Friday , October 20 2017
Home / شہر کی خبریں / پانی کی قلت سے نمٹنے 55 کروڑ روپئے جاری

پانی کی قلت سے نمٹنے 55 کروڑ روپئے جاری

حیدرآباد 16 فروری (سیاست نیوز) ریاست تلنگانہ میں پینے کے پانی کی شدید قلت سے فوری طور پر نمٹنے کے لئے حکومت نے عاجلانہ و مؤثر اقدامات کرنے کا فیصلہ کیا اور اس سلسلہ میں حکومت تلنگانہ نے 55 کروڑ روپئے کی ابتدائی رقم جاری کی ہے۔ باوثوق سرکاری ذرائع نے یہ بات بتائی اور کہاکہ پرنسپال سکریٹری محکمہ ریونیو و راحت کاری بی آر مینا نے احکامات جاری کئے اور متعلقہ عہدیداروں کو ریاست کے خشک سالی سے متاثرہ 231 منڈلوں میں پینے کے پانی کی قلت کو دور کرنے کے لئے مؤثر اقدامات کرنے کی ضروری ہدایات دیں۔ انھوں نے مشورہ دیا کہ پینے کے پانی کی جہاں کہیں بھی شدید قلت کے شکار مواضعات کے لئے دیگر مقامات سے پانی کی منتقلی (ٹینکروں وغیرہ کے ذریعہ ٹرانسپورٹ) کرکے اور اگر ضرورت پڑنے پر کرائے کی باولیوں کے ذریعہ پانی حاصل کرکے سربراہ کرنے کے اقدامات کریں۔ خشک سالی سے متاثرہ منڈلوں میں پائی جانے والی پانی کی شدید قلت کا تدارک کرنے اور قلت سے نمٹنے کے لئے 310 کروڑ روپئے درکار ہونے کا اظہار کرتے ہوئے حکومت تلنگانہ نے مرکزی حکومت کی جانب سے خشک سالی حالات کا جائزہ لینے کیلئے ریاست تلنگانہ کے مختلف مقامات کا دورہ کرنے والی مرکزی خشک سالی ٹیم کو تفصیلی رپورٹ پیش کی جاچکی ہے اور اس رپورٹ پر مرکزی حکومت کی جانب سے ابھی تک کسی بھی نوعیت کا ردعمل حاصل نہیں ہوا ہے۔ محکمہ رورل واٹر سپائی کے انجینئر اِن چیف مسٹر نریندر ریڈی نے 108.71 کروڑ روپئے جاری کرنے کی خواہش کرتے ہوئے حکومت تلنگانہ کو مکتوب روانہ کیا۔ حکومت نے اس مکتوب پر فی الفور ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے 55 کروڑ روپئے کسی تاخیر کے بغیر جاری کئے تاکہ مواضعات میں پانی کی قلت سے مؤثر انداز میں نمٹا جاسکے۔

TOPPOPULARRECENT