعہ آپ سے خطاب کررہا ہوں ۔ آپ اپنے موبائیل بینک میں تبدیل کرسکتے ہیں ۔ یہ کام سیکھنے کیلئے آپ کو کچھ وقت لگاے گا  ۔انہوں نے کہا کہ وہ اپنے خوشگوار دورہ بہرائچ کی یادیں اپنے ساتھ لے جارہے ہیں ۔

TOPPOPULARRECENT