Monday , August 21 2017
Home / کھیل کی خبریں / پاکستان عالمی مقابلوں کیلئے محفوظ ملک ، ملائیشیائی ٹیم کا تاثر

پاکستان عالمی مقابلوں کیلئے محفوظ ملک ، ملائیشیائی ٹیم کا تاثر

لاہور ، 17 جنوری (سیاست ڈاٹ کام) پاکستان کا دورہ کرنے والی ملائیشیا کی کرکٹ ٹیم کی انتظامیہ نے پاکستان کو کرکٹ کے بین الاقوامی مقابلوں کیلئے محفوظ ملک قرار دیتے ہوئے کہا کہ وہ اپریل میں دوبارہ دورہ کریں گے۔ ملائیشیا کرکٹ ٹیم کے منیجر شنکر ریتنام نے نے دس روزہ دورے کے اختتام پر کہا ، ’’پاکستان، کرکٹ کے بڑے سطح کے مقابلوں کے انعقاد کیلئے موزوں ملک ہے‘‘۔ شنکر ریتنام نے کہا کہ جہاں تک سکیورٹی کا تعلق ہے تو وہ بہترین ہے اور ہم یہاں پر محظوظ ہوئے۔ ملائیشیا کی ٹیم کو دورے میں این سی اے یوتھ الیون کے ہاتھوں ایک روزہ سیریز میں 0-3 سے شکست کا سامنا کرنا پڑا جبکہ ٹی ٹوئنٹی سیریز کے پہلے میچ میں این سی الیون نے شکست دی۔ تاہم مہمان ٹیم نے دوسرا میچ جیت کر سیریز 1-1 سے برابر کردی۔ ریتنام نے پاکستان میں کئی برسوں سے بین الاقوامی کرکٹ کے عدم انعقاد پر کہا کہ ’’بین الاقوامی مسابقتی کرکٹ کیلئے چیزیں بہتر ہیں، ہمارا دورہ سکیورٹی کے کسی مسئلے کے بغیر ختم ہوگیا‘‘۔ انھوں نے کہا کہ پاکستان کی کرکٹ کی تاریخ بہت روشن ہے اور عالمی سطح پر اس کی کامیابی اس کی نشانی ہیں۔ مہمان ٹیم کے منیجر نے کہا کہ پاکستان میں گزشتہ چند  برسوں سے بین الاقوامی کرکٹ نہیں ہورہی ہے جو بدقسمتی ہے۔ پاکستان کے سابق فرسٹ کلاس کرکٹر بلال اسد اس مہمان ٹیم کے کوچ ہیں جنھوں نے ٹیم منیجر کی بات کو آگے بڑھاتے ہوئے کہا کہ پاکستان میں سکیورٹی کا کوئی مسئلہ نہیں ہے۔ بلال اسد نے کہا کہ پاکستان میں سکیورٹی کے حوالے سے ایک تصوراتی خاکہ ہے جس کو بڑھا چڑھا کر بیان کیا جاتا ہے ’’جو درست نہیں ہے‘‘۔ انھوں نے کہا کہ ملائیشین ٹیم کو بھی دورے کیلئے روانہ ہونے سے قبل اسی طرح کے ’پروپیگنڈے‘ کا سامنا کرنا پڑا تھا ،لیکن ہم نے پاکستان کے دورے کو بلاجھجک حتمی شکل دے دی جو ٹیم کے بہتر مفاد میں تھا۔ ملائیشیا کرکٹ ٹیم کے منیجر اور کوچ دونوں نے پاکستان کرکٹ بورڈ کی مہمان نوازی پر شکریہ ادا کیا۔

TOPPOPULARRECENT