Monday , August 21 2017
Home / Top Stories / پاکستان کے صوبہ بلوچستان میں 14 سالہ لڑکے کا خود کش حملہ

پاکستان کے صوبہ بلوچستان میں 14 سالہ لڑکے کا خود کش حملہ

درگاہ میں 45 عقیدت مند ہلاک ، 100 سے زائد زخمی ، آئی ایس نے ذمہ داری قبول کی

کراچی ۔ 12 ۔ نومبر : ( سیاست ڈاٹ کام ) : پاکستان کے بدامنی کا شکار صوبہ بلوچستان میں آج ایک درگاہ کو خود کشی بم حملہ کا نشانہ بنایا گیا جس کے نتیجہ میں 45 افراد بشمول خواتین اور بچے ہلاک اور 100 سے زائد زخمی ہوگئے ۔ درگاہ حضرت شاہ نورانیؒ میں صوفی رقص کا پروگرام منعقد کیا جارہا تھا جسے ’’ دھمال ‘‘ کا نام دیا گیا تھا ۔ ایک 14 سالہ لڑکے نے خود کو بم دھماکہ سے اڑالیا اور پروگرام میں شریک عقیدت مند زد میں آگئے ۔ بلوچستان کے وزیر داخلہ میر سرفراز احمد بگتی نے بتایا کہ 45 افراد ہلاک اور کئی درجن زخمی ہوئے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ اس حملہ کا نشانہ وہ مقام تھا جہاں دھمال پروگرام منعقد کیا جارہا تھا ۔ یہ درگاہ کراچی سے تقریبا 250 کلومیٹر دور واقع ہے ۔ دھماکہ کے وقت درگاہ میں 500 تا 600 عقیدت مند موجود تھے ۔ ذرائع نے بتایا کہ 14سالہ لڑکے نے یہ خود کش حملہ کیا اور آئی ایس نے حملہ کی ذمہ داری قبول کی ہے ۔ راحت کاری ٹیموں نے یہاں پہنچ کر مہلوکین اور زخمیوں کو ہاسپٹل منتقل کرنا شروع کیا ۔ لیکن انہیں اس مقام تک پہنچنے کے لیے کافی مشکلات پیش آئیں کیوں کہ یہ درگاہ انتہائی دور دراز علاقے میں واقع ہے ۔ مہلوکین کی تعداد میں اضافہ ہوسکتا ہے کیوں کہ کئی زخمیوں کی حالت تشویشناک ہے ۔ مقامی تحصیلدار جاوید اقبال نے کہا کہ درگاہ کے قریب خاطر خواہ سیکوریٹی انتظامات نہیں تھے ۔ انہوں نے کہا کہ کراچی اور دیگر مقامات سے ہر روز ہزاروں عقیدت مند آتے ہیں لیکن کسی طرح کی میڈیکل ایمرجنسی سہولیات یا ایمبولنس فراہم نہیں ہے ۔ صدر ممنون حسین اور وزیر اعظم نواز شریف نے دھماکہ کی سخت مذمت کی اور متعلقہ حکام کو ضروری ہدایات دی۔۔

TOPPOPULARRECENT