Saturday , October 21 2017
Home / ہندوستان / پاکستان زندہ باد کے نعرے بیرونی افراد نے لگائے تھے

پاکستان زندہ باد کے نعرے بیرونی افراد نے لگائے تھے

جواہر لال نہرو یونیورسٹی واقعہ پر اعلیٰ سطحی تحقیقاتی کمیٹی کی رپورٹ
نئی دہلی ۔16مارچ ( سیاست ڈاٹ کام ) اشتعال انگیز نعرے بشمول ’’ بھارت کو رگڑا دو رگڑا‘‘  اور ’’ پاکستان زندہ باد‘‘ کے نعرے جواہر لال نہرو یونیورسٹی کی تقریب میں نقاب پوش بیرونی افراد نے لگائے تھے ۔ ایک اعلیٰ سطحی ہی تحقیقاتی کمیٹی نے جسے یونیورسٹی نے مقرر کیا تھا اپنی رپورٹ پیش کردی ہے ۔ تاہم رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ 9فبروری کی تقریب کی ویڈیو جھلکیوں میں کسی کو بھی بھارت کی بربادی تک جنگ رہے گی کے نعرے لگاتے ہوئے نہیں دیکھا گیا جس کا دعویٰ عینی شاہدین کی جانب سے کیا گیا تھا ۔اپنی گواہی کے دوران انہوں نے ایسی نعرہ بازی کی توثیق کی تھی لیکن رپورٹ میں متنازعہ بھارت کے ٹکڑے ٹکڑے کردو نعرہ لگانے کا کوئی تذکرہ نہیں کیا گیا ۔ رپورٹ پانچ رکنی کمیٹی نے تیار کی ہے جس کے صدر یونیورسٹی کے پروفیسر راکیش بھٹناگر تھے ۔ انہوں نے کہا کہ یہ بدبختانہ بات ہے کہ طلبہ نے بیرونی افراد کو موجود رہنے اور اشتعال انگیز نعرے لگانے کی اجازت دی ۔ رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ تقریب کا انعقاد اجازت کی تنسیخ کے باوجود کرنا ایک ایسی کارروائی ہے جو دانستہ طور پر نافرمانی کے مترادف ہے ۔ کمیٹی نے یونیورسٹی صیانتی شعبہ کی کوتاہیوں کی نشاندہی کرتے ہوئے کہا کہ اُس نے بیرونی افراد کو نعرہ بازی سے روکنے کی کوئی کوشش نہیں کی اور نعرہ بازی کے بعد انہیں احاطہ سے آزادانہ طور پر باہر جانے کی اجازت دی ۔ کمیٹی نے کہا کہ حالانکہ جواہر لال نہرو یونیورسٹی طلبہ یونین کے صدر کنہیا کمار پر اس تقریب کے سلسلہ میں غداری کا الزام عائد کیا گیا ہے وہ تاخیر سے جلسہ گاہ میں پہنچے تھے

 

لیکن انہوں نے عہدیداروں کے اجازت کی تنسیخ کے فیصلہ پر کوئی اعتراض نہیںکیا تھا ۔ رپورٹ کے بموجب عمر خالد جس کی شناخت اہم منتظمین میں سے ایک کی حیثیت سے کی گئی ہے عہدیداروں سے کہہ چکے ہیں کہ وہ اپنا پروگرام جاری رکھیں گے اور صیانتی شعبہ جو چاہے کرسکتا ہے ۔ بیرونی افراد کے ایک گروپ کی موجودگی صیانتی عملہ نے بھی محسوس کی تھی ‘ دیگر کئی عینی شاہدین نے بھی اس کی توثیق کی ہے کہ بیرونی افراد کا ایک گروپ جس کا سر اور چہرہ ایک کپڑے یا حجاب سے زیادہ تر وقت پوشیدہ تھا  حسب ذیل نعرے لگانے میں ملوث تھا ۔ کشمیر کی آزادی تک جنگ رہے گی ‘ جنگ رہے گی ۔ بھارت کو رگڑا دو رگڑا زور سے رگڑا ‘‘ ہندوستان گوبیک اور پاکستان زندہ باد ‘‘ رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ ایک طالب علم بھی ویڈیو میں نعرہ بازی میں مصروف دیکھا گیا ۔ منتظمین نے انتظامیہ کی ہدایات کی نافرمانی کی کہ یہ تقریب منعقد نہیں کی جانا چاہیئے یہ دانستہ طور پر نافرمانی کی یہ انتہائی بدبختانہ بات ہے کہ منتظمین نے تقریب جاری رکھی ‘ حالانکہ بیرونی افراد کے ایک گروپ نے اشتعال انگیز نعرے بلند کرتے ہوئے ماحول کشیدہ کردیا تھا ۔بیرونی افراد کی اس کارستانی سے پوری جواہرلال نہرو یونیورسٹی کی برادری بدنام ہوئی ہے ۔ رپور ٹ کے دو حصے ہیں ‘ انکشافات اور سفارشات تحقیقی رپورٹ میں پورے تنازعہ کے چار پہلوؤں کو اُجاگر کیا گیا ہے ۔

TOPPOPULARRECENT