Tuesday , September 26 2017
Home / Top Stories / پاگل قیدی کی ہاسپٹل میں رائفل چھین کر فائرنگ

پاگل قیدی کی ہاسپٹل میں رائفل چھین کر فائرنگ

تین گھنٹے تک ڈرامائی حالات ، کمانڈوز نے گولی مارکر زخمی کردیا

بنگلورو۔ /16 اگست (سیاست ڈاٹ کام) ملک کے سرکردہ مینٹل ہیلت انسٹی ٹیوٹ نم ہنس میں ایک زیردریافت قیدی نے اسکارٹ پولیس مین کی رائفل چھین کر 23 راؤنڈ فائرنگ کردی ۔ تقریباً تین گھنٹے جاری رہے اس ڈرامے میں اس شخص کو آخر کار کمانڈوز نے گولی مارکر زخمی کردیاجہاں اس کی حالت تشویشناک بتائی جاتی ہے۔ 22 سالہ پاگل شخص وشواناتھ کو پراپنا گراہرا سنٹرل جیل سے مضافات میں واقع نیشنل انسٹی ٹیوٹ آف مینٹل ہیلت اینڈ نیورو سائنسنس بغرض علاج لایا گیا تھا ۔ اس نے پانچ اسکارٹ پولیس ملازمین میں سے ایک کی رائفل چھین لی اور فائرنگ شروع کردی ۔ اس شخص کو پہلے ہاسپٹل میں ضابطہ کی تکمیل کیلئے گارڈ روم لے جایا گیا جہاں اس نے پولیس سے خواہش کی کہ وہ ضروری حاجت کیلئے جانا چاہتا ہے چنانچہ اس کی ہتھکڑی کھول دی جائے ۔ پولیس نے ہتھکڑی کھول دی اور ٹائلیٹ سے آنے کے بعد اس نے رائفل چھین کر فائرنگ شروع کردی ۔

پولیس اور ہاسپٹل اسٹاف نے اس پر قابو پانے کی کوشش کی لیکن ناکام رہے ۔ آخر کار اسے ایک کمرے میں مقفل کردیا گیا اور قریبی کمروں سے اسٹاف و مریضوں کا فوری تخلیہ کرادیا گیا ۔ کمانڈو فورس ’’گروڈہ‘‘ نے فوری یہاں پہونچ کر علاقہ کا محاصرہ کرلیا ۔ پہلے وشواناتھ کو ہتھیار حوالے کرنے کیلئے رضامند کرنے کی کوشش کی گئی ۔ اس نے کسی کی بات نہیں سنی یہاں تک کہ اس کے بھائی سے موبائیل پر بات کرائی گئی لیکن پھر بھی وہ تیار نہیں ہوا ۔ کمانڈوز نے کمرے میں داخل ہوکر اس پر فائرنگ کی اور وہ سینے پر گولی لگنے سے بری طرح زخمی ہوگیا ۔ اسے ہاسپٹل لے جایا گیا جہاں اس کی حالت تشویشناک بتائی گئی ہے۔ بنگلور پولیس کمشنر این ایس میگھارک نے بتایا کہ وشواناتھ مبینہ طور پر قتل اور لوٹ مار کے مقدمہ میں ملوث ہے ۔ وہ ذہنی عارضہ کا شکار ہے اور اسے علاج کیلئے نم ہنس پابندی سے لایا جاتا تھا ۔

TOPPOPULARRECENT