Friday , August 18 2017
Home / پاکستان / پاکستان ایک ذمہ دار اور پرامن نیوکلیر طاقت

پاکستان ایک ذمہ دار اور پرامن نیوکلیر طاقت

مسئلہ کشمیر کی یکسوئی کے بغیر علاقہ میں امن ناممکن ، نواز شریف اور راحیل شریف کا بیان

اسلام آباد ۔6ستمبر ( سیاست ڈاٹ کام )وزیراعظم پاکستان نواز شریف نے کہا کہ ان کا ملک ایک پرامن نیوکلیر طاقت ہے ۔ لیکن ملک کی سالمیت اور سکیورٹی کا ہر صورت میں تحفظ کیا جائے گا ۔ انہوں نے یہ بات ایسے وقت کی جبکہ ہندوستان کے ساتھ سرحد پر کشیدگی برقرار ہے ۔ نواز شریف نے ہندوستان کے ساتھ 1965 ء جنگ کے پچاس سال کے موقع پر منعقدہ یوم دفاع پیام میں کہا کہ پاکستان ایک ذمہ دار اور پرامن نیوکلیر طاقت ہے ۔ انہوں نے کہا کہ مسلح افواج اپنے ملک کی صیانت کی ذمہ داری موثر طور پر نبھارہی ہے ۔ پاکستان کے فوجی سربراہ جنرل راحیل شریف نے کہا کہ فوج کسی بھی بیرونی طاقت کی مداخلت کا موثر جواب دینے کی صلاحیت رکھتی ہے ۔انہوں نے پاکستانی یوم دفاع کے موقع پر راؤلپنڈی ہیڈکوارٹر میں منعقدہ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ کشمیر تقسیم کا نامکمل ایجنڈہ ہے اور علاقہ میں امن کا انحصار اسی مسئلہ کی یکسوئی پر ہے ۔

انہوں نے کہا کہ مسئلہ کشمیر کو کشمیری عوام کی خواہش کے مطابق حل کئے بغیر علاقے میں امن قائم نہیں کیا جاسکتا ۔ اس دوران پاکستان کے وزیر ریلوے خواجہ سعد رفیق نے کہا کہ ہندوستان ایک اور جنگ مسلط کرنے کی کوشش کررہا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ہندوستان کو اس کے عواقب و نتائج کا سامنا کرنا پڑے گا ۔  پاکستان نے آج ہندوستان کے ساتھ 1965ء کی جنگ کی 50ویں سالگرہ پاکستانی یوم دفاع کے طور پر منائی ۔ اس سلسلہ میں ملک گیر سطح پر تقاریب اور دعائیہ اجتماع منعقد کئے گئے ۔ پاکستانی قیادت نے عہد کیا کہ وہ ملک کے وجود کو لاحق کسی بھی خطرہ کو ’’ناکام‘‘ بنادیں گے ۔ سالانہ یوم دفاع تقاریب کا آغاز 31توپوں کی سلامی سے ہوتا ہے ۔

قومی دارالحکومت میں 31 اور ریاستی دارالحکومتوں میں 21 توپوں کی سلامی دی جاتی ہے ۔ ملک گیر سطح پر ان چار ہزار فوجیوں کی یاد میں جو جنگ میں ہلاک ہوگئے تھے ایک منٹ کی خاموشی منائی جاتی ہے ۔ وزیراعظم نواز شریف نے لاہور میں جنگ کی یادگار پر پھول چڑھاکر مرحومین کو خراج عقیدت پیش کیا ۔ ریڈیو پاکستان کے بموجب ملک گیر سطح پر کئی تقاریب منعقد کی گئیں جن میں راولپنڈی میں فوج کے جنرل ہیڈ کوارٹرس پر منعقدہ تقریب بھی شامل تھی ۔مسجدوں میں خصوصی دعائیں کی گئی جو ملک کی ترقی اور خوشحالی کے علاوہ مرحوم فوجیوں کی مغفرت کیلئے تھیں۔ سخت صیانتی انتظامات ملک گیر سطح پر کئے گئے تھے کیونکہ طالبان نے دھمکی دی تھی کہ تقاریب میں خلل اندازی پیدا کی جائے گی ۔ صدر پاکستان ممنون حسین نے قوم کے نام اپنے پیغام میں کہا کہ ضرب عضب کی کامیابی کے ذریعہ پاکستانی فوج نے ثابت کردیا ہے کہ ملک کی صیانت اور وجود کو کوئی بھی خطرہ لاحق ہو تو اسے ناکام بنادیا جائے گا ۔
پاکستانی قوم اور اس کی فوج کسی بھی حد تک جاتے ہوئے اپنی سرحدوں کو اور ملک کی خودمختاری کو محفوظ رکھے گی ۔ وزیراعظم پاکستان نواز شریف نے کہا کہ مثالی اتحاد کا مظاہرہ سیاسی اور فوجی قیادت نے دہشت گردی کے خاتمہ کے سلسلہ میں کیا ہے ۔ ایک اور شاندار بات ہماری قومی تاریخ کا حصہ بن گیاہے ۔ انہوں نے کہا کہ ہمیں خواہش ہے کہ تمام پڑوسی ممالک سے خودمختار مساوات کی بنیاد پر اچھے اور پُرامن تعلقات قائم کریں ۔ وزیراطلاعات پاکستان پرویز راشد نے دعویٰ کیا کہ پاکستان 1965ء کی جنگ کو بطور یوم دفاع منانا شروع کیا ہے کیونکہ ہندوستان اس جارحانہ کارروائی سے اپنے مقاصد کے حصول میں ناکام رہا تھا ۔ انہوں نے کہا کہ آج یوم دفاع ہے ۔ ایک منٹ کیلئے ہم آج کے دن ہندوستان کے پاکستان پر حملہ کو یاد کرتے ہیں ۔ انہوں نے دعویٰ کیا کہ چونکہ ہندوستان پاکستان کو میدان جنگ میں شکست دینے سے ناکام رہا ‘ اسلئے اُس نے عسکریت پسندی کا سہارا لیا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ہندوستان جب جنگوں سے کچھ نہیں حاصل کرسکتا تو وہ دہشت گردی کے ذریعہ اسے حاصل کرنا چاہتا ہے ۔ پاکستانی فضائیہ نے ایف۔9پارک اسلام آباد میں شاندار فضائی مظاہرہ کیا ۔

TOPPOPULARRECENT