Monday , October 23 2017
Home / کھیل کی خبریں / پاکستانی سکیورٹی وفد کی ہندوستان آمد

پاکستانی سکیورٹی وفد کی ہندوستان آمد

لاہور‘دھرم شالہ ۔7 مارچ (سیات ڈاٹ کام ) ہندوستان میں ہونے والے ورلڈ کپ  ٹوئنٹی 20 ٹورنمنٹ کے سکیورٹی انتظامات کا جائزہ لینے کے لئے 2 رکنی پاکستانی ٹیم واہگہ کے راستے ہندوستان پہنچ گئی۔ اس سے قبل واہگہ بارڈر پر امیگریشن ذرائع نے پاکستانی سکیورٹی ٹیم کی روانگی کی تصدیق کی تھی۔ قبل ازیں ہندوستان نے ورلڈ کپ کے سیکیورٹی انتظامات کا جائزہ لینے کے لئے 2 رکنی پاکستانی سکیورٹی ٹیم کو ویزے جاری کئے تھے۔ ویزا حاصل کرنے والوں میں فیڈرل انوسٹی گیشن ایجنسی (ایف آئی اے) کے ڈائریکٹر عثمان انور اور پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) کے چیف سیکیورٹی آفیسر (ر) کرنل اعظم شامل ہیں۔ امکان ہے کہ سیکیورٹی ٹیم میں تیسرا رکن نئی دہلی میں پاکستان ہائی کمیشن سے شامل ہو گا۔ سکیورٹی ٹیم دھرم شالا میں پولیس چیف اور چیف منسٹر ہماچل پردیش سے ملاقات کرے گی اور پاک۔ ہندوستان میچ کے حوالے سے سکیورٹی انتظامات کا جائزہ لے گی۔ یاد رہے کہ رواں ماہ 16 مارچ کو شروع ہونے والے آئی سی سی ورلڈ کپ میں 19 مارچ کو دھرم شالا میں پاکستان اور ہندوستان کے خلاف میچ  ہے تاہم میچ سے قبل ہی مختلف سطح پر پاکستانی کرکٹ ٹیم کو دھمکیاں دیئے جانے کے علاوہ میچ نہ کھیلنے کا انتباہ جاری کیا گیا۔ دھمکیاں دینے والی جماعتوں میں ہندوستان کی حکومتی جماعت بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) اور سابق حکومتی جماعت کانگریس پیش پیش ہیں۔ دوسری جانب ریاست ہماچل پردیش کے چیف منسٹر  نے ورلڈ کپ میں پاکستان اور ہندوستان کے درمیان میچ میں پاکستانی ٹیم کو سکیورٹی فراہم کرنے سے معذرت کر لی تھی۔وزیر اعظم پاکستان نے اس صورتحال کا نوٹس لیتے ہوئے ورلڈ کپ میں شرکت کے لئے پاکستانی ٹیم بھیجنے سے قبل سیکیورٹی معاملات کا جائزہ لینے کے لیے وفد ہندوستان بھیجنے کا حکم دیا تھا۔ پاکستانی وزارت داخلہ کی جانب سے جاری کئے گئے بیان کے مطابق سکیورٹی ٹیم وطن واپسی پر اپنی رپورٹ پی سی بی اور وزیر داخلہ چوہدری نثار کو جمع کروائے گی جو پاکستان کرکٹ ٹیم کے ہندوستان جانے کا حتمی فیصلہ کریں گے۔ واضح رہے کہ یہ پہلا موقع نہیں کہ پاکستانی ٹیم کے دورے کے موقع پر اسے سنگین نتائج کی دھمکیاں دی گئی ہوں، 1999 میں وسیم اکرم کی زیر قیادت ہندوستان جانے والی پاکستانی ٹیم کا استقبال کچھ اس انداز سے ہوا تھا کہ دورے کے مخالف شدت پسندوں نے بی سی سی آئی کے دفتر میں توڑ پھوڑ کرتے ہوئے دہلی کے فیروز شاہ کوٹلہ گراؤنڈ کی پچ کھود دی تھی اور پاکستانی کرکٹرز کو سنگین نتائج بھگتنے کی دھمکیاں بھی دی گئی تھیں۔ اسی ‘روایت’ کو برقرار رکھتے ہوئے ایک روز قبل ہندوستانی انتہا پسند گروپ نے کہاکہ وہ ورلڈ کپ میں پاکستان اور ہندوستان کے درمیان میچ نہیں ہونے دیں گے اور اگر پاکستانی ٹیم میچ کھیلنے آئی تو وہ احتجاجاً گراؤنڈ کی پچ کو کھود دیں گے۔دریں اثناء آئی سی سی نے دھرم شالہ میں ہند۔پاک مقابلہ کی امید ظاہر کی ۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT