Wednesday , September 20 2017
Home / Top Stories / پاکستانی عدالت نے عظمیٰ کو ہندوستان جانے کی اجازت دیدی

پاکستانی عدالت نے عظمیٰ کو ہندوستان جانے کی اجازت دیدی

نئی دہلی؍اسلام آباد۔ 24 مئی (سیاست ڈاٹ کام) اسلام آباد ہائیکورٹ نے آج ایک ہندوستانی خاتون کو ہندوستان واپس جانے کی اجازت دیتے ہوئے پولیس کو حکم دیا کہ واگھا سرحد تک خاتون کے ساتھ جاکر اسے الوداع کیا جائے۔ خاتون کا ادعا ہے کہ اس کی شادی ڈرا دھمکاکر زبردستی ایک پاکستانی شخص کے ساتھ کردی گئی تھی۔ عظمی نامی خاتون جو صرف 20 سال کی ہے، کا تعلق نئی دہلی سے ہے جس نے جاریہ ماہ کے اوائل میں پاکستان کا سفر کیا تھا۔ اس کا کہنا ہے کہ طاہر علی نامی ایک شخص نے اس کے ساتھ 3 مئی کو زبردستی شادی کرلی۔ طاہر علی اور عظمیٰ کی ملاقات ملائیشیا میں ہوئی تھی جہاں دونوں ایک دوسرے کی محبت میں گرفتار ہوگئے تھے۔عظمیٰ کا استدلال تھا کہ اسے فوری ہندوستانی جانے کی اجازت دی جائے کیونکہ اس کی پہلی شادی سے پیدا ہوئی بیٹی خون میں خرابی کے کسی عارضہ میں مبتلا ہے جبکہ طاہر علی نے بھی عدالت سے درخواست کی تھی کہ اسے اس کی بیوی سے ملاقات کی اجازت دی جائے۔ جسٹس محسن اختر کیانی کی سنگل بینچ نے دونوں درخواستوں پر سماعت کی اور اس کے بعد عظمیٰ کو ہندوستان واپس جانے کی اجازت دے دی۔

TOPPOPULARRECENT