Thursday , September 21 2017
Home / پاکستان / پاکستان افغانستان میں استحکام اور پائیدار امن کا خواہاں : سرتاج عزیز کا بیان

پاکستان افغانستان میں استحکام اور پائیدار امن کا خواہاں : سرتاج عزیز کا بیان

’ہارٹ آف ایشیا‘ کانفرنس سے پہلے سیول اور فوجی قیادت کی مشاورت

اسلام آباد ۔ 8 ڈسمبر (سیاست ڈاٹ کام) اسلام آباد میں ’ہارٹ آف ایشیا‘ کانفرنس شروع ہونے سے پہلے وزیراعظم نواز شریف کی قیادت میں منعقد ہونے والے اعلیٰ سطح کے اجلاس میں کانفرنس کے ایجنڈے پر بات چیت کی گئی ہے۔ اس اجلاس میں وزیراعظم کے علاوہ بّری فوج کے سربراہ جنرل راحیل شریف، وزیراعظم کے مشیر برائے قومی سلامتی لیفٹیننٹ جنرل ریٹائرڈ ناصر خان جنجوعہ، مشیرِ خارجہ، وزیر خزانہ اور وزیر داخلہ سمیت دیگر اعلیٰ حکام نے شرکت کی۔ میڈیا کو جاری ہونے والے بیان کے مطابق قومی سلامتی کے مشیر لیفٹیننٹ جنرل ریٹائرڈ ناصر خان جنجوعہ نے اجلاس کے شرکا کو بنکاک میں اپنے ہندوستانی ہم منصب اجیت ڈوال سے ہونے والی ملاقات کے بارے میں آگاہ کیا۔

اس ملاقات میں دونوں ممالک کے خارجہ سیکریٹری بھی موجود تھے۔ اجلاس میں’ہارٹ آف ایشیا‘ کے ایجنڈے اور افغان صدر اشرف غنی کے دورہ پاکستان کے بارے میں بات کی گئی۔ سرکاری ذرائع ابلاغ کے مطابق وزیراعظم نواز شریف اور بّری فوج کے سربراہ جنرل راحیل کے درمیان علیحدہ ملاقات ہوئی جس میں ملک کی سکیورٹی کے بارے میں تبادلہ خیال کیا گیا۔ اس سے پہلے وزیرِ اعظم کے مشیر برائے امورِ خارجہ سرتاج عزیز نے کہا ہے کہ پاکستان افغانستان میں استحکام اور پائیدار امن کا خواہاں ہے کیونکہ افغانستان میں عدم استحکام پاکستان کے مفاد میں بھی نہیں ہے۔ پاکستان کے دفتر خارجہ کے مطابق انھوں نے یہ بات منگل کو اسلام آباد میں ’ہارٹ آف ایشیا‘ کانفرنس کے آغاز سے قبل اس میں شریک ممالک کے اعلیٰ حکام کے اجلاس سے خطاب کے دوران کہی۔ ’ہارٹ آف ایشیا‘ کانفرنس استنبول عمل کا حصہ ہے، جو افغانستان میں قیامِ امن کے لیے 2011 میں شروع کیا گیا تھا۔یاد رہے کہ اس وقت وزیرخارجہ ہند سشماسوراج بھی پاکستان کے دورہ پر ہیں اور اس کانفرنس ہندوپاک کے علاوہ دیگر ممالک کو بھی کافی توقعات وابستہ ہیں۔

TOPPOPULARRECENT