Saturday , October 21 2017
Home / ہندوستان / پانی نہیں تو شادی بھی نہیں اڈیشہ کے رکن پارلیمنٹ کی شکایت

پانی نہیں تو شادی بھی نہیں اڈیشہ کے رکن پارلیمنٹ کی شکایت

نئی دہلی ۔ 4 ۔ مئی (سیاست ڈاٹ کام) اڈیشہ کے 8 دیہاتوں میں پانی کی شدید قلت کے باعث والدین اپنی بیٹیوں کی شادی وہاں کے نوجوانوں کے ساتھ کرنے پر آمادہ نہیں ہیں۔ بیجو جنتا دل کے رکن رویندر جینا جو کہ بالاسور حلقہ کی نمائندگی کرتے ہیں، لوک سبھا میں یہ انکشاف کیا ہے کہ ان علاقوں میں زیر زمین پانی 1000 فٹ کی گہرائی تک بھی دستیاب نہیں ہے۔ وقفہ صفر کے دوران یہ مسئلہ اٹھاتے ہوئے انہوں نے بتایا کہ 8 پنچایت کے بزرگوں نے حالیہ ایک اجلاس میں اس مسئلہ کا جائزہ لیا کیونکہ دیگر علاقوں کی لڑکیوں کے والدین ان دیہاتوں میں اپنی دختران کی شادیاں انجام دینے سے گریز کر رہے ہیں، جہاں پر پانی کی شدید قلت پائی جاتی ہے۔ مسٹر رویندر جینا نے مرکزی حکومت سے اپیل کی کہ پانی کے موضوع کو ریاست کی فہرست سے نکال دیا جائے تاکہ ہر ایک کیلئے پانی بہ آسانی دستیاب ہوسکے۔ شری رنگ برنے (شیوسینا) نے کہاکہ ان کے حلقہ ماول کے ایک گاؤں کے عوام کواپنے کھیتوں تک پہنچنے کیلئے کئی کیلو میٹر چلنا پڑتا ہے کیونکہ تینوں جانب فوج کی اراضیات کی حصاربندی کردی گئی ہے ۔ یہ تحدیدات ، بعض دیہاتوں کی جانب سے راستہ کے استعمال پر عدالت سے رجوع ہونے کے بعد عائد کی گئی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کی جانب سے مداخلت کاروں کو بھیجنے کے با وجود اس کے شہر یوں کو واگھا سرحد کے ذریعہ ہندوستان میں داخلے کی اجازت دی جاتی ہے۔ علاوہ ازیں مذکورہ دیہاتی ہندوستانی شہری ہونے کے باو جود ان کی نقل و حرکت پر تحدیدات عائد کردی گئی ہیں۔

TOPPOPULARRECENT