Tuesday , June 27 2017
Home / شہر کی خبریں / پارکنگ فیس وصولی پر جبراً وصولی کے مقدمات

پارکنگ فیس وصولی پر جبراً وصولی کے مقدمات

پرانے شہر کے کسی بھی علاقہ میں پیڈ پارکنگ نہیں ، ڈی سی پی ٹریفک رنگاناتھ کا بیان
حیدرآباد۔7جون(سیاست نیوز) شہر کے کسی بھی مقام پر غیر مجاز پارکنگ فیس کی وصولی پر محکمہ پولیس کی جانب سے کاروائی کرتے ہوئے پارکنگ فیس وصول کرنے والوں کے خلاف جبری وصولی کے مقدمات درج کئے جائیں گے۔ دونوں شہروں میں مصروف ایام کار کے دوران بعض گروہ جو اپنے علاقوں میں سیاسی پشت پناہی یا غنڈہ گردی کے سبب اپنا اثر رکھتے ہیں وہ اپنے علاقو ںمیں معصوم نوجوانوں کو پارکنگ ٹکٹ دیتے ہوئے اس غیر قانونی کاروبار کا حصہ بنا دیتے ہیںاور جب انہیں پکڑا جاتا ہے تو یہ کہا جاتا ہے کہ معصوم بچے ہیں۔ لیکن اس کے پس پردہ کارگذاری انجام دینے والی شخصیتیں پولیس کے ہاتھ نہیں لگتیں بلکہ وہی لوگ ان معصوم بچوں کی رہائی کے لئے مسیحا بن کر پہنچتے ہیں۔ مسٹر اے وی رنگا ناتھ ڈپٹی کمشنر آف پولیس ٹریفک نے کہا کہ پرانے شہر میں کسی بھی علاقہ میں کوئی ’’پیڈ پارکنگ‘‘ سڑک پر نہیں ہے اور اس بات کی شکایات موصول ہو رہی ہیں کہ جلو خانہ ‘ نیاپل‘ ہائی کورٹ کے علاوہ بعض سڑکوں پر عوام کو پارکنگ کے نام پر ٹھگنے کی کوشش کی جارہی ہے ۔انہوں نے بتایا کہ عوام سے پارکنگ فیس وصول کرنے والوں کے خلاف سخت مقدمات بالخصوص جبری وصولی جیسے مقدمات درج کرنے کی گنجائش موجود ہے۔ محکمہ پولیس کے اعلی عہدیداروں نے بتایا کہ اس طرح کی شکایات موصول ہو رہی ہیں لیکن ان شکایات پر جن ملازمین اور عہدیداروں کی جانب سے خاموشی اختیار کی جا رہی ہے اس کا بھی نوٹ لیا جا رہا ہے۔ مجلس بلدیہ عظیم تر حیدرآباد کے عہدیداروں نے واضح کردیا کہ ان علاقوںمیں جی ایچ ایم سی کی جانب سے کوئی پارکنگ فیس وصول نہیں کی جا رہی ہے بلکہ عوام کو یہ مشورہ دیا جا رہا ہے کہ وہ خانگی طور پر فیس وصول کرنے والوں کے متعلق شکایات درج کروائیں ۔ روزنامہ سیاست نے گذشتہ دنوں غیر مجاز پارکنگ فیس کی وصولی کی شکایات وصول ہونے اور پارکنگ فیس وصول کرنے والوں کی جانب سے کی جانے والی بدتمیزی کے متعلق خبر شائع کی تھی جس پر ڈاکٹر بی جناردھن ریڈی کمشنر مجلس بلدیہ عظیم تر حیدرآباد نے اپنے تمام ماتحت عہدیداروں کو ہدایت جاری کی کہ وہ ایسے مقامات کی نشاندہی کریں اور جہاں کہیں پارکنگ فیس وصولی کی  جارہی ہے ان کے خلاف کاروائی کی جائے کیونکہ جی ایچ ایم سی اور ٹریفک پولیس کی جانب سے شہر میں بیشتر مقامات پر مفت پارکنگ فراہم کی جا رہی ہے اس کے باوجود پارکنگ فیس کا وصول کیا جانا عوام کو دھوکہ دیتے ہوئے ان سے جبری وصولی کے مترادف ہے اسی لئے انہوں نے عہدیداروںکو ہدایت دی کہ وہ اس طرح کی پارکنگ فیس وصول کرنے والوں کے خلاف محکمہ پولیس میں دھوکہ دہی اورجبری وصولی کے تحت شکایات درج کروائیں اور پارکنگ کے سلسلہ کو فوری بند کروایاجائے۔ محکمہ پولیس کے عہدیداروں نے بتایا کہ 10روپئے فی گاڑی پارکنگ فیس جن مقامات پر وصول کی جا رہی ہے وہاں اگر یومیہ 5ہزار گاڑیاں بھی پارک کی جاتی ہیں تو ایسی صورت میں 50ہزار روپئے عوامی دولت کو لوٹا جا رہا ہے اور اس لوٹ کھسوٹ کو بعض سرکاری محکمہ کے بدعنوان عہدیداروں کی بھی تائید حاصل ہونے کی اطلاعات موصول ہو رہی ہیں۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT