Thursday , August 17 2017
Home / شہر کی خبریں / پرانے شہر حیدرآباد میں میٹرو ریل پراجکٹ کے لیے سروے جاری ، تاریخی عمارتوں کی حفاظت کا عزم

پرانے شہر حیدرآباد میں میٹرو ریل پراجکٹ کے لیے سروے جاری ، تاریخی عمارتوں کی حفاظت کا عزم

ناگول تا اپل میٹرو ٹرین میں وزراء کا تجرباتی سفر ، وزیر آئی ٹی کے تارک راما راؤ کا خطاب
حیدرآباد۔/18ڈسمبر، ( سیاست نیوز) وزیر انفارمیشن ٹکنالوجی کے ٹی راما راؤ نے کہا کہ پرانے شہر حیدرآباد میں میٹرو ریل کے کام کے آغاز کیلئے سروے جاری ہے اور تاریخی عمارتوں کے تحفظ کو یقینی بناتے ہوئے اس پراجکٹ کا کام پرانے شہر میں شروع کیا جائے گا۔ کے ٹی راما راؤ نے آج ڈپٹی چیف منسٹر محمد محمود علی،ریاستی وزراء پدما راؤ، سرینواس یادو اور این نرسمہا ریڈی اور دیگر عہدیداروں کے ہمراہ ناگول سے اوپل تک میٹرو ریل کے تجرباتی سفر میں حصہ لیا۔ میٹرو ریل کے عہدیداروں نے بتایا کہ ناگول تا اوپل میٹرو ریل کا کام مکمل ہوچکا ہے اور ٹرین کی آمدورفت بھی ممکن ہے۔ کے ٹی آر نے تجرباتی سفر اور میٹرو ریل کے کاموں کی جلد تکمیل پر اطمینان کا اظہار کیا۔ انہوں نے کہا کہ حکومت سارے شہر کو میٹرو ریل پراجکٹ کے تحت لانے کا منصوبہ رکھتی ہے تاکہ عوام کو دوردراز کے مقامات پہنچنے میں سہولت ہو۔ انہوں نے بتایا کہ پرانے شہر میں میٹرو ریل کے آغاز کے سلسلہ میں حکومت سنجیدہ ہے۔ تاریخی عمارتوں کے تحفظ کو پیش نظر رکھتے ہوئے منصوبہ بندی کی جائیگی۔ انہوں نے بتایا کہ اس سلسلہ میں سروے کا کام جاری ہے۔ عوام کے تعاون سے بہت جلد پرانے شہر میں میٹرو ریل کے کاموں کا آغاز ہوگا۔ مسٹر کے ٹی راما راؤ نے اپنے سلسلے خطاب کو جاری رکھتے ہوئے کہا کہ حکومت تلنگانہ شہر کے مضافاتی علاقوں کا احاطہ کرتے ہوئے مزید 83 کلومیٹر تک میٹرو ٹرین کی توسیع کا منصوبہ رکھتی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ پہلے مرحلے کے تحت 3 کوریڈار 75 کلومیٹر پر میٹرو ٹرین کا کام جاری ہے ۔ دوسرے مرحلے کے تحت 155 کلومیٹر کے پراجکٹ کے کام کی تکمیل انجام دی جائے گی ۔ انہوں نے کہا کہ شہر کی برق رفتاری ترقی کو پیش نظر رکھتے ہوئے حکومت عوامی ضروریات کے لحاظ سے 200 کلومیٹر تک میٹرو ٹرین کو توسیع دینے کی تجویز رکھتی ہے جس کے ذریعہ سے 10 ملین افراد کی ضروریات کی تکمیل ہوگی ۔ پہلے مرحلے کے تحت انجام پانے والے پراجکٹ پر آئندہ سال سے میٹرو ٹرین کی خدمات کا آغاز کیا جائیگا ۔ جب کہ میٹرو ٹرین کو رائے درگم تا شمس آباد براہ گچی باولی توسیع دی جائے گی ۔ وزیر پنچایت راج مسٹر کے ٹی راما راؤ نے کہا کہ عالمی سطح کے عوامی و خانگی سطح کے سب سے بڑے 75 کلومیٹر پر مشتمل میٹرو پراجکٹ کی تعمیر کے لیے 14,132 کروڑ روپئے خرچ کئے جائیں گے ۔ انہوں نے بتایا کہ میٹرو ریل پراجکٹ میں 18000 افراد دن رات کام کررہے ہیں اور حیدرآباد کا پراجکٹ ملک کا سب سے بڑا میٹرو ریل پراجکٹ ہے۔ انہوں نے کہا کہ دوسرے مرحلہ میں شہر کے دیگر علاقوں کا احاطہ کیا جائے گا۔ کے ٹی آر نے کہا کہ میٹرو ریل پراجکٹ حیدرآباد کی خوبصورتی میں اضافہ کا سبب بنے گا اور ٹریفک کے مسئلہ کی بڑی حد تک یکسوئی ہوجائے گی۔ انہوں نے یقین ظاہر کیا کہ یہ پراجکٹ مقررہ مدت کے دوران مکمل کرلیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ میٹرو ریل میں آج ان کا تجرباتی سفر کافی کامیاب رہا اور انہیں اس پراجکٹ کی کامیابی کا یقین ہے۔ انہوں نے بتایا کہ میٹرو پراجکٹ کیلئے تلنگانہ حکومت 3000 کروڑ روپئے خرچ کررہی ہے۔ اراضی کے حصول اور دیگر رکاوٹوں کو دور کرتے ہوئے پراجکٹ کی عاجلانہ تکمیل کے اقدامات کئے جارہے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT