Friday , July 28 2017
Home / کھیل کی خبریں / پاکستان کو آج جنوبی افریقہ کے خلاف کرویا مرو صورتحال

پاکستان کو آج جنوبی افریقہ کے خلاف کرویا مرو صورتحال

ہاشم آملہ اور محمد عامر میں دلچسپ مقابلہ متوقع

برمنگھم ۔6 جون (سیاست ڈاٹ کام )ہندوستان کے خلاف شرمناک شکست کے بعد پاکستانی کرکٹ ٹیم کو آئی سی سی چیمپیئنرٹرافی کے سیمی فائنل میں رسائی کے لئے کل یہاں کھیلے جانے والے مقابلے میں ونڈے کی نمبر ایک ٹیم جنوبی افریقہ کو شکست دینا ناگزیر ہوچکا ہے کیونکہ ایک اور ناکامی مطلب پاکستان ٹورنمنٹ سے باہر ہوجائے گا۔جنوبی افریقہ کے خلاف اس اہم مقابلے سے قبل پاکستان کو اپنے فاسٹ بولروں کی جوڑی وہاب ریاض اور محمد عامر کے زخمی ہونے کا مسئلہ درپیش ہے جہاں ریاض ٹورنمنٹ سے باہر ہوچکے ہیں جبکہ محمد عامر کی مقابلے سے قبل فٹ ہوجانے کی امید ہے۔پاکستانی بیٹنگ شعبہ پھر ایک مرتبہ دباؤ میں رہے گا کیونکہ حالیہ برسوں میں وہ بہتر مظاہرہ نہیں کرپارہا ہے اور ہندوستان کے خلاف بھی ٹورنمٹ کے افتتاحی مقابلے میں جہاں حریف ٹیم نے ہمالیائی اسکور بنایا تھا وہیں پاکستانی بیٹسمینس تاش کے پتوں کی طرح بکھیر گئے اورساری ٹیم 164 رنز پر ڈھیر ہوگئی ۔دوسری جانب جنوبی افریقہ نے اپنے افتتاحی مقابلے میں سری لنکا کے خلاف96  رنز کی کامیابی حاصل کی ہے اور وہ کل پاکستان کو شکست دیکر سیمی فائنل میں اپنی رسائی کو یقینی بنانے کے لئے کوشاں ہوگی۔جنوبی افریقہ کا بیٹنگ اور بولنگ شعبہ دنیا کے نمبر ایک کھلاڑی کی خدمات سے طاقتور ہے جیسا کہ نوجوان بولر ربادا اور سینئر بولر مورنی مورکل اس کی فاسٹ بولنگ کے 2 اہم ستون ہے تو ونڈے درجہ بندی میں حالیہ دنوں تک نمبر ایک مقام پر فائز رہنے والے عمران طاہر ٹیم کی فتوحات میں اہم رول ادا کررہے ہیں جیسا کہ گذشتہ مقابلے بھی جب سری لنکائی ٹیم نے نشانہ کا تعاقب کا شاندار آغاز کیا تھا تو عمران طاہر نے مین آف دی میچ مظاہرہ کرتے ہوئے ٹیم کو نہ صرف مقابلے میں واپس لایا تھا بلکہ کامیابی میں بھی اہم رول ادا کیا۔

افریقہ کو بیٹنگ میں عالمی نمبر ایک کپتان اے بی ڈی ویلیرس کے علاوہ ان فارم ہاشم آملہ اور وکٹ کیپر بیٹسمین کوئن ٹن ڈی کاک کی خدمات بھی حاصل ہیں ان کے علاوہ فاف ڈوپلیسی اور جے پی ڈومینی کے خلاف بھی پاکستانی بولروں کو چیلنچ درپیش رہے گا۔ آملہ نے گذشتہ مقابلے میں اپنے کرئیر کی 25 ویں ونڈے سنچری اسکور کرتے ہوئے اپنے شاندار فام کا اشارہ دیا ہے جبکہ اس قبل وہ آئی پی ایل 10 میں کنگس الیون پنجاب کی نمائندگی کرتے ہوئے 2 سنچریاں اسکور کی ہیں۔ ان کے ہمراہ ڈی کاک بھی ایسے بیٹسمین ہیں جو اپنے دن کسی بھی بولنگ اٹیک کے خلاف تیزی سے رنز بناتے ہوئے اپنی ٹیم کو کامیابی کے لئے ایک ٹھوس شروعات فراہم کرسکتے ہیں۔علاوہ ازیں ٹیم کے آل راؤنڈر کریس موریز بھی مقابلے کا تنہا نقشہ بدل سکتے ہیں جس کا ثبوت انہوں نے آئی پی ایل کے حالیہ ٹورنمنٹ میں دیا ہے۔دوسری جانب پاکستانی ٹیم میں چند ایک تبدیلی یقینی ہیں جیسا کہ زخمی ریاض کے مقام پر ایک اور بائیں ہاتھ کے فاسٹ بولر جنید خان کی شمولیت یقینی ہے جبکہ بنگلہ دیش کے خلاف وارم اپ مقابلے میں ٹیم کو کامیابی سے ہمکنار کرنے والے آل راؤنڈر فہیم اشرف کو بھی موقع دیا جاسکتاہے۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT