Thursday , August 24 2017
Home / پاکستان / پاکستان میں ’’خطرہ کیلئے چوکسی‘‘ کے بعد حافظ سعید کے حفاظتی انتظامات میں شدت

پاکستان میں ’’خطرہ کیلئے چوکسی‘‘ کے بعد حافظ سعید کے حفاظتی انتظامات میں شدت

لاہور ۔ 27 اکٹوبر (سیاست ڈاٹ کام) پاکستانی صوبہ پنجاب کی حکومت نے ممبئی حملے کے کلیدی سازشی حافظ سعید کے حفاظتی انتظامات میں شدت پیدا کردی ہے کیونکہ مرکزی محکمہ داخلہ نے اطلاع دی ہیکہ غیرملکی محکمہ سراغ رسانی امکان ہیکہ جماعت الدعوہ کے سربراہ پر قاتلانہ حملہ کرے یا کروائے۔ حکومت پاکستانی پنجاب کے ایک عہدیدار نے ٹیلیفون پر پی ٹی آئی سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ ہم نے حافظ سعید کے حفاظتی انتظامات میں محکمہ داخلہ کی ہدایت کے بموجب شدت پیدا کردی ہے۔ انہوں نے کہا کہ مزید ملازمین پولیس ان کی قیامگاہ واقع جوہر ٹاؤن اور جماعت الدعوہ کے ہیڈکوارٹرس واقع چوبرجی لاہور پر تعینات کردیئے گئے ہیںکیونکہ ان پر قاتلانہ حملہ کا اندیشہ ہے۔ سینئر سپرنٹنڈنٹ پولیس اطہر اسمعیل نے کہا کہ پولیس نے عوام کو خبردار کردیا ہے خاص طور پر حافظ سعید کے حافظتی عملہ کو خبردار کیا گیا ہیکہ وہ خطرہ کے پیش نظر چوکسی اختیار کریں۔ محکمہ داخلہ پنجاب (پاکستان) کے جاری کردہ مراسلہ کے بموجب ایک غیرملکی سراغ رسانی ادارہ نے منصوبہ بنایا ہیکہ اعلیٰ سطحی اہداف جیسے وزیراعظم پاکستان نواز شریف اور جماعت الدعوہ کے سربراہ حافظ سعید پر قاتلانہ حملے کئے جائیں تاکہ وسیع پیمانے پر انتشار پیدا ہوجائے۔ امریکہ پہلے ہی ایک کروڑ امریکی ڈالر کا انعام حافظ سعید کے سر پر مقرر کرچکا ہے۔ اقوام متحدہ جماعت الدعوہ کو دہشت گرد تنظیم قرار دے چکی ہے۔ علاوہ ازیں انفرادی طور پر ڈسمبر 2008ء میں حافظ سعید کو دہشت گرد قرار دیا گیا ہے۔ حافظ سعید نے نومبر 2008ء کے ممبئی دہشت گرد حملہ کی سازش تیار کی تھی جس حملہ میں 166 افراد ہلاک ہوگئے تھے۔ وہ پاکستان میں آزادی طور پر گھومتے پھرتے ہیں اس کے باوجود کہ انہیں دہشت گرد قرار دیا جاچکا ہے۔ انہوں نے کئی ہندوستان مخالف تبصرے اور تقریریں کی ہیں۔ پاکستان نے کہا کہ حافظ سعید کے خلاف کوئی مقدمہ زیردوران نہیں ہے۔

TOPPOPULARRECENT