Tuesday , October 17 2017
Home / Top Stories / پاکستانی صوبہ پنجاب کے وزیر داخلہ خودکش حملے میں ہلاک

پاکستانی صوبہ پنجاب کے وزیر داخلہ خودکش حملے میں ہلاک

زوردار دھماکہ سے گھر کی چھت اڑگئی ، کئی افراد ملبہ میں دفن ، لشکر جھنگوی نے ذمہ داری قبول کرلی

لاہور ۔ /16 اگست (سیاست ڈاٹ کام) پاکستان کے صوبہ پنجاب کے وزیر داخلہ کو جو مخالف طالبان موقف کے لئے جانے جاتے تھے ، آج دو خودکش بمباروں نے ہلاک کردیا ۔ وزیر کے آبائی گھر کے قریب ان خودکش بمباروں نے خود کو دھماکے سے اڑالیا جس میں تقریباً 19 افراد ہلاک ہوگئے ۔ راحت کاری اور انتظامیہ کے عہدیداروں نے بتایا کہ صوبہ پنجاب کے وزیر داخلہ 71 سالہ شجاع خانزادہ اور ڈی ایس پی کے بشمول 19افراد اس حملے میں ہلاک ہوئے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ ضلع اٹک کے شادی خان گاؤں میں واقع سیاسی دفتر پر یہ حملہ کیا گیا ۔ تقریباً 17 افراد اس دھماکہ میں زخمی ہوئے ہیں جن میں تین کی حالت تشویشناک بتائی گئی ہے ۔ خودکش بمباروں نے خود کو وزیٹر کے طور پر ظاہر کرتے ہوئے آفس کے اندر رسائی حاصل کرلی اور یہاں پہونچنے کے بعد انہوں نے اپنے آپ کو دھماکے سے اڑالیا ۔ دھماکہ کے نتیجہ میں عمارت کی چھت اڑگئی اور وزیر داخلہ کے بشمول تقریباً 30 دیگر افراد ملبہ میں دب گئے ۔ انسپکٹر جنرل (آئی جی) پنجاب پولیس مشتاق سکھیرا نے بتایا کہ دو خودکش حملہ آوروں نے یہ کارروائی کی ۔

چیف منسٹر پنجاب شہباز شریف کے مشیر سعید الٰہی نے وزیر داخلہ خانزادہ کے ہلاکت کی توثیق کی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ وزیر داخلہ پنجاب خودکش حملے میں ہلاک ہوچکے ہیں اور ان کی نعش اٹک ڈسٹرکٹ ہاسپٹل ہیڈکوارٹر لے جائی جارہی ہے ۔ کمشنر راؤلپنڈی زاہد سعید نے بتایا کہ جس وقت خودکش بمبار کرنل شجاع خانزادہ کے مکان میں داخل ہونے میں کامیاب ہوئے اس وقت ان کے گھر کے باہر ڈیرہ میں تقریباً 40 تا 50 لوگ موجود تھے ۔ خانزادہ جو ایک ریٹائرڈ کرنل ہیں انہوں نے اپنے گھر پر جرگہ (مقامی عوام کے مسائل کی یکسوئی کیلئے)  منعقد کیا تھا ۔ انہوں نے بتایا کہ ڈپٹی سپرنٹنڈنٹ پولیس شوکت شاہ بھی مہلوکین میں شامل ہیں ۔ فوج نے کہا کہ مکان کی چھت گرنے کے باعث ملبہ میں پھنسے افراد کو نکالنے کیلئے ہائی ٹیک مشنری کا استعمال کیا گیا ہے ۔ممنوعہ تنظیم لشکر جھنگوی نے اس حملے کی ذمہ داری قبول کی ہے ۔ پولیس نے بتایا کہ لشکر جھنگوی سربراہ ملک اسحاق کی جولائی میں ہلاکت کے بعد سے خانزادہ کی زندگی کو خطرات لاحق تھے ۔

TOPPOPULARRECENT