Friday , August 18 2017
Home / Top Stories / پاکستان میں داؤد ابراہیم کی 9 قیامگاہیں ‘ ہندوستان

پاکستان میں داؤد ابراہیم کی 9 قیامگاہیں ‘ ہندوستان

سفر کیلئے تین پاکستانی پاسپورٹس بھی دستیاب ۔ ایک قیامگاہ ‘ بلاول بھٹو کی قیامگاہ کے قریب
نئی دہلی 22 اگسٹ ( سیاست ڈاٹ کام ) داؤد ابراہیم کی پاکستان میں جملہ 9 قیامگاہیں ہیں جن میں ایک قیامگاہ سابق وزیراعظم بے نظیر بھٹو کے فرزند بلاول زرداری بھٹو کی قیامگاہ کے قریب واقع ہے جو دو سال قبل خریدا گیا تھا ۔ اس کے علاوہ داؤد کے پاس تین پاکستانی پاسپورٹس بھی ہیں جو وہ اکثر سفر کیلئے استعمال کرتا ہے ۔ ہندوستان نے پاکستان کو حوالے کرنے کیلئے ایک رپورٹ تیار کی ہے جس میں یہ بات بتائی گئی ہے ۔ کہا گیا ہے کہ پاکستان میں داؤد ابراہیم کی نو قیامگاہیں ہیں جہاں وہ اکثر و بیشتر قیام کرتا ہے اور وہ اپنے پتے بدلنے میں شہرت رکھتا ہے ۔

داؤد ابراہیم کی نئی قیامگاہ کراچی میں کلفٹن کے مقام پر ضیا الدین ہاسپٹل کے قریب شیرین جناح کالونی میں واقع ہے ۔ یہ عمارت ستمبر 2013 میں خریدی گئی تھی اور وہ دواخانہ کے قریب واقع ہے جہاں داؤد ابراہیم کو جب کبھی ضرورت پڑے علاج کی سہولت فراہم کی جاسکتی ہے ۔ کہا گیا ہے کہ یہ مقام بے نظیر بھٹو کے فرزند بلاول زرداری بھٹو کی قیامگاہ سے قریب واقع ہے ۔ اس مکان کے علاوہ داود ابراہیم کے دوسرے مکانات بھی ہیں جہاں وہ اکثر قیام کرتا ہے ۔ معین پیلس قریب عبداللہ شاہ غازی درگاہ کلفٹن کراچی ‘ 6A خیبر تنظیم فیس v ‘ ڈیفنس ہاوزنگ ایریا کراچی ‘ آئی ایس آئی کا محفوظ مکان اسلام آباد ۔ مری روڈ پر بھوبھن ہل پر واقع ہے ۔ اس کے علاوہ پی 6/2 اسٹریٹ نمبر 22 مکان نمبر 29 مارگلہ روڈ اسلام آباد ‘ 17 سی پی بازار سوسائیٹی بلاک 7 – 8 عامر خان روڈ کراچی ‘ 30 اسٹریٹ فیس 6 ایکسٹنشن ڈی ایچ اے کراچی ‘ پردیسی ہاوز کے قریب موہران اسکوائر پر آٹھواں فلور ‘ تاور علاقہ کلفٹن کراچی اور ایک وسیع و عریض بنگلہ نوری آباد کراچی کے پہاڑی علاقہ میں بھی واقع ہے ۔ رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ داؤد اکثر و بیشتر مقامات بدلتا رہتا ہے ۔ اس نے پاکستان میں بہت زیادہ جائیداد حاصل کرلی ہے اور پاکستانی ایجنسیوں کی حفاظت میں سفر کرتا ہے ۔ کہا گیا ہے کہ داود کے پاس تین پاکستانی پاسپورٹس ہیں ۔ ایک راولپنڈی سے اور دو کراچی سے جاری کردہ ہیں۔ داؤد کی شریک حیات مہہ جبین بھی پاکستانی پاسپورٹ رکھتی ہے ۔ اس کے فرزند معین اور دختر ماہ رخ کے پاس بھی پاکستانی پاسپورٹس ہیں ۔ ماہ رخ پاکستان کے سابق کرکٹ جاوید میانداد کے فرزند جنید کی شریک حیات ہے ۔

 

پاکستان میں داؤد ابراہیم کی موجودگی کا ناقابل تردید ثبوت: بی جے پی
ثبوت کی نہیں جارحانہ کارروائی کی ضرورت ۔ کانگریس اور شیوسینا کا ردعمل
نئی دہلی 22 اگسٹ (سیاست ڈاٹ کام) بی جے پی نے آج اس رپورٹ کو ناقابل تردید قرار دیا ہے کہ انڈر ورلڈ ڈاؤن داؤد ابراہیم پاکستان میں روپوش ہونے کا انٹلی جنس کے پاس ٹھوس ثبوت موجود ہے اور کہاکہ اسے فی الفور ہندوستان کے حوالے کردیا جائے۔ تاہم کانگریس نے اس رپورٹ کو مسترد کردیا اور کہاکہ پیشرو حکومت نے اس طرح کے ثبوتوں پر پاکستان کے ساتھ تبادلہ خیال کیا تھا اور نئی رپورٹ زمینی حقائق کو تبدیل نہیں کرسکتی۔ مرکزی وزیر اور سینئر بی جے پی لیڈر مسٹر ایم وینکیا نائیڈو نے آج میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کہاکہ پاکستان ہمیشہ داؤد ابراہیم کی موجودگی کی تردید کرتا رہا ہے لیکن ہم نے دنیا کے سامنے ثبوت پیش کردیا ہے کہ مطلوبہ مجرم پاکستان میں روپوش ہے لہذا پاکستان کو چاہئے کہ مسئلہ کی نزاکت کو سمجھتے ہوئے اسے ہندوستان کے حوالے کردے۔

سکریٹری بی جے پی مسٹر سدھارتھ ناتھ سنگھ نے کہاکہ ہندوستان کو مطلوبہ مجرموں کا سرعنہ پاکستان میں قیام پذیر ہونے کا ناقابل تردید ثبوت موجود ہے جسے مسترد نہیں کیا جاسکتا۔ تاہم کانگریس اور بی جے پی کی حلیف جماعت شیوسینا نے بھی اس رپورٹ کو خاطر خواہ اہمیت نہیں دی۔ جس میں داؤد کی تصویر کے ساتھ دیگر تفصیلات پیش کی گئی ہے اور بتایا کہ اس میں کوئی نئی بات نہیں ہے۔ کانگریس لیڈر اور سابق وزیر خارجہ سلمان خورشید نے کہاکہ ہم نے کئی مرتبہ ثبوت پاکستان کے حوالے کئے لیکن کوئی نتیجہ برآمد نہیں ہوا۔ میرے خیال میں ہندوستان کو اب اس مسئلہ پر اپنا ذہن تبدیل کردینا چاہئے۔ ایک اور کانگریس لیڈر اور سابق مرکزی وزیر منیش تیواری نے کہاکہ ہندوستانی انٹلی جنس کی فائیلس داؤد ابراہیم کی تصاویر سے بھری ہوئی ہیں اور ممبئی بم دھماکوں کا ملزم پاکستان فرار ہوجانے کے بعد ہر ایک حکومت نے پڑوسی ملک کو اس کی موجودگی کا ثبوت پیش کیا ہے لیکن صرف تصاویر سے زمینی حقائق تبدیل نہیں ہوسکتے۔ انھوں نے کہاکہ اگر نریندر مودی حکومت میں جرأت ہو تو پاکستان میں داؤد ابراہیم کے ٹھکانہ پر حملہ کردے جس طرح امریکہ نے اسامہ بن لادن کے معاملہ میں کیا تھا۔ شیوسینا لیڈر سنجے راوت نے بھی اس طرح کے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے داؤد ابراہیم کی نئی تصاویر کوئی خاص بات نہیں ہے کیوں کہ پاکستان نے قبل ازیں پیش کردہ ثبوتوں کی تردید کی تھی۔ انھوں نے حیرت کا اظہار کیاکہ این ڈی اے حکومت پاکستان کے ساتھ مذاکرات کے لئے ماضی کی غلطیوں کا اعادہ کررہی ہے اور کہاکہ اب داؤد کو سزا دینے کے سوا کوئی چارہ کار نہیں ہے۔

TOPPOPULARRECENT