Tuesday , October 17 2017
Home / شہر کی خبریں / پاکستان میں موجود گیتا ، جے کرشنیا اور گوپااماں کی دختر

پاکستان میں موجود گیتا ، جے کرشنیا اور گوپااماں کی دختر

پیدائشی گونگی ، اصلی نام رانی ، سال 2006 میں گنٹور سے لاپتہ ، کھمم ضلع نرسا پورم کے جوڑے کا دعویٰ
حیدرآباد ۔ 10 ۔ اگست : ( سیاست نیوز) : تلنگانہ کے ضلع کھمم سے تعلق رکھنے والے ایک جوڑے نے دعویٰ کیا ہے کہ کراچی پاکستان میں موجود گیتا ان کی دختر ہے ۔ ڈی این اے ٹسٹ کراتے ہوئے گیتا کو انکے حوالے کرنے کا مرکزی حکومت سے مطالبہ کیا ہے ۔ ضلع کھمم نرسا پورم موضع سے تعلق رکھنے والے جوڑے ، جے کرشنیا اور گوپا اماں کا کہنا ہے کہ بچپن میں کھوکر کراچی میں برآمد ہونے والی گیتا ان کی دختر ہے جس کا اصلی نام رانی ہے ۔ پیدائشی طور پر گونگی رہنے والی ان کی دختر سال 2006 کے دوران گنٹور میں منعقدہ عیسائی مذہبی تقریب میں شرکت کے دوران لاپتہ ہوگئی تھی ۔ سلمان خان کی فلم بجرنگی بھائی جان کی ریلیز کے بعد پاکستان کے کراچی میں موجود گیتا اچانک سرخیوں میں آگئی تو ٹیلی ویژن اور اخبارات میں مسلسل دیکھنے کے بعد ضلع کھمم کے جوڑے نے گیتا کو اپنی دختر ہونے کا دعویٰ کیا ۔ اس جوڑے کا کہنا ہے کہ انہیں چار لڑکیاں ہیں ۔ پہلی لڑکی راجیہ اماں ذہنی طور پر معذور ہے ۔ دوسری لڑکی جیوتی کی شادی کردی گئی ہے ۔ تیسری لڑکی پدما تعلیم حاصل کررہی ہے اور چوتھی لڑکی رانی ( گیتا ) کو بات چیت اور بڑی لڑکی کی ذہنی حالت کو ٹھیک کرنے کی منت مانگنے کے لیے 27 جنوری 2006 کو گنٹور میں منعقدہ عیسائی تقریب میں شرکت کرنے کے لیے پہونچے تھے ۔ تقریب میں شرکت کے بعد 28 جنوری کو واپس ہونے کے دوران چھوٹی لڑکی رانی ( گیتا ) عوام میں گم ہوگئی ۔ جو کہ پیدائشی طور پر گونگی ہونے کی وجہ سے وہ اپنے گھر کا پتہ بتانے سے قاصر رہی ۔ کئی سال تک ضلع گنٹور کے مختلف گرجا گھروں کے فادرس کے ذریعہ رانی ( گیتا ) کی کافی تلاش کی گئی ۔ تاہم اس کا کہیں پتہ نہیں چلا تو مایوس ہو کر خاموش ہوگئے تھے ۔ تاہم چند دن سے ٹیلی ویژن اور اخبارات میں وہ اپنی دختر کو دیکھ رہے ہیں اس جوڑے نے ایک پریس کانفرنس کے ذریعہ رانی ( گیتا ) کی 10 سال پرانی تصویر جاری کی ۔ انہوں نے ریاستی اور مرکزی حکومت سے اپیل کی کہ انہیں اپنی دختر کے پاس جانے کا انتظام اور مکمل تحقیقات کرائی جائے اور ضرورت پڑنے پر انکا ڈی این اے کراتے ہوئے بھی ان کی دختر کو حوالے کرنے کا مطالبہ کیا ۔ واضح رہے کہ جھارکھنڈ اور اترپردیش کے کئی جوڑوں نے بھی گیتا ان کی دختر ہونے کا دعویٰ کیا ہے ۔ تاہم کراچی میں رہنے والی گیتا نے کہا ہے کہ جو بھی جوڑے ان کی دختر ہونے کا دعویٰ کررہے ہیں وہ شٹ شلوار زیب تن کررہے جب کہ ان کے خاندان میں خواتین ساڑی بلوز میں ملبوس رہا کرتی تھیں ۔ اس جوڑے کے دعویٰ پر گیتا کا کیا ردعمل سامنے آئے گا دیکھنا ہے ۔۔

TOPPOPULARRECENT