Saturday , September 23 2017
Home / شہر کی خبریں / پبس اور بارس کے خلاف محکمہ آبکاری کی کارروائی

پبس اور بارس کے خلاف محکمہ آبکاری کی کارروائی

35 بارس اور پبس کو نوٹسیں جاری،ڈرگس کے استعمال یا خرید و فروخت پر لائسنس منسوخ
حیدرآباد ۔ 25 ۔ جولائی : ( سیاست نیوز ) : ڈرگس کے معاملہ میں محکمہ آبکاری نے پبس ، بارس اور اسٹار ہوٹلس کو ہائی الرٹ جاری کیا ہے ۔ ڈرگس کے استعمال ، خرید و فروخت جیسے مسائل نے راجدھانی کو ہلا کر رکھدیا ہے اور مذکورہ مراکز میں نامعلوم افراد کی جانب سے ڈرگس فروختگی یا آپس میں ڈرگس کا تبادلہ یا ان مراکز میں ڈرگس کا استعمال کرنے پر ان کے لائسنس منسوخ کردئیے جائیں گے ۔ اسی مناسبت سے محکمہ نے 35 بارس اور پبس کو نوٹسیں جاری کی ہیں اور بتدریج 220 باروں اور پبوں کو بھی نوٹسیں جاری کرنے کی تیاری کی جارہی ہے اور ڈرگس سے متعلق ملنے والی اطلاعات کے مد نظر محکمہ آبکاری کی ناسک فورس ٹیمیں تمام پبوں ، کلبوں ، باروں اور اسٹار ہوٹلس پر چھاپہ ماریں گے ۔ ڈرگس استعمال کے الزامات پر فلم سٹی کلب لائسنس کو وقتی طور پر منسوخ کردیا گیا ہے ۔قواعد و ضوابط کے خلاف رات میں 12 بجے کے بعد بھی چلائے جانے والے باروں ، کلبوں اور پبوں کے لائسنس بھی منسوخ کردئیے جانے کا محکمہ نے انتباہ جاری کیا ہے اور ان تمام مراکز کے مالکین کو سی سی کیمرے لگانے کے احکامات جاری کئے گئے ہیں اور ان مراکز میں ڈرگس سے متعلق کچھ بھی اطلاع ہو تو فوری محکمہ کو آگاہ کرنے کی بھی ہدایات جاری کی گئی ہیں ۔ گریٹر حیدرآباد میں ڈرگس کی خرید و فروخت اور اس کے استعمال سے آنے والے بھونچال سے تمام واقف ہی ہیں اور ڈرگس کے استعمال کرنے والوں میں فلم اسٹارس اور فلمی دنیا سے وابستہ افراد سے محکمہ آبکاری کے عہدیداران ایک کے بعد دوسرے باقاعدہ گھنٹوں پوچھ تاچھ کرہے ہیں اور محکمہ آبکاری کو یقین ہے کہ ڈرگس کے استعمال میں پبوں ، کلبوں ، باروں اور اسٹار ہوٹلس اہم مقامات ہیں جہاں اس کا استعمال کیا جارہا ہے ۔ محکمہ آبکاری کے قواعد و ضوابط کے مطابق رات کے 12 بجے ان مراکز کو بند کردیا جانا چاہئے اور 21 برس سے کم عمر افراد کے ان مراکز میں داخلہ پر بھی پابندی عائد ہے ۔ مگر ان قوانین پر بہت کم ہی عمل کیاجاتا ہے ۔۔
رات میں 11 بجے کے بعد
سلبریٹیز ، سیاسی لیڈرس ، اہم شخصیات ، وی آئی پیز اور وی وی آئی پیز کے بچے رات میں 11 بجے کے بعد ہی داخل ہوتے ہیں اور اس موقع کا فائدہ اٹھا کر ڈرگس فروخت کرنے والی ٹولیاں اور نائیجریائی باشندے ان مقامات پر پہونچ کر ڈرگس فروخت کیا کرتے ہیں اس لیے محکمہ آبکاری ایسے مقامات پر سخت نظر رکھنے کا فیصلہ کیا ہے اور محکمہ کا خیال ہے کہ ڈرگس کی لعنت کو ختم کرنے کے لیے مذکورہ سنٹرس کے مالکین کا تعاون ناگزیر ہے ۔ واضح ہو کہ شہر میں چلائے جانے والے پبوں ، باروں اور کلبوں کے مالکین زیادہ تر سیاسی قائدین اور فلمی دنیا کے افراد ہی ہیں مگر اس کے باوجود حکومت کے تازہ احکامات کے مد نظر ان سنٹرس پر سخت نظر رکھی جائے گی ۔۔

TOPPOPULARRECENT