Monday , August 21 2017
Home / Top Stories / پاکستان نے کشمیر کو صرف ہتھیار اور دہشت گرد بھیجے

پاکستان نے کشمیر کو صرف ہتھیار اور دہشت گرد بھیجے

کشمیر کو ضم کرلینے پاکستان کا خواب کبھی پورا نہ ہوگا، خطہ کو غیرمستحکم کردینے کا ناپاک منصوبہ عیاں ہوگیا، نواز شریف کے اشتعال انگیز بیان پر سشما سوراج کا جواب
نئی دہلی ، 23 جولائی (سیاست ڈاٹ کام) وزیراعظم پاکستان نواز شریف پر کشمیر کے بارے میں اُن کے بیانات پر سخت لفظی حملے میں وزیر امور خارجہ سشما سوراج نے آج اُن سے کہا کہ یہ ریاست اُن کے ملک کا حصہ بن جانے سے متعلق اُن کا خواب رہتی دنیا تک شرمندۂ تعبیر نہیں ہوگا۔ نواز شریف کے اس بیان پر کہ ’’کشمیر کبھی نہ کبھی پاکستان کا حصہ بن جائے گا‘‘ شدید خفگی کے اظہار میں سشما نے ایک بیان میں کہا کہ یہ ’’خیالی مگر خطرناک خواب‘‘ ہی پاکستان کی دہشت گردی کو بے شرم سرپرستی اور حوصلہ افزائی کی وجہ ہے۔ ’’سارا جموں و کشمیر ہندوستان کا ہے۔ آپ زمین پر اس جنت نشان کو دہشت کی جہنم بنانے میں کبھی کامیاب نہیں ہوپاؤگے۔‘‘ ہندوستان کا ردعمل حکومت پاکستان اور نواز شریف کی جانب سے لگ بھگ روزانہ اشتعال انگیز بیانات کے درمیان سامنے آیا ہے۔ یہ نشاندہی کرتے ہوئے گزشتہ چند یوم میں پاکستان کی قیادت بشمول اس کے وزیراعظم نے ممنوعہ دہشت گرد تنظیم حزب المجاہدین کے مطلوب کمانڈر برہان وانی کی تعریف کرتے ہوئے اُسے ’’شہید‘‘ قرار دیا، سشما نے تعجب کیا کہ کیا وہ نہیں جانتے کہ اُس کے سر پر 10 لاکھ روپئے کا انعام تھا کیونکہ وہ مجالس مقامی کے منتخب نمائندوں اور سکیورٹی پرسونل کے قتل کے بشمول ہولناک جرائم کا مرتکب ہوا تھا۔ ’’

ہمارے سرحد پار سے تشدد بھڑکانے اور دہشت گردوں کی ستائش کرنے کی ان قابل مذمت کوششوں سے کہیں بدترین عمل یہ حقیقت ہے کہ یہ کوششیں اقوام متحدہ کے نامزد دہشت گرد حافظ سعید اور بین الاقوامی طور پر ممنوعہ تنظیموں سے تعلق رکھنے والے دیگر بڑے دہشت گردوں کی سرگرم شراکت میں خود پاکستان کی سرکاری مشینری کی طرف سے ہوئی ہیں۔‘‘ نواز شریف پر اس تبصرے کیلئے کہ اُن کی نیک تمنائیں کشمیر کے عوام کے ساتھ ہیں، سشما نے شدید تنقید میں کہا، ’’افسوس کہ یہ پاکستان کی نیک تمنائیں یا اخلاقی یا سفارتی تائید و حمایت نہیں بلکہ اس کے ہتھیار اور دہشت گردی ہیں جو اس نے جموں و کشمیر کو برآمد کئے ہیں۔ ’’پاکستان کے گندے فنڈز، خطرناک دہشت گرد اور دوغلے طرز کے سرکاری ادارے خطہ کو غیرمستحکم کردینے کوشاں ہیں۔ اور کوئی نہیں بلکہ خود وزیراعظم پاکستان کے بیان نے اس مایوسانہ منصوبے کو فاش کردیا ہے۔ مگر میں اعادہ کردینا چاہتی ہوں کہ پاکستان کا یہ خوب کبھی پورا نہیں ہوگا۔‘‘ پاکستان کو خود اپنے لاکھوں عوام کے خلاف لڑاکا طیارے اور توپ خانہ کے استعمال کا موردِ الزام ٹھہراتے ہوئے وزیر موصوفہ نے کہا کہ اسے انڈیا کے بہادر، پیشہ ور اور پابند ڈسپلن پولیس اور دیگر سکیورٹی فورسیس کے خلاف انگشت نمائی کا کچھ بھی حق نہیں ہے۔ ہندوستان کا پاکستان پر الزام ہے کہ وہ نہ صرف دہشت گردوں کو وادی میں گھسا رہا ہے بلکہ کشمیر میں حالیہ گڑبڑ کو بھڑکانے میں دہشت گرد تنظیموں کی مدد بھی کررہا ہے۔ 8 جولائی کو 22 سالہ برہان کی ہلاکت کے بعد سے کشمیر میں تشدد میں کم از کم 45 افراد کی جان گئی اور زائد از 3,400 دیگر زخمی ہوچکے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT