Tuesday , October 17 2017
Home / کھیل کی خبریں / پاکستان کوآئی سی سی کے انتباہ کی خبریں بے بنیاد:پی سی بی

پاکستان کوآئی سی سی کے انتباہ کی خبریں بے بنیاد:پی سی بی

دبئی ۔16 فروری (سیاست ڈاٹ کام ) پاکستان کرکٹ بورڈ(پی سی بی) کی ایگزیکٹو کمیٹی کے چیئرمین نجم سیٹھی نے آئی سی سی کی جانب سے پاکستان کو  ٹوئنٹی20 ورلڈکپ میں شرکت کے حوالے سے انتباہ  دیے جانے کی خبروں کی تردید کی ہے۔ایک برطانوی ویب سائٹ نے دعویٰ کیا کہ آئی سی سی نے اپنے بیان میں پاکستان کے ہندوستان میں ہونے والے ورلڈ کپ میں سیکیورٹی خدشات کو بے بنیاد قرار دیتے ہوئے ہندوستانی بورڈ کے سکیورٹی انتظامات پر اطمینان کا اظہار کیا تھا۔ خبر میں دعویٰ کیا گیا ہے کہ آئی سی سی نے انتباہ دیا کہ اگر پاکستان نے ہندوستان میں نہ کھیلنے کی کوئی ٹھوس وجہ پیش نہ کی تو اسے سخت قانونی کارروائی کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے۔ یاد رہے کہ گزشتہ دنوں پی سی بی چیئرمین شہریار خان نے اپنے بیان میں کہا تھا کہ اگر حکومت پاکستان سکیورٹی خدشات کے سبب ٹیم کو ہندوستان میں کھیلنے کی اجازت  نہیں دیتی ہے تو ہم آئی سی سی سے پاکستان کے ورلڈ کپ مقابلوں کو تیسرے مقام پر کروانے کا مطالبہ کر سکتے ہیں۔ تاہم پاکستان کرکٹ بورڈ کی ایگزیکٹو کمیٹی کیچیئرمین نجم سیٹھی نے اس خبر کو یکسر مسترد کرتے ہوئے کہا ہے کہ آئی سی سی نے پاکستان کو کسی بھی قسم کا انتباہ  نہیں دیا ہے۔ نجم سیٹھی نے کہا کہ ورلڈ کپ میں پاکستان ٹیم کی شرکت کے حوالے سے آئی سی سی نے ہم سے پوچھا ہے جس کے جواب میں واضح کیا جا چکا ہے کہ عالمی ایونٹ میں پاکستان کی شرکت کے حوالے سے حکومت کو مکتوب لکھا ہوا اور بورڈ اس کے جواب کا منتظر ہے۔ تاہم انہوں نے کہا کہ اس کے علاوہ کوئی بات نہیں ہوئی، نہ آئی سی سی نے ہم سے زیادہ پوچھا ہے اور نہ ہم نے کوئی رابطہ کیا۔ یاد رہے کہ پاکستان کرکٹ بورڈ کے چیئرمین شہریار خان دونوں ملکوں کے درمیان دوطرفہ سیریز کے حوالے سے معاملات طے کرنے کیلئے ہندوستان گئے تھے جہاں انہوں نے ہندوستانی کرکٹ بورڈ کے سربراہ ششانک منوہر سے ملاقات کرنی تھی۔ تاہم  شیو سینا نے پاکستان اور ہندوستان کے درمیان کرکٹ روابط کی بحالی کے منصوبوں کو سبوتاج کرتے ہوئے ہندوستان کرکٹ بورڈ (بی سی سی آئی) کے دفتر پر حملہ کیا تھا۔ شیو سینا کے کارکنوں نے ممبئی کے وانکھڈے اسٹیڈیم میں واقع بورڈ آف کنٹرول فار کرکٹ اِن انڈیا (بی سی سی آئی) کے ہیڈکوارٹر پر دھاوا بول دیا، جس کی وجہ سے پاکستان کرکٹ بورڈ کے چیئرمین شہریارخان سے وطن واپسی کا مطالبہ کیا جارہا تھا۔

TOPPOPULARRECENT