Wednesday , September 20 2017
Home / پاکستان / پاکستان :1100 دہشت گردی واقعات، 650 شدت پسند ہلاک

پاکستان :1100 دہشت گردی واقعات، 650 شدت پسند ہلاک

اسلام آباد ۔ 18 ڈسمبر (سیاست ڈاٹ کام) پاکستان میں پشاور اسکول حملے کے بعد اس سال دہشت گردی کے واقعات میں کمی دیکھی گئی ہے لیکن سرکاری اعداوشمار کے مطابق 1100 سے زائد واقعات ریکارڈ کئے گئے۔ ان واقعات میں تقریباً 650 مبینہ شدت پسند ہلاک ہوئے جبکہ 710 گرفتار ہوئے۔ یہ اعدادوشمار وفاقی وزیر داخلہ چودھری نثار علی خان نے جمعہ کو سینٹ کے اجلاس میں سینٹر سحر کامران کی جانب سے کیے جانے والے ایک سوال کے جواب میں بتائے۔  اس سال ملک میں رونما ہوئے دہشت گردی کے واقعات کی تفصیل بتاتے ہونے ان کا کہنا تھا کہ قبائلی علاقوں میں سب سے زیادہ دہشت گردی کے 650 سے زائد واقعات رونما ہوئے۔ دوسرے نمبر پر شورش سے متاثرہ صوبہ بلوچستان رہا جہاں تقریباً 200 واقعات رونما ہوئے جن میں 100 کے قریب افراد ہلاک ہوئے۔ حکام کا کہنا ہے کہ 2015 میں 193 واقعات کے ساتھ خیبر پختونخوا تیسرے نمبر پر رہا جہاں جہاں 73 شدت پسندوں کی جانیں گئیں۔ پنجاب میں 55 جبکہ سندھ میں 36 شدت پسند ہلاک ہوئے۔ قبائلی علاقے سرفہرست رہے جہاں 373 مبینہ شدت پسند مارے گئے۔ لیکن دہشت گردی کے واقعات پر نظر رکھنے والی آن لائن ویب سائٹ ساوتھ ایشیا ٹیررزم پورٹل کے مطابق جاریہ برس پاکستان میں مجموعی طور پر 2300 سے زائد شدت پسند مارے گئے ہیں۔ حکومت نے عام شہریوں کی ان واقعات میں ہلاکتوں کی تعداد تو نہیں بتائی لیکن اس ویب سائٹ کے مطابق 900 عام شہری بھی اس سال ہلاک ہوئے ہیں۔ سال 2014 کے مقابلے میں عام شہریوں اور شدت پسندوں دونوں کی ہلاکتوں کی تعداد میں کمی دیکھی جاسکتی ہے۔ سال 2014 میں تقریبا 1800عام شہری اور 3200 شدت پسند مارے گئے تھے۔

TOPPOPULARRECENT