Thursday , October 19 2017
Home / پاکستان / پاکستانی مبلغ جنید جمشید کی نعش کی شناخت

پاکستانی مبلغ جنید جمشید کی نعش کی شناخت

اسلام آباد 13 ڈسمبر (سیاست ڈاٹ کام) پاکستان کے مشہور پاپ اسٹار سے نعت خواں بننے والے جنید جمشید کی نعش کی دانتوں اور چہرہ کے ایکسرے کی مدد سے شناخت کرلی گئی جو چند دن قبل اسلام آباد واپسی کے دوران تباہ شدہ ایک طیارہ پی کے 661 میں سوار تھے۔ اسلام آباد کے ڈپٹی کمشنر نے ڈان سے کہاکہ ’’ان کے دانتوں اور چہرہ کے ایکسرے کے نمونوں سے چہرہ کی شناخت کی گئی‘‘۔ جمشید بھی ان 47 مسافرین میں شامل تھے جو چترال سے اسلام آباد واپسی کے دوران ملک کے شمال میں پہاڑی علاقہ میں تباہ شدہ پاکستان انٹرنیشنل ایرلائنس (پی آئی اے) کے طیارہ میں سوار تھے۔ 52 سالہ جنید جو تبلیغی جماعت کے سرکردہ رکن تھے جو چترال میں تبلیغی کام کے بعد شہر واپس ہورہے تھے۔ ان کی شریک حیات عائشہ جنید بھی اس حادثہ میں ہلاک ہوگئیں جس کی حکام کی جانب سے تحقیقات جاری ہیں۔ تبلیغی جماعت میں شمولیت سے قبل جنید، پاکستان کے ایک پسندیدہ پاپ اسٹار تھے جو 1980 ء کی دہائی میں اپنے ہٹ نغموں بالخصوص ’’دل دل پاکستان‘‘ کیلئے کافی مشہور ہوئے تھے۔ اس نغمہ کی وطن پرستی پر مبنی دھند اس حد تک مشہور ہوئی تھی کہ پاکستان کے غیر سرکاری قومی ترانہ کی حیثیت سے پسند کی جانے لگی تھی۔ جنید نے 2004 ء میں نغمہ سرائی ترک کردیا تھا اور اپنی زندگی اسلام کے لئے وقف کی تھی۔ وہ کسی پراڈکٹ کو مذہبی شناخت دینے کے لئے اشتہارات میں آیا کرتے تھے۔ ان کے کئی فیشن بُکے بھی ہیں۔ 2014 ء میں جنید کے خلاف ایک ایف آئی آر درج کیا گیا تھا۔ چند متنازعہ مذہبی ریمارکس پر ان کے خلاف اہانت اسلام کا الزام درج کیا گیا تھا۔ اسلام سال مارچ میں اُنھیں برسر عام جگ ہنسائی اور پیشمانی کا سامنا کرنا پڑا تھا جب چند برہم افراد نے اسلام آباد ایرپورٹ پر ان پر حملہ کردیا تھا۔

TOPPOPULARRECENT